دیوگوڑا بولے، مودی کا دکھ سمجھ سکتا ہوں، میں بھی رہا 'لٹینس دہلی' کا شکار

نئی دہلی۔ سابق وزیر اعظم دیو گوڑا نے لٹینس دہلی کی خراب ثقافت پر حملہ کرنے کے لئے وزیر اعظم نریندر مودی کا شکریہ ادا کیا ہے۔

Sep 03, 2016 04:42 PM IST | Updated on: Sep 03, 2016 04:44 PM IST
دیوگوڑا بولے، مودی کا دکھ سمجھ سکتا ہوں، میں بھی رہا 'لٹینس دہلی' کا شکار

نئی دہلی۔ سابق وزیر اعظم دیو گوڑا نے لٹینس دہلی کی خراب ثقافت پر حملہ کرنے کے لئے وزیر اعظم نریندر مودی کا شکریہ ادا کیا ہے۔ دیوگوڑا نے کہا  کہ جب وہ اقتدار میں تھے تو انہوں نے بھی یہ بات اٹھائی تھی۔ نیوز 18 سے بات کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ میں وزیر اعظم کا دکھ سمجھ سکتا ہوں۔ میں  بھی ایسے ہی طبقے اور تعصبات کا شکار رہا ہوں۔ میں عام زندگی کا عام شخص ہوں۔ میں کسی کلب کلاس سے نہیں آتا۔ میں شاندار پارٹیاں منعقد نہیں کر سکتا اور ایسے لوگوں کا خیر مقدم نہیں کر سکتا۔ میں اس کی پرواہ بھی نہیں کرتا۔

بتا دیں کہ نیٹ ورک 18 کو دیئے خصوصی انٹرویو میں مودی نے کہا تھا، آپ جانتے ہیں ... وزیر اعظم کی حالت ایسی ہوتی ہے کہ اس کا لٹینس کلچر کے ساتھ گھلنے کا موقع ہی نہیں آتا ہے۔ تو وہ مجھے راس آئے یا نہ آئے، وہ تو کوئی موقع آتا نہیں ہے۔ لیکن جب میں یہ کہتا ہوں تو ... اس بات کو سوچنے اور سمجھنے کی ضرورت ہے ... ایک ایسے لوگوں کا یہاں جماوڑہ ... دہلی کے اقتدار کی گلیاروں میں کام کرتا رہا ہے ... اور یہ لوگ کچھ لوگوں کے لئے وقف ہیں ... ہو سکتا ہے ان کے ذاتی فوائد کے لئے ہوں گے، نجی وجوہات ہوں گے ... اور سوال مودی کا نہیں ہے۔

آپ  تاریخ کی طرف دیکھئے ... سردار ولبھ بھائی پٹیل کے ساتھ کیا ہوا، یہی جماعت سردار کو ایک گاؤں کا، عام صلاحیت والا شخص کے طور پر ہی پیش کرتی رہی۔ مرار جی بھائی کے ساتھ کیا ہوا ... مرار جی بھائی نے کیا کام کیا، کیا نہیں کیا ... کبھی دنیا کو پتہ ہی نہیں چلنے دیا۔ وہ کیا پیتے تھے، اسی کا ذکر کرتے رہے۔ دیوگوڑا جی کا کیا ہوا، ایک کسان کا بیٹا وزیر اعظم بنا تھا ... لیکن شناخت یہی بنا دی گئی کہ سوتے رہتے ہیں۔ جہاں دیکھو، سوتے رہتے ہیں۔

Loading...

Loading...