உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    دہلی پولیس کمشنر راکیش استھانا کو ہائی کورٹ سے بڑی راحت، عہدے پر رہیں گے برقرار

    دہلی پولیس کمشنر راکیش استھانا کو ہائی کورٹ سے ملی بڑی راحت

    دہلی پولیس کمشنر راکیش استھانا کو ہائی کورٹ سے ملی بڑی راحت

    Delhi News: دہلی ہائی کورٹ میں داخل کی گئی عرضی میں راکیش استھانا کو ریٹائرمنٹ سے عین قبل دہلی پولیس کمشنر کے طور پر تقرر کرنے کو ضوابط کی خلاف ورزی بتاتے ہوئے ان کی تقرری منسوخ کرنے کی اپیل کی گئی ہے۔

    • Share this:
      نئی دہلی: پولیس کمشنر راکیش استھانا (Police Commissioner Rakesh Asthana) کو دہلی ہائی کورٹ (High Court) سے بڑی راحت ملی ہے۔ ہائی کورٹ نے دہلی پولیس کمشنر راکیش استھانا کی تقرری کو چیلنج دینے والی عرضی کو خارج کردیا ہے۔ ہائی کورٹ نے کہا کہ راکیش استھانا اپنے عہدے پر بنے رہیں گے۔ واضح رہے کہ ایک این جی او نے ان کی تقرری کو چیلنج دیا تھا۔ غیر سرکاری تنظیم سینٹر فار پبلک انٹرسٹ لیٹیگیشن (CPIL) نے راکیش استھانا کی تقرری کو چیلنج دیتے ہوئے مداخلت عرضی داخل کی تھی۔

      عرضی میں کہا گیا تھا کہ راکیش استھانا کی مدت کار کم از کم 6 ماہ نہیں تھی، اس لئے ان کی تقرری کے لئے یو پی ایس سی کا کوئی پینل نہیں بنایا گیا۔ ساتھ ہی کم از کم دو سالہ مدت کے اصول کو بھی نظر انداز کیا گیا۔ اس سے پہلے سپریم کورٹ نے راکیش استھانا کی تقرری سے متعلق عرضی پر دو ہفتے میں فیصلہ کرنے کو کہا تھا۔

      واضح رہے کہ عرضی میں راکیش استھانا کے ریٹائرمنٹ سے عین قبل دہلی پولیس کا پولیس کمشنر تقرر کئے جانے کو ضوابط کی خلاف ورزی بتایا گیا ہے اور ان کی تقرری منسوخ کرنے کی اپیل کی گئی ہے۔ تقرری کو چیلنج دینے والی عرضی میں کہا گیا تھا کہ راکیش استھانا کی تقرری کے سلسلے میں 6 ماہ کی مدت بچے رہنے کے دوران ہی ڈیپوٹیشن کے اصول پر عمل نہیں کیا گیا۔

      اس کے علاوہ دہلی پولیس کے کمشنر کی تقرری جیسے اہم معاملات میں یو پی ایس سی نے پینل بھی نہیں بنایا۔ دہلی پولیس کمشنر جیسے اہم عہدے پر تقررری کے لئے طے شدہ مدت کم از کم دو سال ہونے کے ضوابط کو بھی نظر انداز کیا گیا ہے۔ اس کے علاوہ انٹرکیڈر ڈیپوٹیشن کے لئے سپر ٹائم اسکیل کے ضوابط کو بھی حکومت نے نظر انداز کیا ہے۔
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: