ہوم » نیوز » وطن نامہ

دہلی میں کوروناکی بڑھتی لاشیں بن رہی سب سے بڑامسئلہ،قبرستانوں اورشمشان گھاٹوں پیش آرہی ہے مشکلات

مشکور راشد (Mashqoor Rashid) نے آئی ٹی او کے قریب قبرستان اہل اسلام (Qabristan Ahle Islam) سے متعلق پی ٹی آئی کو بتایا کہ ’اگر کورونا وائرس سے مرنے والوں کی یہی شرح برقرار رہی ہم ایک مہینے میں زمین کی شدید قلت محسوس کریں گے‘۔

  • Share this:
دہلی میں کوروناکی بڑھتی لاشیں بن رہی سب سے بڑامسئلہ،قبرستانوں اورشمشان گھاٹوں پیش آرہی ہے مشکلات
علامتی تصویر

قبرستان میں کام کرنے والے مشکور راشد (Mashqoor Rashid) نے ایک سنگین پیش گوئی کی ہے۔ وہ شہر کے سب سے بڑے قبرستان میں ایک کے بعد ایک کورونا وائرس متاثرین کی لاشوں کی تدفین کی نگرانی کررہے ہیں۔مشکور راشد (Mashqoor Rashid) نے آئی ٹی او کے قریب قبرستان اہل اسلام (Qabristan Ahle Islam) سے متعلق پی ٹی آئی کو بتایا کہ ’اگر کورونا وائرس سے مرنے والوں کی یہی شرح برقرار رہی ہم ایک مہینے میں زمین کی شدید قلت محسوس کریں گے‘۔


بڑی پنچایت وشیہ بیزے اگروال تنظیم (Badi Panchayat Vaishya Beese Agarwal organisation) کے جنرل سکریٹری سمن گپتا (Suman Gupta) نگمبودھ گھاٹ پر شہر کے مرکزی شمشان گھاٹ کا انتظام کرتے ہیں۔ انھوں نے بتایا کہ ’گذشتہ ہفتے سے اوسطا 10 تا 15 کووڈ۔19 متاثرین کی لاشیں جلائی جا رہی ہیں۔ تا حال کل 18 تدفین کی گئیں‘۔


علامتی تصویر
علامتی تصویر


انھوں نے بتایا کہ ’عام طور پر یہاں روزانہ 50 تا 60 کے قریب لاشیں جلائی جاتی ہے۔ اب ان کی تعداد 80 سے بھی زیادہ ہوچکی ہے۔کووڈ۔19 میں تازہ ترین اضافے کی وجہ سے اموات میں بھی تیزی سے اضافہ دیکھنے میں آ رہا ہے۔ شہر میں قبرستان اور شمشان گھاٹ انتہائی نامساعد حالات سے چوج رہے ہیں۔

تصدیق شدہ اور مشتبہ واقعات سے متعلق سرکاری اعداد و شمار کے مطابق کورونا وائرس نے اپریل کے پہلے 13 دنوں میں دہلی میں 409 افراد کو ہلاک کیا ہے، جبکہ مارچ کے پورے مہینے میں 117 اور فروری میں 57 افراد کی موت ہوئی تھی۔اموات کی شرح میں اس نمایاں اضافہ نے شہر کے قبرستانوں اور شمشان گھاٹوں کے مقامات پر لاشوں کی تعداد بڑھتی جارہی ہے۔آئی ٹی او میں قبرستان کی انتظامی کمیٹی کے ایک رکن مشکور راشد نے بتایا کہ کورونا مریضوں کی لاشیں شہر بھر سے یہیں بھجوائی جارہی ہیں کیونکہ مقامی قبرستان تقریبا بھر رہے ہیں۔

تاہم شہر میں متعدد قبرستان چلانے والے دہلی وقف بورڈ کے چیئرمین امانت اللہ خان نے کہا کہ اب تک تدفین کے لئے زمین کی کمی نہیں ہے۔ ہمارے پاس تدفین کے لئے کافی زمین ہے۔شمالی دہلی کے میئر جئے پرکاش نے کہا کہ انہوں نے وزیر اعلی اروند کیجریوال کو ایک خط لکھا ہے اور تدفین کے لئے اراضی کا بندوبست کرنے میں ان کی مدد طلب کی ہے۔

میونسپل کارپوریشن کے ایک عہدیدار نے تدفین کی نگرانی کرتے ہوئے کہا کووڈ۔19 کے متاثرین کی تدفین کے لئے خاص طور پر کھودی گئی قبریں دریافت ہوتی ہیں جو بیکہو ہ لوڈرز کے ذریعہ تیار کی جارہی ہیں کیونکہ ہلاکتوں کی تعداد بڑھ رہی ہے اور ہاتھ سے کھودنے میں زیادہ وقت اور افرادی قوت درکار ہوگی۔
Published by: Mohammad Rahman Pasha
First published: Apr 15, 2021 10:51 AM IST