உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    عام آدمی پارٹی کے رکن اسمبلی امانت اللہ خان کو 14 دنوں کی عدالتی حراست، وقف بورڈ سے جڑا ہے معاملہ

    عام آدمی پارٹی کے رکن اسمبلی امانت اللہ خان کو 14 دنوں کی عدالتی حراست

    عام آدمی پارٹی کے رکن اسمبلی امانت اللہ خان کو 14 دنوں کی عدالتی حراست

    دہلی کی راوز ایوینیو کورٹ نے دہلی وقف بورڈ سے جڑے معاملے میں عام آدمی پارٹی کے رکن اسمبلی امانت اللہ خان (AAP MLA Amanatullah Khan) کو 14 دنوں کی عدالتی حراست دے دی ہے۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Delhi, India
    • Share this:
      نئی دہلی: دہلی کی راوز ایوینیو کورٹ نے دہلی وقف بورڈ سے جڑے معاملے میں عام آدمی پارٹی کے رکن اسمبلی امانت اللہ خان (AAP MLA Amanatullah Khan) کو 14 دنوں کی عدالتی حراست دے دی ہے۔ اینٹی کرپشن بیورو (اے سی بی) نے عام آدمی پارٹی کے رکن اسمبلی امانت اللہ خان کے ٹھکانوں پر ایک ساتھ چھاپہ ماری کی تھی۔

      اے سی بی نے عام آدمی پارٹی کے رکن اسمبلی کے ٹھکانوں سے قابل اعتراض اشیا برآمد ہونے کا دعویٰ کرتے ہوئے انہیں گرفتار کرلیا تھا۔ اس چھاپہ ماری سے متعلق ایک ویڈیا سامنے آیا تھا، جس میں مبینہ طور پر عام آدمی پارٹی کے رکن اسمبلی امانت اللہ خان کے حامیوں کو اے سی بی کے افسران کے ساتھ ہاتھا پائی کرتے ہوئے دیکھا جاسکتا ہے۔ بتایا جا رہا ہے کہ اینٹی کرپشن بیورو کی ٹیم جب چھاپہ مارنے کے لئے جامعہ نگر علاقے میں آئی تھی تب تلخ بحث ہوئی تھی۔ واضح رہے کہ اے سی بی نے امانت اللہ خان کے کئی ٹھکانوں پر چھاپہ ماری کی تھی۔ اس کے بعد امانت اللہ خان کو گرفتار کرلیا گیا تھا۔

      اے سی بی نے بڑی رقم برآمد کرنے کا کیا تھا دعویٰ

      اینٹی کرپشن بیورو (اے سی بی) کے ذریعہ چھاپہ ماری کے دوران ان کے بزنس پارٹنر کی رہائش گاہ سمیت دو ٹھکانوں سے 24 لاکھ برآمد کرنے کا بھی دعویٰ کیا تھا۔ ساتھ ہی ہتھیار اور کارتوس برآمد کرنے کی بات بھی سامنے آئی تھی۔ امانت اللہ خان پر الزام ہے کہ انہوں نے وقف بورڈ کے بینک کھاتوں میں بدعنوانی کی ہے۔ وقف کی جائیدادوں میں کرایے داری کے معاملے میں بدعنوانی کی گئی۔ اس کے ساتھ ہی انہوں نے گاڑی خریدنے کے معاملے میں بھی بدعنوانی ہوئی تھی۔

      عام آدمی پارٹی کے رکن اسمبلی پر الزام ہے کہ انہوں نے دہلی وقف بورڈ کی سروس ضوابط کی خلاف ورزی کرتے ہوئے 33 افراد کی غیر قانونی تقرری کی۔ اس سے متعلق اے سی بی نے جنوری 2020 میں انسداد بدعنوانی ایکٹ اور تعزیرات ہند کی مختلف دفعات کے مختلف الزامات کے تحت ان کے خلاف مقدمہ درج کیا تھا۔
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: