ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

پڈوچیری میں سیاسی گھمسان کے دوران لیفٹیننٹ گورنر عہدے سے ہٹائی گئیں ڈاکٹر کرن بیدی

Kiran Bedi latest news today all updates: کرن بیدی کو عہدے سے ہٹانے کے مطالبہ کو لے کر گزشتہ کافی وقت سے پڈوچیری میں برسراقتدار کانگریس کی جانب سے احتجاج کیا جارہا تھا۔

  • Share this:
پڈوچیری میں سیاسی گھمسان کے دوران لیفٹیننٹ گورنر عہدے سے ہٹائی گئیں ڈاکٹر کرن بیدی
پڈوچیری میں سیاسی گھمسان کے دوران لیفٹیننٹ گورنر عہدے سے ہٹائی گئیں ڈاکٹر کرن بیدی

پڈوچیری: ڈاکٹر کرن بیدی (Dr Kiran Bedi) کو پڈوچیری کی لیفٹیننٹ گورنر (Puducherry LG) کے عہدے سے ہٹا دیا گیا ہے۔ کرن بیدی کی جگہ تلنگانہ کی گورنر ڈاکٹر تملسئی سوندرراجن (Dr. Tamilisai Soundararajan) کو پڈوچیری کی اضافی ذمہ داری سونپی گئی ہے۔ واضح رہے کہ کرن بیدی کو عہدے سے ہٹانے کے مطالبہ کو لے کر گزشتہ کافی وقت سے پڈوچیری میں برسراقتدار کانگریس پارٹی احتجاج کر رہی تھی۔ اس سے متعلق کانگریس کی قیادت والے سیکولر ڈیموکریٹک الائنس کی طرف سے 16 فروری کو بند کرنے کی کال دی گئی تھی۔ حالانکہ اسے پیر کو ہی واپس لے لیا گیا تھا۔


راشٹرپتی بھون کی طرف سے اس سے متعلق منگل کو بیان جاری کیا گیا۔ بیان میں کہا گیا کہ نئی تقرری ہونے تک تلنگانہ کی گورنر تملسئی سوندر راجن کو پڈوچیری کی لیفٹیننٹ گورنر کی اضافی ذمہ داری سونپی جا رہی ہے۔ کرن بیدی کو اسمبلی انتخابات سے کچھ وقت پہلے ہی لیفٹیننٹ گورنر کے عہدے سے ہٹایا گیا ہے۔ ایسے میں اسے بی جے پی کے ایک وسیع سیاسی قدم کے طور پر دیکھا جا رہا ہے۔


وزیر اعلیٰ نے صدر جمہوریہ کو سونپا تھا میمورنڈم


پڈوچیری کے وزیر اعلیٰ وی نارائن سوامی نے 10 فروری کو صدر جمہوریہ رام ناتھ کووند کو میمورنڈم سونپ کر ان سے گزارش کی تھی کہ سابق آئی پی ایس افسر کو واپس بلا لیا جائے۔ انہوں نے دعویٰ کیا کہ وہ ’تغلق دربار’ چلا رہی ہیں۔

جاری ہے سیاسی گھمسان

واضح رہے کہ پڈوچیری میں پہلے سے ہی سیاسی رسہ کشی جاری ہے۔ مرکز کے زیر انتظام ریاست میں ایک اور رکن اسمبلی کے ذریعہ رکنیت سے استعفیٰ کے بعد ریاست کی کانگریس حکومت نے منگل کو اسمبلی انتخابات مین اپنی اکثریت گنوا دی ہے۔ موجودہ ایوان میں کانگریس قیادت والے اتحاد کے اب 14 اراکین اسمبلی رہ گئے ہیں۔ اس موقع کا فائدہ اٹھاتے ہوئے اپوزیشن نے وزیر اعلیٰ وی نارائن سوامی سے استعفیٰ کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ حکومت اقلیت میں ہے۔ پڈوچیری کی 33 رکنی اسمبلی انتخابات میں اب اپوزیشن کے اراکین کی تعداد بھی 14 ہے۔

حالانکہ، نارائن سوامی نے اپوزیشن کے مطالبات کو خارج کرتے ہوئے دعویٰ کیا کہ ان کی حکومت کو ایوان میں اکثریت حاصل ہے۔ واضح رہے کہ پڈوچیری اسمبلی انتخابات کے لئے اگلے کچھ مہینوں میں الیکشن ہونے والے ہیں۔
Published by: Nisar Ahmad
First published: Feb 16, 2021 10:40 PM IST