ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

کورونا وائرس کا شکار ہوئے لاوارث لوگوں کی تدفین لمحہ فکریہ، وقف بورڈ کے رکن نے کیجریوال سے کیا یہ مطالبہ

ایڈوکیٹ حمال اختر نے سی ای او اور وزیر اعلی اروند کیجریوال کو لکھےگئے اپنے خط میں لکھا ہے کہ ہندوستانی قانون کے مطابق مہلوک کی آخری رسوم کی ادائیگی اس کے مذہب یا خواہش کے مطابق کرنا قانونی حق ہے، جسے پورا کیا جانا چاہئے۔

  • Share this:
کورونا وائرس کا شکار ہوئے لاوارث لوگوں کی تدفین لمحہ فکریہ، وقف بورڈ کے رکن نے کیجریوال سے کیا یہ مطالبہ
دہلی وقف بورڈ کے رکن حمال اختر نے اروند کیجریوال کو کورونا سے ہلاک ہونے والے لوگوں کی تدفین کے مسئلے پر خط لکھا ہے۔ فائل فوٹو

نئی دہلی :دہلی میں کورونا وائرس کے شکار ہوئے لوگوں کی تدفین کا مسئلہ سلجھنے کا نام نہیں لے رہا ہے۔ دہلی وقف بورڈ کی طرف سے سے اندر پرستھ پارک کے قریب جدید قبرستان اہل اسلام کو کورونا وائرس کی وجہ سے مرنے والوں کی آخری رسومات کی ادائیگی کے لئے دیا گیا تھا، لیکن وہاں پر اب تک تدفین نہیں ہو رہی ہے۔ اب تک کورونا وائرس کے شکار لوگوں کو دفن کرنےکےلئےکافی مشقت کا سامنا کرنا پڑتا رہا ہے۔ کچھ لوگوں کو دہلی گیٹ قبرستان میں دفن کیا گیا ہے اور  اس جگہ پرلاوارث میتوں کو قبرستانوں میں تدفین کےخلاف کافی مخالفت کا سامنا کرنا پڑا، جسے ماضی میں دہلی وقف بورڈ کے سی ای او نے دیکھا تھا۔


ایسے میں ایسے واقعات کا بھی امکان ہے، جو لوگ کورونا بیماری کی وجہ ہلاک ہوئے ہیں۔ انہیں بھی اس طرح کی مخالفت کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے۔ خط میں کہا گیا ہےکہ کچھ میڈیا رپورٹس میں یہ انکشاف ہوا ہےکہ مسلم کمیونٹی سے تعلق رکھنے والے ایسے لوگوں کی لاشیں دہلی کے اسپتال میں لاوارث  پڑی ہیں، جنہیں کورونا وائرس کی بیماری کا شکار ہونا پڑا اور ان کا انتقال ہوگیا۔ ان کی باڈی کو ان کے لواحقین کےسپرد کر دیا جانا چاہئےتھا، لیکن کیونکہ لاک ڈاون کا سلسلہ جاری ہے، اس کی وجہ سے ان کے لواحقین ان لاشوں کو نہیں لے سکے ہیں۔


کورونا کی وجہ سے لوگوں کی اموات کا سلسلہ جاری ہے۔ اس کی وجہ سے ملک میں لاک ڈاون کو بڑھا دیا گیا ہے۔ فائل فوٹو
کورونا کی وجہ سے لوگوں کی اموات کا سلسلہ جاری ہے۔ اس کی وجہ سے ملک میں لاک ڈاون کو بڑھا دیا گیا ہے۔ فائل فوٹو


ایڈوکیٹ حمال اختر نے سی ای او اور وزیر اعلی اروند کیجریوال کو لکھےگئے اپنے خط میں لکھا ہے کہ ہندوستانی قانون کے مطابق مہلوک کی آخری رسوم کی ادائیگی اس کے مذہب یا خواہش کے مطابق کرنا قانونی حق ہے، جسے پورا کیا جانا چاہئے۔ حمال اختر نے مزید کہا کہ ہمیں میڈیا رپورٹس اوردیگرحوالوں سے معلوم ہوا کہ دہلی میں کچھ ایسے لوگوں کی لاش  لاوارث ہال میں موجود ہیں، جن کا تعلق مسلم طبقے سے ہے، لیکن لاک ڈاؤن کی وجہ سے اس آخری رسومات کی ادائیگی نہیں ہو پا رہی ہے۔ ایسی صورتحال میں، وقف بورڈ پر ذمہ داری عائد ہوتی ہےکہ وہ لاوارث لوگوں کی مدد کریں، جو کورونا سے ہلاک ہوئے۔

حمال اختر نے مزیدکہا کہ آج کل چونکہ دہلی وقف بورڈ کا اپنا چیئرمین نہیں ہے، اس لئے تمام کام بورڈ کے سی ای او ایس ایم علی دیکھ رہے ہیں۔ اس کے پیش نظر، انہیں ایک خط بھی لکھا گیا ہےکہ وہ مرکزی اور ریاستی حکومت کی ہدایت کےمطابق اس سلسلے میں مزید کارروائی کریں۔ ہمیں اس کے انتظامات کرنے ہوں گے۔ ایڈوکیٹ حمال اختر نے مزید کہا کہ اس خط کی ایک کاپی دہلی کے وزیر اعلی اروند کیجریوال کو بھی ارسال کی گئی ہے۔
First published: Apr 14, 2020 11:10 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading