உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    India-China Trade: ریکارڈ سطح پر پہنچا ہندوستان-چین کے درمیان کاروبار، 2021 میں 125 ارب ڈالر کی تجارت

    سرحدی کشیدگی کے باوجود ہندوستان اور چین کے درمیان ہوئی ریکارڈ تجارت۔

    سرحدی کشیدگی کے باوجود ہندوستان اور چین کے درمیان ہوئی ریکارڈ تجارت۔

    جمعہ کو شائع تجارتی اعدادوشمار کے مطابق، سال 2021 میں چین کا ہندوستان کے ساتھ مجموعی بزنس 125.66 ارب ڈالر رہا ہے جو سال 2020 کے مقابلے میں 43.3 فیصدی زیادہ ہے۔ گلوبل ٹائمس نے چین کے سرحدی محکمہ ٹیکس کے اعدادوشمار کی بنیاد پر یہ رپورٹ شائع کی ہے۔

    • Share this:
      بیجنگ: تقریباً دو سال سے ہندوستان اور چین کے درمیان سرحدی تنازعہ (India China Border Dispute) کو لے کر کشیدگی برقرار ہے۔ ایک طرف دونوں ملکوں کی سرحدوں (India China LAC Dispute) میں ایک دوسرے کے خلاف افواج تعینات ہیں۔ تنازع کو ختم کرنے کے لئے دونوں ہی ملکوں کے درمیان فوجی اور سیاسی سطح پر بات چیت جاری ہے لیکن آپ کو جان کر حیرانی ہوگی کہ سرحدی تنازع کے باوجود دونوںملکوں کے تجارتی رشتوں مٰن کسی بھی طرح کی کوئی کمی نہیں آئی ہے۔ ہندوستان اور چین کے درمیان مشرقی لداخ کے علاقے میں سرحد پر کشیدگی کے برقرار رہنے سے دوطرفہ تجارت پر کوئی اثر نہیں دیکھا گیا بلکہ سال 2021 میں دونوں ملکوں کےدرمیان بزنس 125 ارب ڈالر کے ریکارڈ سطح پر پہنچ گیا ہے۔ اس دوران ہندوستان کا تجارتی خسارہ بھی بڑھ کر 69 ارب ڈالر ہوگیا۔

      جمعہ کو شائع تجارتی اعدادوشمار کے مطابق، سال 2021 میں چین کا ہندوستان کے ساتھ مجموعی بزنس 125.66 ارب ڈالر رہا ہے جو سال 2020 کے مقابلے میں 43.3 فیصدی زیادہ ہے۔ گلوبل ٹائمس نے چین کے سرحدی محکمہ ٹیکس کے اعدادوشمار کی بنیاد پر یہ رپورٹ شائع کی ہے۔

      اس کے مطابق، جنوری 2021 سے لے کر دسمبر 2021 کے دوران ہندوستان کو چین سے کیا گیا امپورٹ 46.2 فیصد بڑھ کر 97.52 ارب ڈالر پر پہنچ گیا۔ اس کے مقابلے میں ہندوستان سے چین کا امپورٹ 34.2 فیصدی برھ کر 28.14 ارب ڈالر ہوگیا ہے۔

      ماہرین کا کہنا ہے کہ سال 2021 میں چین سے ہندوستان کے امپورٹ میں ہوئے اضافے کا ایک بڑا حصہ میڈیکل آلات اور دواوں کی تیاری میں استعمال ہونے والے خام مال کا تھا۔ کووڈ-19 وبا کے دوران ہندوستان کو بڑے پیمانے پر طبی آلات کی ضرورت پڑی۔

      ہندوستان اور چین کے درمیان دوطرفہ تجارت میں ہوا یہ اضافہ اس لحاظ سے بھی اہم ہے کہ دونوں ملک اسی مدت میں مشرقی لداخ علاقے میں سرحد پر کافی کشیدہ حالات میں مدمقابل ہیں۔ اب بھی دونوں ملکوں کی افواج انتہائی الرٹ پوزیشن میں ہیں۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: