உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    سول ڈیفنس رضاکار رابعہ کے قتل اور مبینہ عصمت دری معاملے میں دہلی پولیس پر لاپرواہی کا الزام

    سول ڈیفنس رضاکار رابعہ کے قتل اور مبینہ عصمت دری معاملے میں دہلی پولیس پر لاپرواہی کا الزام

    سول ڈیفنس رضاکار رابعہ کے قتل اور مبینہ عصمت دری معاملے میں دہلی پولیس پر لاپرواہی کا الزام

    دہلی کے سنگم وہارکی رہائشی رابعہ کے قتل اور اجتماعی عصمت دری کے معاملے میں، بی جے پی حکومت کی پولیس مسلسل لاپرواہی برتی جارہی ہے۔ ہریانہ کے سورج کنڈ میں اجتماعی عصمت دری اور قتل کے 6 دن گزرنے کے بعد بھی پولیس اس راز سے پردہ نہیں اٹھا سکی ہے۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Share this:
    نئی دہلی: دہلی کے سنگم وہارکی رہائشی رابعہ کے قتل اور اجتماعی عصمت دری کے معاملے میں، بی جے پی حکومت کی پولیس مسلسل لاپرواہی برتی جارہی ہے۔ ہریانہ کے سورج کنڈ میں اجتماعی عصمت دری اور قتل کے 6 دن گزرنے کے بعد بھی پولیس اس راز سے پردہ نہیں اٹھا سکی ہے۔ دہلی پولیس براہ راست وزیر داخلہ امت شاہ اور وزیراعظم مودی کے ماتحت ہے۔ ہریانہ میں بی جے پی کی حکومت بھی ہے اور وہاں کی پولیس بھی ڈھیلائی برت رہی ہے۔

    دہلی کے وزیر عمران حسین کا کہنا ہے کہ ایک طرف بی جے پی کی مرکزی اور ہریانہ حکومت خواتین کی حفاظت کے حوالے سے لاپرواہ ہے، دوسری طرف دہلی کی کیجریوال حکومت دہلی میں خواتین کی حفاظت کے لیے سنجیدہ۔ اسٹریٹ لائٹس سے لے کر سی سی ٹی وی تک نصب کئے گئے ہیں۔ دہلی کی سول ڈیفنس رضاکار رابعہ کو 27 اگست کو ہریانہ کے سورج کنڈ میں اجتماعی عصمت دری اور قتل کردیا گیا، جس کے بعد ایک ملزم نے کلندی کنج پولیس اسٹیشن میں اپنے آپ کو پولیس کے حوالے کردیا، لیکن پولیس ابھی تک ملزم سے راز نہیں نکال سکی ہے۔ مرکزی وزیر داخلہ امت شاہ اور نریندر مودی کی دہلی پولیس معاملے میں تاخیر کا رویہ اختیار کر رہی ہے۔

     دہلی پولیس کا کہنا ہے کہ قتل ہریانہ میں ہوا اور ملزم نے کالندی کنج پولیس اسٹیشن میں اپنے آپ کو سرینڈرکردیا ہے۔ اس کی وجہ سے ملزم کو تہاڑ جیل بھیج دیا گیا ہے۔ فائل فوٹو

    دہلی پولیس کا کہنا ہے کہ قتل ہریانہ میں ہوا اور ملزم نے کالندی کنج پولیس اسٹیشن میں اپنے آپ کو سرینڈرکردیا ہے۔ اس کی وجہ سے ملزم کو تہاڑ جیل بھیج دیا گیا ہے۔ فائل فوٹو


    دہلی پولیس کا کہنا ہے کہ قتل ہریانہ میں ہوا اور ملزم نے کالندی کنج پولیس اسٹیشن میں اپنے آپ کو سرینڈرکردیا ہے۔ اس کی وجہ سے ملزم کو تہاڑ جیل بھیج دیا گیا ہے۔ اب ہریانہ پولیس عدالت کے ذریعے ٹرانزٹ ریمانڈ مانگے گی۔ پھر ملزم کو ہریانہ پولیس کے حوالے کیا جائے گا۔ اس کے بعد اسے ریمانڈ پر لے کر پوچھ گچھ کی جا سکتی ہے۔ تب ہی اس معاملے میں کچھ سامنے آئے گا۔ دوسری طرف عام آدمی پارٹی کی طرف سے دہلی پولیس اور ہریانہ پولیس پر دباؤ ڈالا جا رہا ہے کہ اس معاملے کو جلد از جلد ظاہر کیا جائے۔  قتل اور اجتماعی عصمت دری میں ملوث ملزمان کو سخت سزا دی جائے۔ عام آدمی پارٹی کی خواتین رہنماؤں نے اس حوالے سے پریس کانفرنس بھی کی ہے۔ اس کے علاوہ دہلی کمیشن برائے خواتین کی طرف سے ہریانہ پولیس کو نوٹس بھی جاری کیا گیا ہے۔

    عام آدمی پارٹی کا الزام ہے کہ مرکزی وزیر داخلہ امت شاہ اور وزیر اعظم مودی کی دہلی پولیس اس معاملے میں تاخیر کا رویہ اختیار کر رہی ہے۔
    عام آدمی پارٹی کا الزام ہے کہ مرکزی وزیر داخلہ امت شاہ اور وزیر اعظم مودی کی دہلی پولیس اس معاملے میں تاخیر کا رویہ اختیار کر رہی ہے۔


    کیجریوال حکومت کے وزیر عمران حسین اور عام آدمی پارٹی کے مرکزی ترجمان سوربھ بھردواج نے منگل کو متاثرہ خاندان سے ملاقات کی تھی۔ اس دوران متاثرہ خاندان کو 10 لاکھ روپئے کی مالی امداد کا اعلان بھی کیا گیا۔ اس کے علاوہ متاثرہ خاندان کو انصاف دلانے کے لئے ہرممکن مدد کی یقین دہانی کرائی ہے۔ عمران حسین نےکہا کہ مرکزی وزیر داخلہ امت شاہ کے ماتحت دہلی پولیس اور ہریانہ کی بی جے پی حکومت کی پولیس معاملے میں ایک لمبا رویہ اپنائے ہوئے ہے۔ قتل کے کئی دن گزر جانے کے بعد بھی اس معاملے میں مناسب تفتیش شروع نہیں کی گئی۔ عام آدمی پارٹی اور دہلی حکومت متاثرہ خاندان کے ساتھ ہے۔ سول ڈیفنس کی رضاکار رابعہ کو انصاف دلانے کے لئے ہر ممکن کوشش کرے گی۔
    Published by:Nisar Ahmad
    First published: