ایس پی لیڈر اعظم خان کی والدہ کے خلاف مقدمہ درج کئے جانے پر ڈاکٹر تسلیم رحمانی نے کیا شدید رد عمل کا اظہار

مسلم پولٹیکل کاونسل آف انڈیا کے صدر ڈاکٹر تسلیم احمد رحمانی نے کہا کہ شاید ملک میں پہلا واقعہ ہوگا کہ کسی کے انتقال کے چھ سال بعد اس پر مقدمے درج کیا جائے۔

Sep 21, 2019 11:09 PM IST | Updated on: Sep 21, 2019 11:09 PM IST
ایس پی لیڈر اعظم خان کی والدہ کے خلاف مقدمہ درج کئے جانے پر ڈاکٹر تسلیم رحمانی نے کیا شدید رد عمل کا اظہار

اعظم خان کی والدہ کے خلاف مقدمہ درج کئے جانے پر ڈاکٹر تسلیم رحمانی کا شدید رد عمل کا اظہار

اترپردیش میں رام پور کے نائب تحصیلدار کے جی مشرا نے گذشتہ روز رام پور کے رکن پارلیمنٹ اعظم خاں کی مرحوم والدہ کے نام سے بھی مقدمہ درج کر لیا ہے ۔ مرحومہ پر الزام ہے کہ انہوں نے گیارہ سال قبل رام پور پھانسی گھرکی زمین خرد برد کی تھی۔ اعظم خاں کی والدہ مرحومہ امیر جہاں کا انتقال جولائی 2012 میں 92 سال کی عمر میں ہوا تھا ۔

بی جے جی پی لیڈر آکاش سکسینہ کی درج شکایت پر نائب تحصیلدار رام پور کے ذریعہ مرحومہ اور اعظم خان سمیت 37 لوگوں پر درج مقدمے پر ردعمل ظاہر کرتے ہوئے مسلم پولٹیکل کاونسل آف انڈیا کے صدر ڈاکٹر تسلیم احمد رحمانی نے کہا کہ شاید ملک میں پہلا واقعہ ہوگا کہ کسی کے انتقال کے چھ سال بعد اس پر مقدمے درج کیا جائے۔

Loading...

ڈاکٹررحمانی نے کہا کہ ایک سیاسی لیڈر کے خلاف بکری چوری اور بھینس چوری جیسے الزامات لگا کر ڈھائی ماہ کے اندر 80 سے زائد مقدمات کیا جانا ، خود ان کی بے گناہی  کو ثابت کرتا  ہے ۔ ڈاکٹڑ رحمانی نے مطالبہ کیا کہ تحصیلدار اس مقدمہ کو فی الفور واپس لے ۔

Loading...