உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Delhi News: اٹل آہار اسکیم پر راجدھانی میں لگا تالا، عام آدمی پارٹی نے اٹھایا یہ بڑا سوال

    Delhi News: اٹل آہار اسکیم پر راجدھانی میں لگا تالا، عام آدمی پارٹی نے اٹھایا یہ بڑا سوال

    Delhi News: اٹل آہار اسکیم پر راجدھانی میں لگا تالا، عام آدمی پارٹی نے اٹھایا یہ بڑا سوال

    عام آدمی پارٹی نے الزام لگایا ہے کہ بی جے پی نے اٹل آہارا یوجنا کے نام پر عوام کے جذبات سے کھلواڑ کیا ہے۔ تینوں ایم سی ڈی کے اپوزیشن لیڈر نے کہا کہ 2017 میں بی جے پی نے اٹل آہارا یوجنا کا اعلان کیا تھا۔ جس کے ذریعے بی جے پی نے دہلی کے غریبوں کو 10 روپے میں پیٹ بھر کا کھانا دینے کا وعدہ کیا تھا۔ حالانکہ بی جے پی نے کھانے کے کچھ کاؤنٹر کھولے لیکن وہ کچھ ہی وقت میں بند کردیئے گئے۔

    • Share this:
    نئی دہلی : عام آدمی پارٹی نے الزام لگایا ہے کہ بی جے پی نے اٹل آہارا یوجنا کے نام پر عوام کے جذبات سے کھلواڑ کیا ہے۔ تینوں ایم سی ڈی کے اپوزیشن لیڈر نے کہا کہ 2017 میں بی جے پی نے اٹل آہارا یوجنا کا اعلان کیا تھا۔ جس کے ذریعے بی جے پی نے دہلی کے غریبوں کو 10 روپے میں پیٹ بھر کا کھانا دینے کا وعدہ کیا تھا۔ حالانکہ بی جے پی نے کھانے کے کچھ کاؤنٹر کھولے لیکن وہ کچھ ہی وقت میں بند کردیئے گئے۔ واضح رہے کہ بی جے پی نے صرف سیاسی فائدے کے لیے اس طرح کی اسکیم کا اعلان کیا تھا۔ اتنا ہی نہیں ایم سی ڈی کی زمین پر تمام کاؤنٹر کھولے گئے تھے۔ عام آدمی پارٹی نے پوچھا ہے کہ یہ ڈھلوان زمین کس تجویز کے تحت گوتم گمبھیر کے ٹرسٹ کو دی گئی؟ یہ بھی پوچھا کہ فوڈ کاؤنٹر کہاں غائب ہو گئے؟ ساؤتھ ایم سی ڈی کے اپوزیشن لیڈر پریم چوہان نے بدھ کو پارٹی ہیڈکوارٹر میں پریس کانفرنس سے خطاب کیا۔ پریم چوہان نے کہا کہ آج بی جے پی کا اصلی چہرہ سامنے آ گیا ہے کہ وہ اپنے چاہنے والوں کی کتنی عزت کرتی ہے۔ بھارت رتن سے نوازے گئے اٹل بہاری واجپئی کے نام کے ساتھ بدسلوکی کی گئی ہے۔ انہوں نے یہ کیسے کیا، آج میں آپ کو بتانے جا رہا ہوں۔  2017 کے انتخابات میں بی جے پی نے اپنا انتخابی منشور جاری کیا۔  منوج تیواری اس وقت بی جے پی کے صدر تھے۔ انہوں نے اٹل آہر یوجنا کے بارے میں کہا تھا کہ ہم غریبوں کو 10 روپے میں پیٹ بھر کھانا فراہم کرنے کا کام کریں گے۔ دسمبر 2017 میں بی جے پی کے کاؤنٹر مختلف مقامات پر رکھے گئے تھے۔  اگلے سال جب بجٹ آیا تو اس پر خوب تالیاں بجیں۔

     

    یہ بھی پڑھئے :  الیکٹرک گاڑیوں کی چارجنگ کیلئے دہلی حکومت نے تیار کیا ماڈل، جانئے کیا ہوگا فائدہ


    اس کے بعد اسٹینڈنگ کمیٹی کے چیئرمین کرنل اوبرائے کی رپورٹ میں بھی بتایا گیا کہ اب ہم اسے 4 سے 40 کریں گے۔  آپ کو بتا دیں کہ تینوں ایم سی ڈی میں 4-4 فوڈ کاؤنٹر کھولے گئے تھے۔  انہوں نے اسے 40 بنانے کے بارے میں بات کی۔ اس کا افتتاح بڑے پارلیمنٹرینز نے کیا۔ جس کی تصویریں بھی میرے پاس ہیں۔ گرین پارک کی ایک تصویر میں میناکشی لیکھی کھانا کھاتے ہوئے نظر آ رہی ہیں۔ وہ اس وقت قائد ایوان تھیں۔  اس کے ذریعے خبر آئی کہ ہاں واقعی کاؤنٹر کھول دیا گیا ہے۔ تصویر دکھاتے ہوئے پریم چوہان نے کہا کہ دہلی کے لوگ بھارتیہ جنتا پارٹی سے جاننا چاہتے ہیں کہ یہ فوڈ کاؤنٹر، جو غریبوں کے لیے بنایا گیا تھا، اب کہاں ہے؟ بی جے پی سے کہو، کیا آپ نے کاؤنٹر کے ردی سے حیرت کا حصہ ضائع کیا؟ یا بھارت درشن پارک بنایا گیا ہے؟  آپ نے اٹل بہاری واجپائی کے نام پر کھولی گئی اسکیم کا مذاق اڑایا ہے۔ اور جب ہم نے عہدیداروں سے یہ جاننے کی کوشش کی کہ اس اسکیم میں کتنی رقم خرچ ہوئی ہے۔ تو حکام کی جانب سے دیا گیا جواب سن کر آپ دنگ رہ جائیں گے۔

    انہوں نے بتایا کہ ہم نے اس میں ایک روپیہ بھی نہیں دیا ہے کیونکہ بی جے پی نے اس کے لیے کوئی منصوبہ نہیں بنایا ہے۔ کہیں بی جے پی نے اٹل جی کے نام سے کھیلا ہے۔ عام آدمی پارٹی یقین دلاتی ہے کہ اگر وہ اس طرح کی کوئی اسکیم لے کر آتی ہے تو یہ سچ ثابت ہوگی۔ ان کی طرح جھوٹ نہیں بولیں گے۔ میں بی جے پی کے لوگوں سے کہنا چاہتا ہوں کہ کم از کم اٹل جی کے نام کے ساتھ ایسا سلوک نہ کریں۔ پارٹی کا کوئی بھی شخص ہو، وہ اٹل جی کا احترام کرتے ہیں۔ یہ کاؤنٹر جو آج غائب ہے، منوج تیواری، میناکشی لیکھی، اور دیگر بی جے پی لیڈروں کو جواب دینا چاہیے کہ کاؤنٹر کہاں گئے؟ چاہے اس اسکیم کا ہو یا ڈی بی سی اور صفائی ملازمین کو یقینی بنانے کا معاملہ، بی جے پی صرف جھوٹ بولنے کا کام کر رہی ہے۔ مجھے لگتا ہے کہ بی جے پی لیڈروں نے اسکیم کا سارا پیسہ کھا لیا۔ اس کی تحقیقات ہونی چاہیے کیونکہ سرکاری کاغذات میں اس کا ذکر تھا۔ اگر بی جے پی اٹل جی کا نام لے کر ایسا کر سکتی ہے تو وہ دہلی کے لوگوں کا کیا بگاڑ سکتی ہے، یہ بات خود عوام بھی اچھی طرح سمجھتے ہیں۔

     

    یہ بھی پڑھئے : جمنا ندی کی آلودگی میں آرہی کمی ، عارضی ڈیم کی تعمیر کے بعد معطل ٹھوس مواد میں کمی


    ایسٹ ایم سی ڈی کے اپوزیشن لیڈر منوج تیاگی نے کہا کہ بھارتیہ جنتا پارٹی ہمیشہ سے اپنا چہرہ، اپنی پالیسیاں، کام کرنے کا طریقہ دکھاتی رہی ہے، وہ اب بھی برقرار ہے۔ بی جے پی اٹل بہاری واجپائی جی کے نام پر سیاست کرنے سے نہیں ہچکچاتی، جن کا پورا ملک احترام کرتا ہے۔ اس اعزاز کے مستحق شخص کے نام پر پہلے جان رسوئی بنائی گئی اور پھر کچھ دنوں بعد انہیں بند کر دیا گیا۔ یہ واضح ہے کہ بی جے پی سیاست کے پہلو کو مدنظر رکھتے ہوئے بڑے لوگوں کے ناموں کا استعمال کر کے منصوبہ بناتی ہے۔ آج ہم نے دیکھا کہ گوتم گمبھیر پوری دہلی میں 'جن رسوئی' کا نعرہ لگا رہے ہیں۔ جس دن جان رسوئی کا افتتاح ہوا، اسے ہر اخبار، ہر چینل میں دکھایا گیا۔ پوری دہلی میں اس کا چرچا ہوا۔ یہ کام بی جے پی کے جھوٹ بولنے کے نظام کے تحت کیا گیا۔ جس جگہ جن رسوئی کھولی گئی وہ ایم سی ڈی کی زمین تھی۔ لیکن جب افسران پوچھتے ہیں کہ ڈھلوان کی یہ زمین انہیں کیسے دی گئی، نہ تو ایم سی ڈی کے عہدیدار کے پاس اس کا جواب تھا اور نہ ہی بی جے پی کو کاغذات دیے گئے ہیں۔ بی جے پی سے میرا سوال ہے کہ یہ ڈھلوان زمین کس تجویز کے تحت گوتم گمبھیر جی کے ٹرسٹ کو دی گئی؟ دوسرا سوال یہ ہے کہ آپ اس ماس ڈائیٹ پلان پر بہت شور مچاتے ہیں لیکن جب لوگ دوپہر کو کھانا کھانے آتے ہیں تو وہ اسے بند کروا دیتے ہیں۔ہم نے اسے کئی بار چیک کیا لیکن ہر بار ان کا پبلک کچن بند پایا۔ سب سے پہلے آپ اس کا ڈھول پیٹنا بند کریں۔

    دوسری بات یہ کہ آج آپ گوتم گمبھیر کے کچن کا ترانہ گا رہے ہیں۔  کیا ان کا نام اٹل بہاری واجپئی جی کے نام سے بڑا ہو گیا ہے؟ یہ بہت شرمناک ہے۔ سیاست کرنے کے لیے غریب عوام کے جذبات سے کھیلا جاتا ہے۔ بی جے پی کہتی تھی کہ وہ غریبوں کو 10 روپے میں پیٹ بھر کر کھانا دے گی، تو یہ سب ان کی جھوٹ کی پالیسیاں ہیں۔ دہلی کے لوگ اسے اچھی طرح سمجھ چکے ہیں اور آنے والے انتخابات میں بی جے پی کو اس کا سامنا کرنا پڑے گا۔نارتھ ایم سی ڈی کے اپوزیشن لیڈر وکاس گوئل نے کہا کہ بی جے پی نے اٹل آہر یوجنا یہ کہہ کر شروع کی تھی کہ ہم غریبوں کو صرف 10 روپے میں پیٹ بھر کر کھانا کھلائیں گے۔ لیکن کچھ ہی دیر میں تمام فوڈ کاؤنٹر بند ہو گئے۔ شرم کی بات ہے کہ بی جے پی نے سیاست کو دیکھتے ہوئے غریبوں کے پیٹ کا مذاق اڑایا ہے۔ انہیں روٹی کا لالچ دے کر وہ صرف ان کی تعریف حاصل کرنا چاہتے تھے ۔ اس کے گیت پوری دہلی میں گائے اور پھر ان سے سستے کھانے کا سہارا چھین لیا۔ انہوں نے ان کو وہ خوشی کیوں دکھائی جو تم انہیں نہیں دے سکتے تھے ۔ جہاں انہوں نے کھانے کے کاؤنٹر کھولے، آج وہاں کاؤنٹر نہیں ہیں۔ کچن صرف عوام کے دیکھنے کے لیے کھولے گئے اور پھر انہیں خاموشی سے بند کر دیا گیا۔ اٹل بہاری واجپئی کے نام پر لوگوں کے جذبات کو دھوکہ دیا گیا ہے۔ عوام آپ کو کبھی معاف نہیں کرے گی اور ایم سی ڈی کے آنے والے الیکشن میں عوام آپ کے ہر جھوٹ کا بدلہ لیں گے۔
    Published by:Imtiyaz Saqibe
    First published: