ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

دہلی اسمبلی انتخابات 2020: دوپہر بعد دہلی نے پکڑی رفتار، ایک گھنٹے میں 8 فیصد ووٹنگ

دہلی اسمبلی انتخابات 2020 میں دہلی کے عوام میں ووٹنگ کے تیئیں بیداری کم دیکھنےکومل رہی ہے۔ آج ہفتہ کے روز 8 بجےسے ووٹنگ ہورہی ہے۔ دوپہر1بجے تک صرف 19 فیصد ووٹنگ ہوئی ہے۔

  • Share this:
دہلی اسمبلی انتخابات 2020: دوپہر بعد دہلی نے پکڑی رفتار، ایک گھنٹے میں 8 فیصد ووٹنگ
دوپہر بعد دہلی میں ووٹنگ نے رفتار پکڑ لی ہے۔

نئی دہلی: دہلی اسمبلی انتخابات 2020 میں آج صبح سے دوپہر تک سست رفتار سے ووٹنگ ہوئی، لیکن دوپہر کے بعد ووٹنگ نے رفتار پکڑ لی ہے۔ دوپہر بعد ایک گھنٹے میں 8 فیصد وٹنگ ہوئی جبکہ دوپہر 1 بجے تک صرف 19 فیصد ووٹنگ ہوئی تھی۔ تاہم دو بجے تک 27 فیصد ووٹنگ درج کی گئی ہے۔  اس دوران گاندھی فیملی، وزیراعلیٰ اروند کیجریوال اور بی جے پی کے ریاستی صدرمنوج تیواری نے اپنے حق رائے دہی کا استعمال کیا۔ اسمبلی انتخابات کی ووٹنگ کے روز دہلی کی درجہ حرارت 7 ڈگری ریکارڈ کی گئی۔ یہ اس موسم میں عام طور پرتین ڈگری کم ہے۔ محکمہ موسمیات کے ایک افسر نےکہا کہ ہفتہ کی صبح راجدھانی کے کچھ علاقوں میں ہلکی دھندھ تھی، جس سے ایئر کوالٹی کی سطح 'بہت خراب' تھی۔


اس دوران ووٹنگ کے دوران سخت حفاظتی انتظامات کئےگئے ہیں، اس دوران آج دہلی کے عوام کو اپنی حکومت منتخب کرنا ہے۔ عام آدمی پارٹی، بی جے پی اورکانگریس تینوں سیاسی جماعتوں کی طرف سے متعدد وعدوں کے ذریعہ عوام کو لبھانےکی کوشش کی گئی ہے۔ اب باری عوام کی ہےکہ وہ کس کو منتخب کرتے ہیں، اس کےلئے آج ووٹنگ ہوگی۔ گزشتہ انتخابات 2020 میں عام آدمی پارٹی کو 67، بی جے پی کو تین سیٹیں ملی تھیں جبکہ کانگریس کاکھاتہ بھی نہیں کھلا تھا۔ دہلی کے شاہین باغ میں 110 سال کی بزرگ خاتون رائے دہندہ صابرہ خاتون نے اپنا ووٹ ڈالا۔




کانگریس کے سابق صدر راہل گاندھی نے اورنگ زیب روڈکے پولنگ بوتھ نمبر 81 اور 82 پر اپنا ووٹ ڈالا۔ جبکہ کانگریس کی عبوری صدر سونیا گاندھی نے نئی دہلی اسمبلی حلقہ کے نرمان بھون پولنگ بوتھ پراپنا ووٹ ڈالا ہے۔ ووٹنگ کےبعد سونیا گاندھی نے نیوز 18 سے بات چیت میں کہا کہ ابھی کیسے بتاؤں، کتنی سیٹیں ملیں گی۔ سونیا گاندھی کے ساتھ ان کی بیٹی اور کانگریس کی جنرل سکریٹری پرینکا اندھی بھی موجود تھیں۔



پولنگ کو پرامن اورغیر جانبد ارنہ ڈھنگ سےکروانے کےلئےسیکورٹی کے سخت انتظامات کئےگئے ہیں۔ پولنگ ہفتے کے روز صبح 8 بجے شروع ہو گئی اور شام چھ بجے تک چلے گی۔ ووٹوں کی گنتی 11 فروری کو ہوگی۔ اس سے قبل دہلی کے چیف الیکشن افسر رنبیر سنگھ کے مطابق پولنگ منصفانہ اور پرامن ڈھنگ سے کروانے کے لیے سیکورٹی کے ساتھ ساتھ کافی تعداد میں ملازمین کو تعینات کیا گیا ہے ۔ رنبیر سنگھ کے مطابق پولنگ غیر جانبدارانہ کروانے کے لیے 1000024 ملازم الیکشن ڈیوٹی پر تعینات کیے گئے ہیں۔ سیکورٹی انتظامات کے سلسلے میں انہوں نے کہا کہ دہلی پولیس کے 38 ہزار 874 اور ہوم گارڈ کے 19 ہزار جوان تعینات کیے جائیں گے۔ اس کے علاوہ بڑی تعداد میں نیم سلامتی دستوں کو بھی تعینات کیا جائےگا۔

دہلی اسمبلی انتخابات 2020 کی ووٹنگ کے لئے تمام تیاریوں کے دوران دہلی کے شاہین باغ علاقے میں بھی ووٹنگ شروع ہوگئی ہے۔ تصویر: پی ٹی آئی
دہلی اسمبلی انتخابات 2020 کی ووٹنگ کے لئے تمام تیاریوں کے دوران دہلی کے شاہین باغ علاقے میں بھی ووٹنگ شروع ہوگئی ہے۔ تصویر: پی ٹی آئی


دہلی الیکٹورل افسرکےدفتر سےحاصل اعداد و شمارکےمطابق دارالحکومت کی کل آبادی دو کروڑ 14 لاکھ تین ہزار 686 ہے۔ ان میں مردوں کی تعداد ایک کروڑ 78 لاکھ تین ہزار 804 اور خواتین کی (بشمول دیگر) 93 لاکھ 59 ہزار 882 ہے۔ اس بار کل ایک کروڑ 47 لاکھ 86 ہزار 382 ووٹر ہیں جن میں سے 132 ووٹر 100 یا اس سے زیادہ عمر کے ہیں۔ بزرگ ووٹروں کو’وی آئی پی‘ ووٹر کے طور پر ووٹ ڈالنے کی سہولتیں مہیا کروائی جائیں گی ۔ بزرگ ووٹروں میں مرد 68 اور خواتین ووٹر 64 ہیں۔ سب سےمعمر ووٹر گریٹر کیلاش کی چترنجن پارک رہائشی 110 سالہ خاتون كاليتارا منڈل ہیں۔ کل ووٹروں میں مرد ووٹروں کی تعداد 81 لاکھ پانچ ہزار 236 اور خواتین ووٹر 66 لاکھ 80 ہزار 277 ہیں۔ خواجہ سرا ووٹر 869 ہیں۔ تمام ووٹروں کو ووٹر کارڈ جاری کیے جا چکے ہیں۔ اوورسیز ووٹروں کی تعداد 498 اورسروس سے منسلک ووٹروں کی تعداد 11 ہزار 608 ہے۔ اسی سال سے زیادہ کے ووٹروں کی تعداد دو لاکھ چار ہزار 830 ہیں۔ معذور ووٹر 50 ہزار 473 ہیں۔ وہیل چیئر ووٹروں کی تعداد 3875 ہے۔ معذور ووٹروں کو پولنگ میں سہولت کےلئے 9 ہزار 997 والنٹير تعینات کئے جائیں گے۔
First published: Feb 08, 2020 07:40 AM IST