உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Doctor Day 2022:ہندوستان کی پہلی خاتون ڈاکٹر کے معالج بننے کی کہانی ہے دلچسپ، اس طرح حاصل کی ڈگری

    یہ ہیں ہندوستان کی پہلی خاتون ڈاکٹر۔

    یہ ہیں ہندوستان کی پہلی خاتون ڈاکٹر۔

    Doctor Day 2022: گوپال راؤ نے امریکہ میں میڈیسن کی تعلیم حاصل کرنے کے بارے میں تمام معلومات اکٹھی کیں اور آنندی کو میڈیسن کی تعلیم حاصل کرنے کے لیے پنسلوانیا کے ویمنس میڈیکل کالج بھیج دیا۔ کالج میں داخلہ لینے کے لیے آنندی نے اپنے تمام زیورات بیچ ڈالے۔

    • Share this:
      Doctor Day 2022: یکم جولائی کو ڈاکٹروں کا قومی دن منایا جاتا ہے۔ اس دن ملک بھر کے تمام ڈاکٹروں کا احترام کیا جاتا ہے۔ ڈاکٹروں کو ان کے کام، خدمت کے جذبے اور جان بچانے کی کوششوں پر خراج تحسین پیش کیا جاتا ہے۔ ہندوستان میں سینکڑوں ڈاکٹر ہیں، جو ہر طرح کی بیماریوں اور مسائل میں مبتلا مریضوں کے علاج کے لیے کام کرتے ہیں۔ کورونا کے دور میں ڈاکٹروں کی خدمت کا جذبہ سب نے محسوس کیا۔ مریضوں کی دیکھ بھال میں پی پی ٹی کٹس پہن کر گھنٹوں کام کرنے والے ڈاکٹروں کے لیے ہر دل میں احترام بڑھ گیا۔ اگرچہ ڈاکٹر صرف ڈاکٹر ہوتے ہیں لیکن ان میں مردوں اور عورتوں کی طرح کچھ بھی محسوس نہیں کیا جانا چاہیے۔ لیکن طب کے شعبے میں خواتین کا آنا اپنے آپ میں ایک بڑی کامیابی ہے۔ آج ہمارے ملک میں بہت سی خواتین ڈاکٹرز موجود ہیں، جو مختلف بیماریوں میں ماہر کے طور پر کام کر رہی ہیں۔ لیکن کیا آپ جانتے ہیں کہ ہندوستان کی پہلی خاتون ڈاکٹر کون ہیں؟ اس خاتون نے ڈاکٹر بننے کی کیوں ٹھانی؟ کیسے ایک خاتون نے ڈاکٹر بننے کا سفر طئے کیا؟ ڈاکٹروں کے قومی دن کے موقع پر، ہندوستان کی پہلی خاتون ڈاکٹر کے بارے میں آئیے جانتے ہیں۔

      ملک کی پہلی خاتون ڈاکٹر کون ہیں؟
      ہندوستان کی پہلی خاتون ڈاکٹر آنندی بائی جوشی ہیں۔ آنندی بین جوشی 31 مارچ 1865 کو پونے کے ایک زمیندار گھرانے میں پیدا ہوئیں۔ ان کا بچپن کا نام یمنا تھا لیکن شادی کے بعد انہیں سسرال میں آنندی کے نام سے پکارا جانے لگا۔ ان دنوں شادی کے بعد لڑکیوں کے کنیت کے ساتھ ساتھ صرف پورا نام ہی تبدیل ہو جاتا تھا۔

      16 سال بڑے شخص سے ہوئی شادی
      آنندی کی شادی محض 9 سال کی عمر میں ہوئی تھی۔ ان کے شوہر گوپال راؤ آنندی سے 16 سال بڑے تھے۔ 25 سالہ گوپال راؤ نے اپنی پہلی بیوی کی موت کے بعد آنندی سے شادی کی۔ دونوں کے درمیان عمر کا کافی فرق تھا لیکن گوپال راؤ اور ان کا خاندان آنندی سے بہت پیار کرتا تھا۔ صرف 14 سال کی عمر میں آنندی نے ایک بچے کو جنم دیا۔ لیکن ان کا نوزائیدہ بچہ کسی سنگین بیماری میں مبتلا تھا جس کی وجہ سے وہ 10 دن کے اندر ہی فوت ہوگیا۔

      14 سال کی عمر میں بچے کو دیا جنم
      آنندی کے لئے بچے کی موت ایک صدمہ تھی۔ ان کا خیال تھا کہ اگر ان کا بچہ بیمار نہ ہوتا تو وہ دنیا سے کبھی نہیں جاتا۔ یہ سوچ کر آنندی نے فیصلہ کیا کہ اب وہ کسی بچے کو بیماری سے مرنے نہیں دیں گی۔ اس کے بعد انہوں نے ڈاکٹر بننے کی خواہش اپنے شوہر کے سامنے رکھ دی۔ شوہر نے آنندی کا ساتھ دیا اور انہیں ایک مشنری اسکول میں پڑھنے کے لیے بھیج دیا۔ گوپال راؤ اور آنندی کے اس اقدام کی سماج اور خاندان والوں نے سخت تنقید کی تھی۔ لیکن آنندی نے اپنی پڑھائی جاری رکھی۔

      گوپال راؤ نے امریکہ میں میڈیسن کی تعلیم حاصل کرنے کے بارے میں تمام معلومات اکٹھی کیں اور آنندی کو میڈیسن کی تعلیم حاصل کرنے کے لیے پنسلوانیا کے ویمنس میڈیکل کالج بھیج دیا۔ کالج میں داخلہ لینے کے لیے آنندی نے اپنے تمام زیورات بیچ ڈالے۔ کچھ لوگوں نے ان کی مدد کرتے ہوئے پیسے بھی دئیے۔

      یہ بھی پڑھیں:
      Rainy Season: موسم بارش کے دوران ٹو وہیلر چلاتے ہوئے ان پانچ چیزوں کا رکھیں خاص خیال؟

      یہ بھی پڑھیں:
      GST Rates Revised: جی ایس ٹی کی شرحوں میں نظر ثانی! کیا ہوا سستا اور کیا مہنگا؟ جانیےتفصیل

      19 سال کی عمر میں بنی ڈاکٹر
      محض 19 سال کی عمر میں آنندی بین نے ایم ڈی کی ڈگری مکمل کی۔ آنندی بین جوشی ایم ڈی کی ڈگری حاصل کرنے والی پہلی ہندوستانی خاتون بن گئیں۔ اپنی تعلیم مکمل کرنے کے بعد، وہ گھر واپس آئی اور کولہاپور کی شاہی ریاست میں البرٹ ایڈورڈ ہسپتال کے خواتین کے وارڈ میں انچارج ڈاکٹر کے طور پر کام کرنے لگی۔ حالانکہ پریکٹس کے دوران، وہ تپ دق کا شکار ہوگئیں اور 22 سال کی عمر میں، 26 فروری 1887 کو آنندی بائی کا انتقال ہوگیا۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: