ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

National Doctors' Day 2021 : یہ ہمارے ڈاکٹروں کا شکریہ ادا کرنے کا وقت ہے

یکم جولائی کو، ہندوستان زندگیاں بچانے اور کمیونٹیز کو صحت یاب رکھنے والے مرد و خواتین کے اعزاز میں قومی ڈاکٹرز ڈے کا اہتمام کرتا ہے۔ یہ دن معروف فزیشین اور مجاہدِ آزادی ڈاکٹر بدھان چندر رائے کی یوم سالگرہ پر منایا جاتا ہے۔ ا

  • Share this:
National Doctors' Day 2021 : یہ ہمارے ڈاکٹروں کا شکریہ ادا کرنے کا وقت ہے
National Doctors' Day 2021 : یہ ہمارے ڈاکٹروں کا شکریہ ادا کرنے کا وقت ہے

یکم جولائی کو، ہندوستان زندگیاں بچانے اور کمیونٹیز کو صحت یاب رکھنے والے مرد و خواتین کے اعزاز میں قومی ڈاکٹرز ڈے کا اہتمام کرتا ہے۔ یہ دن معروف فزیشین اور مجاہدِ آزادی ڈاکٹر بدھان چندر رائے کی یوم سالگرہ پر منایا جاتا ہے۔ اس سال اس دن کی اہمیت میں مزید اضافہ ہو گیا ہے کیونکہ COVID-19 وبا کے پیدا ہونے کی وجہ سے ہمارے طبی وسائل پر انتہائی زبردست بوجھ پڑا ہے۔ ہندوستانی طبی برادری، بشمول اس کے ڈاکٹرز نے اس موقع پر ہمت اور استحکام کا مظاہرہ کیا ہے۔ میڈیکل کاؤنسل آف انڈیا کے مطابق، اس وبا میں 1492 ڈاکٹر اپنی جان کی بازی ہار گئے، اور ایسا کرتے ہوئے وہ ذاتی قربانی کی ایسی نظیر بن کر ابھرے جن کی ہمیں اس بحران سے ابھرنے میں اشد ضرورت ہے۔


وہ چند لوگ جنہوں نے بہت سے لوگوں کی جانیں بچائیں


وبا شروع ہونے سے پہلے ہی، ہندوستانی ڈاکٹر انتہائی محدود وسائل کے حامل ماحول میں کام کر رہے تھے۔ ہر چند کہ کچھ سال پہلے ہندوستان میں آبادی کے تناسب میں ڈاکٹروں کی تعداد یعنی 1:1000 سے متعلق عالمی ادارۂ صحت (WHO) کی تجویز کے قریب پہنچ گئی تھی، لیکن وزارت صحت کی جانب سے حاصل ہونے والے حالیہ ڈیٹا سے پتا چلتا ہے کہ یہ تناسب دوبارہ اپنی حد سے کم ہو گیا ہے۔ عوامی ہیلتھ سیکٹر میں حالات اور بھی نازک ہیں، جہاں فی 1000 لوگوں پر ڈاکٹروں کا تناسب محض 0.08 ہے۔ اس کا مطلب یہ ہے کہ ہندوستانی آبادی کا ایک بڑا حصہ صحت سے متعلق اپنی ضروریات سے مستقل محروم رہتا ہے۔


ڈاکٹروں کے اپنے کردار ادا کرنے کی وجہ سے ان کے احترام میں اضافہ ہوا ہے اور ان چیلنجز سے نپٹنے اور ضرورت مندوں کی خدمت کرنے کی ان کی صلاحیت کو خاص طور پر تحسین کی نگاہ سے دیکھا جاتا ہے۔ COVID-19 کے بحران کے دوران، ملک نے ڈاکٹروں کی بے لوث خدمات کی کہانیاں، انتھک خدمت کے قصے سنے۔ انہیں انفیکشن کا خطرہ لاحق رہا، لیکن انہوں نے اپنے فرائض انجام دیتے ہوئے اپنی جانیں گنوا دیں۔ انہوں نے لوگوں کو COVID-19 کے خطرات کے تعلق آگاہ کرنے اور اپنی اور اپنے عزیزوں کی زندگیاں بچانے کے طریقے کے ضمن میں لوگوں کی رہنمائی کی۔ کبھی کبھار، ڈاکٹرز بھی جذبات کی رَو میں بہتے ہوئے دکھائی دئے، جیسے گزشتہ برس ممبئی کے ڈاکٹر تروپتی گیلاڈی نے نم آنکھوں سے ہر کسی سے اپیل کی تھی کہ وہ احتیاط برتیں۔

کیا ہم ان کے ممنون ہیں؟

ہر چند کہ ہم قومی ڈاکٹرز ڈے کے موقعے پر ڈاکٹروں کے زبردست تعاون کا اقرار کرتے ہیں، لیکن اس کے ساتھ ایسی پیش قدمیاں بھی کی جانی چاہئیں جن سے ان کی زندگیوں اور کام کرنے کا ماحول بہتر ہو۔ لازمی آلات کی کمی پر غالب آنے کی ان کی مسلسل جد و جہد کیا کم تھی، جو بعد میں ان کے ساتھ تشدد کے کئی واقعات بھی پیش آئے۔ ان میں آسام میں پیش آنے والا ایک ایسا حالیہ واقعہ بھی شامل ہے جس میں ایک مریض کے مرنے پر اس کے اہل خانہ نے COVID-19 کی سہولت پر موجود آن ڈیوٹی ڈاکٹر پر تشدد کیا۔ ایسے واقعات صرف ڈاکٹروں کی حوصلہ شکنی کرتے ہیں اور نوجوانوں کو طبی پیشہ اختیار کرنے میں مانع ثابت ہوتے ہیں۔

اس صورتحال سے نپٹنے کی پہلی ترکیب تو یہ ہے کہ ڈاکٹروں اور ہیلتھ ورکرز کے تئیں اظہار تشکر کے کلچر کو فروغ دیا جائے اور اس کا آغاز قومی ڈاکٹرز ڈے سے کیا جائے۔ اس سے نہ صرف یہ کہ ڈاکٹروں کے خلاف ہونے والے تشدد کے واقعات کا ازالہ ہوگا، بلکہ طبی مشورے کی تعمیل اور مطابقت پذیری بھی بہتر ہوگی۔ ڈاکٹروں کے ساتھ بہتر برتاؤ اور انہیں درپیش دشواریوں سے آگاہی، یقینی طور پر، یقیناً ایک روشن خیال پالیسی سازی کی راہ ہموار کرے گی اور اس طرح ڈاکٹروں اور ڈھیر سارے ہندوستانیوں کی صحت بہتر ہوگی۔



ہمارے ہندوستان کے سب سے بڑے COVID-19 ویکسین بیداری ڈرائیو ’سنجیورنی ۔ ایک ٹیکہ زندگی کا‘ کے حصے کے طور پر، عوام کی صحت اور فلاح کیلئے ہم بھی اپنا چھوٹا سا حصہ ڈال رہے ہیں۔ یہ ایک Federal Bank Ltd CSR پیش قدمی ہے۔ صحت اور امیونٹی کی اس جد و جہد میں شامل ہونے کیلئے، Sanjeevani ملاحظہ کریں۔
Published by: Imtiyaz Saqibe
First published: Jul 01, 2021 09:29 PM IST