உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    تبلیغی مرکزمعاملے پرکیجریوال نےکہا- بھیڑ اکٹھاکرنا غلط، نہیں بخشے جائیں گے قصوروار

    وزیراعلیٰ اروند کیجریوال نے میٹنگ میں کہا کہ لاک ڈاون بڑھانےکا فیصلہ قومی سطح پر ہونا چاہئے۔

    وزیراعلیٰ اروند کیجریوال نے میٹنگ میں کہا کہ لاک ڈاون بڑھانےکا فیصلہ قومی سطح پر ہونا چاہئے۔

    کورونا وائرس (Coronavirus) کو لے کر نافذ لاک ڈاون کے باوجود نظام الدین علاقے میں ملک وبیرون ملک کے لوگوں کے جمع ہونے کے معاملہ پر دہلی کے وزیراعلیٰ اروند کیجریوال نے سخت اعتراض ظاہر کیا ہے۔

    • Share this:
    نئی دہلی: کورونا وائرس (Coronavirus) کو لےکر نافذ لاک ڈاون کے باوجود نظام الدین علاقے میں واقع مرکز میں ملک وبیرون ملک کے لوگوں کے جمع ہونےکے معاملہ پر دہلی کے وزیراعلیٰ اروند کیجریوال (Arvind Kejriwal) نے سخت اعتراض ظاہر کیا ہے۔ دہلی میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے اروند کیجریوال نےکہا کہ ایسے وقت میں جبکہ لوگوں کو گھر میں رہنےکے احکامات دیئے جا رہے ہیں۔ بھیڑ نہ جمع کرنے کی اپیل کی جارہی ہے، پھر بھی نظام الدین علاقے میں ایک ہزار سے 1500 لوگوں کو جمع کرنا سنگین معاملہ ہے۔

    دہلی کے وزیراعلیٰ اروند کیجریوال نےکہا کہ تبلیغی جماعت کے مرکز میں بتایا گیا کہ 13-12 مارچ کو بہت لوگ جمع ہوئے۔ اس میں 24 معاملے مثبت (پازیٹیو) آئے ہیں۔ اب تک 1548 لوگوں کو نکالا جا چکا ہے، جس میں سے 448 میں کورونا کے آثار پائےگئے ہیں۔



    قصورواروں کو بخشا نہیں جائےگا

    وزیراعلیٰ اروند کیجریوال نےکہا کہ اس وقت ’نوراتر’ کا وقت چل رہا ہے، لیکن لوگ کہیں نہیں جمع ہورہے ہیں۔ گرودوارے بند ہوگئے ہیں۔ ایسے میں اتنی بڑی بھیڑ جمع کرنا غلط تھا۔ انہوں نےکہا کہ مجھے ڈر لگ رہا ہے کہ اس میں سے کتنے لوگ کہاں کہاں گئے ہوں گے، اس کی اطلاع نہیں ہے۔ اس معاملے میں دہلی حکومت نےکل ہی لیفٹیننٹ گورنر (ایل جی) کو خط لکھا ہے۔ کیجریوال نے کہا کہ اس معاملے میں اگر کسی بھی افسر کی کوتاہی پائی گئی، تو اسے بھی بخشا نہیں جائےگا۔

    کیجریوال نے بتایا غیر ذمہ دارانہ رویہ

    وزیراعلیٰ اروند کیجریوال نے واضح طور پرکہا کہ جب پوری دنیا اس سے پریشان ہے، ایسے وقت میں غیر ذمہ دارانہ رویہ نہیں چلےگا۔ وزیراعلیٰ نے اس دوران تلنگانہ میں یہاں سے گئے 6 لوگوں کی موت کے حادثےکا بھی ذکر کیا۔
    Published by:Nisar Ahmad
    First published: