LIVE NOW

Delhi Violence Over CAA Protest LIVE Updates:تشدد سے ہندو۔مسلمان دونوں کا نقصان، کیجریوال

مسلم تنظیموں نے وزیراعظم نریندر مودی کو خط لکھ کر دہلی کے تشدد متاثرہ علاقوں میں فوج کی تعیناتی کا مطالبہ کیاہے۔ اس سلسلہ میں تنظیموں نے کہا کہ تشدد متاثرہ علاقوں میں مسلمانوں کو نشانہ بنایاجارہاہے اور حالات پرقابوپانے کے لیے فوج کی تعیناتی ضروری ہوگئی ہے

news18urdu.com | February 26, 2020, 6:47 PM IST
facebook Twitter Linkedin
Last Updated February 26, 2020
auto-refresh

Highlights

6:05 pm (IST)

دہلی کے وزیر اعلیٰ اروند کیجریوال نے بدھ کے روز قومی دارالحکومت میں ہونے والے تشدد کے سلسلے میں دہلی اسمبلی سے خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ تشدد کی وجہ سے ہندو اور مسلمان دونوں کو تکلیف کا سامنا کرنا پڑا ہے۔انہوں نے کہا ، دہلی کے لوگ فسادات نہیں چاہتے ، صرف معمول کی زندگی گزارتے ہیں۔ پھر فسادات کیوں ہوئے؟ یہ عام آدمی نے نہیں کیا ، یہ بیرونی لوگوں نے کیا ہے

اس کے بعد انہوں نے مہلوکین کے نام پڑھے اور ان کے مذہب کا تذکرہ بھی کیا تاکہ یہ واضح کریں کہ دونوں مذاہب کے لوگ متاثر ہوئے ہیں۔ "دونوں مذاہب کے لوگ مر گئے ، ایک پولیس اہلکار بھی مر گیا۔مگر تشدد سے کس کو فائدہ ہوا؟ ہندو اور مسلمان دونوں متاثر ہوئے۔ جن افراد کے کنبہ کے افراد کو کھویا ہے ان  کے کنبہ  کا کسی  بھی اجتماعی ایجنڈے سے کوئی لینا دینا نہیں ہے۔


4:41 pm (IST)
Load More
Delhi Violence Over CAA Protest LIVE Updates:شمال مشرقی دہلی میں ہوئے تشدد میں اب مہلوکین کی تعداد 22ہوگئی ہے۔ مسلم تنظیموں نے وزیراعظم نریندر مودی کو خط لکھ کر دہلی کے تشدد متاثرہ علاقوں میں فوج کی تعیناتی کا مطالبہ کیاہے۔ اس سلسلہ میں تنظیموں نے کہا کہ تشدد متاثرہ علاقوں میں مسلمانوں کو نشانہ بنایاجارہاہے اور حالات پرقابوپانے کے لیے فوج کی تعیناتی ضروری ہوگئی ہے۔وہیں دوسری جانب شمال مشرقی دہلی میں ہوئے تشدد کے معاملے میں دہلی ہائیکورٹ میں کل آدھی رات کو سماعت ہوئی۔جسٹس ایس مُرلی دھر کے گھر پر دو رکنی بینچ نے سماعت کی ۔عدالت نے دہلی پولیس کو ہدایت دی کہ وہ زخمیوں کو مناسب طبی امداد فراہم کرنے کے لیے اور انہیں مختلف اسپتالوں کو لے جانے کے لیے محفوظ راستہ یقینی بنائے ۔اسی دوران عدالت نے مصطفیٰ آباد کے ایک اسپتال سے ایمبولینس کومحفوط راستہ دینے اور مریضوں کو سرکاری اسپتال منتقل کرنے کی ہدایت دی ہے۔جسٹس مُرلی دھر نے اَل ہند اسپتال کے ڈاکٹر سے بھی بات کی اور حالات سے واقفیت حاصل کی ۔عدالت نے اس سلسلے میں اسٹیٹس رپورٹ بھی طلب کی ہے۔دوپہر کو دہلی پولیس اس ضمن میں اپنی کارگذاری کے حوالے رپورٹ عدالت کو پیش کرے گی ۔۔دہلی میں تشدد سے جڑے معاملات پر آج دو پہر کو عدالت میں پھر سماعت ہوگی۔

شمال مشرقی دہلی کی سیمابی صورتحال کے درمیان قومی سلامتی مشیر اجیت ڈوبھال بیتی رات متاثرہ علاقوں کا دورہ کیا اور وہاں کی صورتحال کا جائزہ لیا ۔اجیت ڈوبھال پہلے سیلم پور پہنچے اور وہاں اعلی افسران کے ساتھ میٹنگ کی۔سیلم پور سے این ایس اے بھجن پورا،یمُنا ویہار اورموج پور بھی گئے۔شمال مشرقی دہلی کے متاثرہ علاقوں میں وزارت داخلہ نے دہلی پولیس کے ساتھ ایس ایس بی،آئی ٹی بی پی کے جوانوں کوتعینات کیا گیا۔ریپڈ ایکشن فورس کے جوان بھی مستعد ہیں۔سیلم پور پہنچے۔انہوں نے وہاں کی صورتحال کے بارے میں انتظامیہ سے جانکاری لی۔

دوسری جانب شمال مشرقی دہلی تشددپر آج سپریم کورٹ میں سماعت ہے۔سپریم کورٹ میں تین عرضیاں داخل کی گئی ہیں۔اُن میں بی جے پی لیڈر کپل مشرا پر فساد برپا کرنے کا الزام لگایا گیا ہے۔