உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    کانگریس کا YouTube Channel ہوا ڈیلیٹ، پارٹی نے بیان جاری کرکے کہا: جانچ جاری، جلد لوٹیں گے

    کانگریس کا YouTube Channel ہوا ڈیلیٹ، پارٹی نے بیان جاری کرکے کہا: جانچ جاری، جلد لوٹیں گے ۔ فائل فوٹو ۔

    کانگریس کا YouTube Channel ہوا ڈیلیٹ، پارٹی نے بیان جاری کرکے کہا: جانچ جاری، جلد لوٹیں گے ۔ فائل فوٹو ۔

    Congress YouTube Channel: کانگریس کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ ہمارا یوٹیوب چینل انڈین نیشنل کانگریس ڈیلیٹ ہوگیا ہے ۔ ہم اس کو ٹھیک کرنے کی کوشش کررہے ہیں اور اس سلسلہ میں یوٹیوب و گوگل کی ٹیم سے بات چیت جاری ہے ۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Delhi | New Delhi | New Delhi
    • Share this:
      نئی دہلی : کانگریس کا یوٹیوب چینل اچانک ڈیلیٹ ہوگیا ہے ۔ اس سلسلہ میں پارٹی نے جانکاری دی ہے ۔ کانگریس نے یوٹیوب اور گوگل دونوں سے رابطہ کیا ہے اور یہ جاننے کی کوشش کی ہے کہ آخر کس وجہ سے یہ چینل ڈیلیٹ ہوا ہے ۔ کانگریس پارٹی چینل کو دوبارہ سے بحال کرنے کی کوشش کرہی ہے ۔

       

      یہ بھی پڑھئے: گیان واپی مسجد معاملے کی سماعت مکمل، 12 ستمبر کو عدالت سنائے گا فیصلہ


      کانگریس کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ ہمارا یوٹیوب چینل انڈین نیشنل کانگریس ڈیلیٹ ہوگیا ہے ۔ ہم اس کو ٹھیک کرنے کی کوشش کررہے ہیں اور اس سلسلہ میں یوٹیوب و گوگل کی ٹیم سے بات چیت جاری ہے ۔ جانچ چل رہی ہے کہ یہ ٹیکنیکل خرابی ہے یا کوئی سازش ۔ امید ہے کہ ہم واپس لوٹیں گے ۔

       

      یہ بھی پڑھئے: راجہ سنگھ کے خلاف مزید 2 مقدمات درج، دوبارہ گرفتاری کا امکان


      اس سے پہلے ملک کے کئی بڑے لیڈروں کے سوشل میڈیا اکاونٹس ہیک ہوتے آئے ہیں، لیکن ایسا پہلی مرتبہ ہوا ہے کہ کسی پارٹی کا یوٹیوب چینل ڈیلیٹ ہوگیا ہے ۔ فی الحال اس کی وجہ واضح نہیں ہوپائی ہے اور جانچ جاری ہے ۔ حالانکہ ہیکنگ کا شک ظاہر کیا جارہا ہے، لیکن اس کی پختہ جانکاری نہیں ہے ۔

      کانگریس کا یوٹیوب چینل ایسے وقت میں ڈیلیٹ ہوا ہے جب پارٹی ملک بھر میں اپنی بھارت جوڑو یاترا شروع کرنے جارہی ہے ۔ سات ستمبر سے کنیا کماری سے یہ مہم شروع کی جائے گی اور بارہ ریاستوں سے گزرتے ہوئے جموں و کشمیر میں یہ یاترا ختم ہوگی ۔ اس کی قیادت پارٹی کے ممبر پارلیمنٹ راہل گاندھی کریں گے ۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: