اپنا ضلع منتخب کریں۔

    Delhi Violence LIVE Updates : تشدد میں اب تک18افراد کی موت،مسلم تنظیموں نے فوج کی تعیناتی کاکیامطالبہ،اسکول بند

    دہلی پولیس نے بتایا کہ پیر کی دوپہر شمال مشرقی دہلی میں کشیدگی کے دوران آج اسکولوں کو چھٹی دی گئی ہے۔ وہیں پولیس ذرائع نے دعویٰ کیاہے کہ پرتشدد احتجاج کے دوران مبینہ طورپر پولیس پر فائرنگ کرنے والے شاہ رخ نامی شخص کو حراست میں لے لیا گیاہے۔

  • News18 Urdu
  • | February 26, 2020, 08:28 IST
    facebookTwitterLinkedin
    LAST UPDATED 3 YEARS AGO

    AUTO-REFRESH

    8:33 (IST)
    مسلم تنظیموں نے وزیر اعظم نریندر مودی کو خط لکھا ہے اس خط میں دہلی میں تشدد سے متاثرہ علاقوں میں فوج کی تعیناتی کا مطالبہ کیا گیا ہے
    8:32 (IST)
    دہلی میں آج بھی تعلیمی ادارے بند ہیں
    8:32 (IST)
    دہلی میں جاری تشدد میں مہلوکین کی تعداد 18 ہوگئی ہے وہیں مسلم تنظیموں نے تشدد سے متاثرہ علاقوں میں فوج کی تعیناتی کامطالبہ کیا ہے
    23:27 (IST)

    نارتھ ایسٹ دہلی میں 10 اور بارہویں کے امتحانات کو ملتوی کردیا گیا ہے ۔

    23:25 (IST)

    وزیر داخلہ امت شاہ نے گزشتہ 24 گھنٹوں میں تیسری مرتبہ اعلی سطحی میٹنگ کی ۔ اس میٹنگ میں ایس این شریواستو بھی موجود تھے ، جنہیں آج ہی دہلی پولیس کا اسپیشل کمشنر ( لا اینڈ آرڈر ) مقرر کیا گیا ہے ۔ یہ میٹنگ تقریبا تین گھنٹوں تک چلی ۔

    23:23 (IST)

    دہلی میں پرتشدد واقعات میں اب 13 افراد کی موت ہوچکی ہے ۔ ان میں ایک پولیس ہیڈ کانسٹیبل بھی شامل ہیں ۔ ڈیرھ سو سے زیادہ افراد کے زخمی ہونے کی اطلاع ہے ۔ 

    18:22 (IST)

    قومی   دارالحکومت  دہلی میں بدستور تشدد ، پتھراؤ اور آتش زنی کا سلسلہ جاری ہے۔مہلوکین کی تعداد 10 ہو گئی

    18:10 (IST)

    میں نے پی ایم  مودی سے   مسلمانوں اور عیسائی کے متعلق بات چیت کی ہے۔  ہندوستان میں 200 ملین مسلمان ہے۔ یہاں  پر سب کو مذہبی آزادی حاصل ہے۔  یہ ہندوستان کا  داخلی معاملہ ہے۔

    18:5 (IST)

    شہریت ترمیمی قانون کا معاملہ ، ہندوستان کا داخلی معاملہ ہے  ،وہ بہتر فیصلہ کرسکتے ہیں: امریکی صدر ٹرمپ

    17:57 (IST)

    ہم نے مذہبی آزادی کے بارے میں بات کی۔ وزیر اعظم  (مودی)نے کہا کہ وہ چاہتے ہیں کہ لوگوں کو مذہبی آزادی حاصل ہو۔ انہوں نے اس پر  محنت کی ہے۔ میں نے انفرادی واقعات کے بارے میں سنا لیکن میں نے اس پر تبادلہ خیال نہیں کیا۔ یہ ہندوستان پر منحصر ہے: امریکی صدر ٹرمپ

    دہلی تشدد کی تازہ ترین خبریں: دہلی پولیس نے بتایا کہ پیر کی دوپہر شمال مشرقی دہلی میں کشیدگی کے دوران آج اسکولوں کو چھٹی دی گئی ہے۔ وہیں پولیس ذرائع نے دعویٰ کیاہے کہ پرتشدد احتجاج کے دوران مبینہ طورپر پولیس پر فائرنگ کرنے والے شاہ رخ نامی شخص کو حراست میں لے لیا گیاہے۔یادرہے کہ سی اے اے مخالف اور حامی گروپوں کے مابین ہونے والی جھڑپوں میں ایک ہیڈ کانسٹیبل ہلاک ہوگیا۔جبکہ اسی دوران تشدد کے دوران17 شہریوں کے ہلاکت کی خبر ہے ۔ جھڑپ میں زخمی ہونے والے پولیس کے ایک ڈپٹی کمشنر کو اسپتال میں داخل کرایا گیا ہے۔ شمال مشرقی دہلی کے بھاجن پورہ علاقے میں بھی ایک پٹرول پمپ کو نذر آتش کردیا گیا۔ شمال مشرقی دہلی کے علاقے میں کل آٹھ سی آر پی ایف کمپنیوں کو تعینات کیا گیا ہے۔ جن میں ریپڈ ایکشن فورس (آر اے ایف) کی دو کمپنیاں اور خواتین سکیورٹی اہلکاروں کی ایک کمپنی شامل ہے۔

    اس سے پہلے مظاہرین نے جعفرآباد اور موج پور میں کم سے کم دو مکانات اور فائر ٹینڈر کو نذر آتش کیا ، جہاں مسلسل دوسرے دن بھی جھڑپیں ہوتی رہیں اور ایک دوسرے پر پتھراؤ بھی کیا گیا۔ جعفرآباد کے علاقے چاند باغ میں بھی تشدد کی اطلاع ملی ہے۔ دہلی پولیس نے بتایا کہ شمال مشرقی ضلع میں دفعہ 144کا نفاذ عمل میں لایا گیا ہے

     

     

     

     

    دفعہ 144 نافذ کردی گئی ہے

    یہ تشدد امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے قومی دارالحکومت کے دورے کے گھنٹوں پہلے ہی ہوا ہے۔ایک سینئر پولیس افسر نے بتایا کہ متوفی کانسٹیبل ، جس کی شناخت رتن لال کے نام سے ہوئی ہے ، اسسٹنٹ کمشنر پولیس ، گوکلپوری کے دفتر سے منسلک تھا۔پولیس نے مظاہرین کو منتشر کرنے کے لئے آنسو گیس کے شیل فائر کیے اور لاٹھی چارج کا سہارا لیا۔ حکام کے مطابق ، علاقے میں فائر کال کا جواب دینے کے بعد مظاہرین نے فائر ٹینڈر کو نقصان پہنچا۔دہلی میٹرو نے جعفرآباد اور ماج پور-بابر پور اسٹیشنوں پر داخلے اور باہر نکلنے دروازے بند کردیئے گئے ہیں۔

    دہلی میٹرو ریل کارپوریشن (ڈی ایم آر سی) نے ایک ٹویٹ میں کہا ، "جعفرآباد اور موج پور۔بابرپور کے داخلے اور خارجی راستے بند ہیں۔ ان اسٹیشنوں پر ٹرینیں رک نہیں رہیں گی۔" جعفرآباد میٹرو اسٹیشن پر 24 گھنٹے سے زیادہ کے لئے داخلہ اور خارجی گیٹ بھی بند رہے۔

    دہلی کے وزیر اعلی اروند کیجریوال نے تشدد کی خبروں کو "انتہائی پریشان کن" قرار دیا۔ لیفٹیننٹ گورنر انیل بیجل نے کہا کہ انہوں نے دہلی پولیس کو ہدایت کی ہے کہ وہ یہ یقینی بنائے کہ شمال مشرقی دہلی میں امن وامان برقرار رہے اور صورتحال پر گہری نظر رکھی جارہی ہے۔شہریت (ترمیمی) ایکٹ (سی اے اے) کے خلاف احتجاج کرنے والے لوگوں کی ایک بڑی تعداد نے اتوار کی شام جعفرآباد کے قریب مخالف اور سی اے اے گروپوں کے مابین جھڑپیں شروع کردیں ، جبکہ اسی طرح کے دھرنے قومی دارالحکومت کے حصوں میں بھی شروع کردیئے گئے۔