ہوم » نیوز » وطن نامہ

آرٹیکل 370 کی منسوخی ہندوستان کا داخلی معاملہ: پاکستان اپنے فیصلوں پرکرے نظرثانی: وزارت خارجہ

حکومت نے پاکستان کی طرف سے دو طرفہ تعلقات کے بارے میں یکطرفہ قدم اٹھائے جانے سے متعلق رپورٹوں پرجمعرات کو کہا کہ یہ افسوسناک پہلو ہے اورپڑوسی ملک کو اس پر نظر ثانی کرنی چاہئے۔ وزارت خارجہ نے یہاں ایک بیان میں کہا کہ ایسی رپورٹ آئیں ہیں کہ پاکستان نے ہندوستان کے ساتھ دو طرفہ تعلقات کے بارے میں کچھ یکطرفہ اقدامات کرنے کا فیصلہ کیاہے۔ ان میں سفارتی تعلقات میں کمی کی بات بھی شامل ہے۔

  • Share this:
آرٹیکل 370 کی منسوخی ہندوستان کا داخلی معاملہ: پاکستان اپنے فیصلوں پرکرے نظرثانی: وزارت خارجہ
آرٹیکل 370 کی منسوخی ہندوستان کا داخلی معاملہ: پاکستان اپنے فیصلوں پرکریں نظرثانی: وزارت خارجہ-(تصویر:یو این آئی)۔

حکومت نے پاکستان کی طرف سے دو طرفہ تعلقات کے بارے میں یکطرفہ قدم اٹھائے جانے سے متعلق رپورٹوں پرجمعرات کو کہا کہ یہ افسوسناک پہلو ہے اورپڑوسی ملک کو اس پر نظر ثانی کرنی چاہئے۔ وزارت خارجہ نے یہاں ایک بیان میں کہا کہ ایسی رپورٹ آئیں ہیں کہ پاکستان نے ہندوستان کے ساتھ دو طرفہ تعلقات کے بارے میں کچھ یکطرفہ اقدامات کرنے کا فیصلہ کیاہے۔ ان میں سفارتی تعلقات میں کمی کی بات بھی شامل ہے۔


وزارت نے کہا ہے کہ’’پاکستان کی جانب سے بدھ کو کیا گیااعلان افسوسناک ہے اور حکومت ہند اس پران سے جائزہ لینے کی درخواست کرتی ہے تاکہ سفارتی بات چیت کے لئے یہ چینل برقراررہے‘‘۔ بیان میں کہا گیا ہے کہ جموں کشمیر کے خصوصی درجے سے متعلق آرٹیکل 370 کے بارے میں حال میں اٹھایا گیا قدم مکمل طور ہندوستان کا داخلی معاملہ ہے۔




واضح رہے کہ پاکستانی وزارت خارجہ کی جانب سے جاری بیان کے مطابق پاکستان، ہندوستان میں اپنا ہائی کمشنر نہیں بھیجے گا۔ اس سے پہلے وزیراعظم عمران خان نے ایک اعلی سطحیٰ میٹنگ کی صدارت کی اور دوطرفہ ڈپلومیٹک تعلقات میں تخفیف کرنے کا فیصلہ کیا۔ جموں وکشمیر سے متعلق ہندوستانی حکومت کے ذریعہ کئے گئے اقدامات سے مشتعل پاکستان نے دوطرفہ ڈپلومیٹک تعلقات کم کرنے اور تجارت روکنے کا فیصلہ کیا ہے۔

پاکستانی حکومت کی پریس ریلیز کے مطابق وزیراعظم عمران خان نے اپنے دفتر میں آج قومی سلامتی کمیٹی کی میٹنگ کی جس میں ہندوستان کے ذریعہ کئے گئے اقدامات پر غوروفکر کیا گیا۔ میٹنگ میں ہندوستان کے ساتھ ڈپلومیٹک تعلقات کم کرنے، دوطرفہ تجارت روکنے، دوطرفہ نظم کے جائزہ اوراس معاملے کو اقوام متحدہ سلامتی کونسل میں لے جانے کا فیصلہ کیا گیا ۔

اس کے علاوہ بیان بھی یہ بھی بتایاگیاہے کہ پاکستان کے یوم آزادی 14 اگست کو اس سال ’کشمیریوں اور ان کے خودارادیت کے حق‘ کے ساتھ یوم یکجہتی کے طور پراور ہندوستان کے یوم آزادی 15 اگست کو’’یوم سیاہ‘ کے طور پر منانے کا فیصلہ کیا ہے۔
First published: Aug 08, 2019 02:32 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading