உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    لڑکیوں کی آبروریزی معاملے کا ملزم بری، عدالت نے کہا- دلت ہونے کے سبب پیدا کی گئی غلط فہمی

    لڑکیوں کی آبروریزی معاملے کا ملزم بری، عدالت نے کہا- دلت ہونے کے سبب پیدا کی گئی غلط فہمی

    لڑکیوں کی آبروریزی معاملے کا ملزم بری، عدالت نے کہا- دلت ہونے کے سبب پیدا کی گئی غلط فہمی

    Delhi Latest News: ملزم نے عدالت کو بتایا کہ شکایت کنندہ اونچی ذات سے ہے۔ شکایت کنندہ سے اس کا کئی بار جھگڑا ہوچکا تھا۔ یہ جھگڑا شکایت کنندہ کے کتے کی وجہ سے ہوا تھا۔

    • Share this:
      نئی دہلی: دہلی کے تیس ہزاری کورٹ نے 4 نابالغ لڑکیوں کی آبروریزی کے معاملے میں ملزم کو بری کردیا۔ تیس ہزاری کورٹ نے اپنے حکم میں کہا ہے کہ ملزم کو غلط معاملے میں پھنسایا گیا۔ ملزم دلت ہے اور اہل خانہ نے ملزم سے متعلق غلط فہمی پیدا کرلی۔ اتنا ہی نہیں، تیس ہزاری کورٹ نے اپنے حکم میں کہا ہے کہ ملزم جسے اب عدالت نے بری کردیا ہے، اسے دو مہینے کے اندر ایک لاکھ روپئے کا معاوضہ دیا جائے۔

      واضح رہے کہ دہلی پولیس نے عدالت سے کہا تھا کہ ملزم سیریل سیکسوئل آفینڈر ہے۔ مئی 2015 سے ملزم جیل میں تھا۔ وہیں اس معاملے کی سماعت کے دوران ملزم نے عدالت سے کہا تھا کہ وہ دلت ہے، اس لئے اسے جھوٹے معاملوں میں پھنسایا گیا۔

      ملزم نے عدالت کو بتایا کہ شکایت کنندگان اعلیٰ طبقات سے تعلق رکھتے ہیں۔ شکایت کنندہ سے اس کا کئی بار جھگڑا ہوچکا تھا۔ یہ جھگڑا شکایت کنندہ کے کتے کی وجہ سے ہوا تھا۔

       

       
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: