உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Delhi News: امانت اللہ خان کی عرضی پر ہائی کورٹ نے پولیس کو جاری کیا نوٹس، جانئے کیا ہے معاملہ

    Delhi News: امانت اللہ خان کی عرضی پر ہائی کورٹ نے پولیس کو جاری کیا نوٹس، جانئے کیا ہے معاملہ

    Delhi News: امانت اللہ خان کی عرضی پر ہائی کورٹ نے پولیس کو جاری کیا نوٹس، جانئے کیا ہے معاملہ

    Delhi News: عام آدمی پارٹی کے لیڈر امانت اللہ خان کی عرضی پر دہلی ہائی کورٹ نے پولیس کو نوٹس جاری کیا ہے ۔ پچھلے دنوں تجاوزات ہٹانے کی کارروائی میں رکاوٹ ڈالنے کے بعد دہلی پولیس نے امانت اللہ خان کی ہسٹری شیٹ اوپن کرکے ان کو مجرم قرار دیا تھا ۔

    • Share this:
      نئی دہلی : عام آدمی پارٹی کے لیڈر امانت اللہ خان کی عرضی پر دہلی ہائی کورٹ نے پولیس کو نوٹس جاری کیا ہے ۔ پچھلے دنوں تجاوزات ہٹانے کی کارروائی میں رکاوٹ ڈالنے کے بعد دہلی پولیس نے امانت اللہ خان کی ہسٹری شیٹ اوپن کرکے ان کو مجرم قرار دیا تھا ۔ آج سماعت کے دوران دہلی پولیس نے کورٹ کو بتایا کہ امانت اللہ خان کے خلاف ایک درجن سے زیادہ ایف آئی آر درج ہیں۔ کورٹ نے پولیس سے امانت اللہ خان کے خلاف چل رہے معاملات کی جانچ میں پیش رفت کے بارے میں اسٹیٹس رپورٹ داخل کرنے کیلئے کہا ہے ۔ اگلی سماعت 28 جولائی کو ہوگی ۔

       

      یہ بھی پڑھئے : ای ڈی کی بڑی کارروائی، سونیا اور راہل گاندھی کو بھیجا سمن


      بتادیں کہ جب مدن پور کھادر میں تجاوزات مخالف مہم چل رہی تھی تو ممبر اسمبلی امانت اللہ خان جائے واقعہ پر پہنچ گئے تھے ۔ انہوں نے وہاں کافی ہنگامہ کیا تھا ۔ ساتھ ہی پولیس سے انہوں نے کافی بحث کی تھی ۔ اس کے بعد ان کے خلاف مقدمہ درج کیا گیا تھا ۔

       

      یہ بھی پڑھئے : Azam Khan کے جیل سے چھوٹنے کے بعد پہلی مرتبہ اکھلیش یادو نے کی ملاقات، جانئے کیا ہوئی بات


      دہلی پولیس نے انہیں کام میں رکاوٹ ڈالنے کے الزام میں گرفتار کیا تھا اور انہیں بیڈ کیرکٹر قرار دیا تھا ۔ اس کے بعد ممبر اسمبلی کو نوٹس بھی بھیجا گیا تھا ۔ اس پورے معاملہ میں امانت اللہ خان کا کہنا تھا کہ پولیس جان بوجھ کر انہیں نشانہ بنا رہی ہے ۔

      ان کا کہنا تھا کہ پولیس ان کی شبیہ کو نقصان پہنچا رہی ہے ۔ ساتھ ہی خیالی کہانیاں بنا رہی ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ تجاوزات کی مخالفت کرنے پہنچے تھے، لیکن انہوں نے اس دوران کچھ بھی غلط نہیں کیا ۔ انہوں نے پرامن طریقہ سے اپنی بات رکھی تھی ۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: