உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    کہاں سے آیا 23 کلو سونا، اسمگلنگ کی گئی ہے؟ پیوش جین پر DRI نے کی سوالوں کی بوچھار، 2 گھنٹے کی پوچھ تاچھ میں کیا کیا ہوا؟

     پیوش جین پر DRI نے کی سوالوں کی بوچھار

    پیوش جین پر DRI نے کی سوالوں کی بوچھار

    پیوش جین سے پوچھ تاچھ کے لئے ڈی آر آئی نے اے سی سی ایم ایم 2 عدالت سے منظوری مانگی تھی۔ عدالت سے اجازت ملنے کے بعد ڈی آر آئی کی ٹیم نے شام میں تقریباً 2 گھنٹے تک پوچھ تاچھ کی۔ حالانکہ، عدالت نے 4 گھنٹوں تک پوچھ تاچھ کی اجازت دی تھی۔ ذرائع کی مانیں تو جیل کے بیرک نمبر 15 میں پوچھ تاچھ کے دوران پیوش جین مبہم جواب دیتا رہا۔

    • Share this:
      کانپور: کانپور کے کیش اسکینڈل میں جیل میں بند عطر کے تاجر پیوش جین (Piyush Jain) کی مشکلیں بڑھتی ہی جارہی ہیں۔ ڈائریکٹوریٹ آف ریونیو انٹلیجنس (DRI) کی ٹیم نے عطر کاروباری پیوش جین سے جیل میں پوچھ تاچھ کی ہے۔ تقریباً 2 گھنٹوں تک چلی پوچھ تاچھ میں ڈائریکٹوریٹ آف ریونیو انٹلیجنس کی ٹیم نے پیوش جین کے گھر سے برآمد 23 کلو سونے کے بارے میں پوچھ تاچھ کی۔ ٹیم لگاتار سوال داغتی رہی اور یہ جاننے کی کوشش کرتی رہی کہ آخر یہ سونا کہاں سے آیا، کیا سونے کی اسمگلنگ کی گئی تھی یا اگر یہ صحیح طریقے سے ہیں تو پھر اس کے دستاویز کہاں ہیں؟

      دراصل، پیوش جین سے پوچھ تاچھ کے لئے ڈی آر آئی نے اے سی سی ایم ایم 2 عدالت سے منظوری مانگی تھی۔ عدالت سے اجازت ملنے کے بعد ڈی آر آئی کی ٹیم نے شام میں تقریباً 2 گھنٹے تک پوچھ تاچھ کی۔ حالانکہ، عدالت نے 4 گھنٹوں تک پوچھ تاچھ کی اجازت دی تھی۔ ذرائع کی مانیں تو جیل کے بیرک نمبر 15 میں پوچھ تاچھ کے دوران پیوش جین مبہم جواب دیتا رہا۔ ڈی آر آئی کی ٹیم نے دو گھنٹوں تک لگاتار سوال کیے مگر بتایا جارہا ہے کہ اب تک ٹیم کو پیوش جین کی جانب سے اطمینان بخش جواب نہیں ملا ہے۔

      غورطلب ہے کہ گزشتہ دنوں ڈی جی جی آئی کے چھاپے میں سونا برآمد ہونے کے کیس میں جیل میں بند پیوش جین کے خلاف اب ڈی آر آئی یعنی ریونیو انٹلیجنس ڈائریکٹوریٹ نے کسٹم ایکٹ میں پیوش جین کے خلاف کیس درج کیا ہے۔ ڈی آر آئی گولڈ اسمگلنگ کے اینگل سے اس کی جانچ کررہی ہے۔ دراصل، کانپور کے عطر کاروباری پیوش جین کے گھر سے برآمد سونے کی اینٹوں کو لے کر ایجنسی کو شروع سے شک ہے کہ ان کی اسمگلنگ کی گئی ہے۔ ایجنسی کو شک ہے کہ پیوش جین کے گھر سے جو 23 کلو سونے کی اینٹ یا بسکٹ برآمد ہوئے ہیں، وہ دبئی سے آئے ہیں۔ اس لئے پیوش جین کی جائیداد کے تار گولڈ اسمگلنگ سے بھی جڑے ہونے کا شک پیدا ہوگیا ہے۔

      ایجنسی کو شک ہے کہ دبئی میں گولڈ پر ٹیکس نہیں ہے، اس لئے وہاں سے گولڈ کی اسمگلنگ سب سے زیادہ ہوتی ہے اور ہوسکتا ہے کہ پیوش جین نے یہی راستہ اپنایا ہو۔ اب ڈی آرآئی کی ٹیم پتہ لگائے گی کہ یہ سونا کہاں سے آیا ہے اور کیا یہ سونا اسمگلنگ کرکے لایا گیا؟ کیا اس کے پیچھے کوئی گولڈ اسمگلنگ سنڈیکٹ ہے، کیا اس سونے پر کسٹم ڈیوٹی ادا کی گئی ہے؟ ڈی آر آئی اس بات کا بھی پتہ لگائے گی کہ آخر پیوش جین نے یہ سونا کس سے خریدا ہے؟
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: