ہوم » نیوز » انٹرٹینمنٹ

بالی ووڈ سے بڑی خبر:سانس لینےکی تکلیف کےبعدشہنشاہ جذبات دلیپ کماراسپتال میں زیرعلاج

دلیپ کمار کی اہلیہ سائرہ بانو نے دلیپ کمار کے اسپتال میں داخل کرنے کی اطلاع دی ہے۔خاندان کے ایک قریبی دوست آصف فاروقی نے بھی اداکار کی علالت کی تصدیق کی ہے۔

  • Share this:
بالی ووڈ سے بڑی خبر:سانس لینےکی تکلیف کےبعدشہنشاہ جذبات دلیپ کماراسپتال میں زیرعلاج
شہنشاہ جذبات دلیپ کمار کی فائل فوٹو

معروف بزرگ اداکار دلیپ کمار کو آج یہاں صبح سانس لینے کی تکلیف کے بعد اسپتال داخل کیا گیا ہے۔اطلاع کے مطابق 98 سالہ شہنشاہ جذبات کہلائے جانے والے اداکار کو شمال مغربی ممبئی کے کھار میں واقع ہندوجا اسپتال میں پہنچایا گیاہے۔دلیپ کمار کی اہلیہ سائرہ بانو نے دلیپ ک۔ار کے اسپتال میں داخل کرنے کی اطلاع دی ہے۔خاندان کے ایک قریبی دوست آصف فاروقی نے بھی اداکار کی علالت کی تصدیق کی ہے۔انہیں صبح ساڑھے آٹھ بجے اسپتال میں لے جایا گیا ،ہندوجا کا نان کوویڈ19 اسپتال ہے۔اس پہلے بھی گزشتہ ماہ ان کو معمول کی طبی جانچ کے لیے اسپتال میں داخل کیاگیا تھا۔



دلیپ کمار 1944 میں فلم جواہر بھاٹا سے اپنے فلمی کرئیر کا آغاز کیا تھا۔ان کی فلموں کوہ نور،شہید،دیوداس،نیا دور،رام شیام ،بیراگ، سوداگر، شکتی ودھاتا اور مشہور زمانہ فلم مغل اعظم میں اداکارہ کے جوہر دکھائے تھے۔انہیں آخری بار 1998 میں فلم قلعہ میں دیکھا گیاتھا۔انہیں شہنشاہ جذبات کہا جاتا ہے۔وہ راجیہ سبھا کے ممبر بھی رہے ہیں۔حال میں ان کی پاکستان میں واقع آبائی رہائش گاہ کو یادگار بنانے کا پاکستانی حکومت نے اعلان کیا ہے

سائرہ کے دل کی دھڑکن ہیں دلیپ کمار

سائرہ بانونے ایک انٹرویو میں کہا تھا کہ دلیپ کمار ان کی دل کی دھڑکن ہیں۔ دلیپ صاحب کا خیال رکھیں ، مجھے ان کے ساتھ وقت گزارنا اچھا لگتا ہے اور میں اس سے زیادہ کچھ نہیں چاہتی۔ میں ہمیشہ ان کے ساتھ رہنا چاہتی ہوں۔ وہ میرے دل کی دھڑکن ہے اور اس کے بغیر میں نہیں ہوں۔

سائرہ نے یہ بھی بتایا تھا کہ وہ اب بھی دلیپ کمار کی نگاہوں سے دیکھتی ہیں اور آئندہ بھی ایسا کرتی رہیں گی۔دلیپ کمار کی پیشہ ورانہ زندگی کے بارے میں بات کرتے ہوئے ، انہوں نے 1944 میں فلم جوار بھاٹا سے اپنے کیریئر کا آغاز کیا اور اس کے بعد انہوں نے بہت سی سپر ہٹ فلمیں دیں جن میں کوہ نور ، مغل اعظم ، دیوداس ، نیا دور ، رام اور شیام شامل ہیں۔ دلیپ کمار کو آخری بار 1998 میں فلم قلعہ میں دیکھا گیا تھا۔
Published by: Mirzaghani Baig
First published: Jun 06, 2021 01:14 PM IST