உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    آرٹیکل 370ختم :عمران خان نے ترکی اورملائیشیا کے سربراہان سے کیا رابطہ، کشمیر کی صورتحال پربات چیت

    ترکی کے صدر رجب طیب اردوان اورپاکستانی عمران خان کی فائل فوٹو۔(تصویر:عمران خان ٹویٹر)۔

    ترکی کے صدر رجب طیب اردوان اورپاکستانی عمران خان کی فائل فوٹو۔(تصویر:عمران خان ٹویٹر)۔

    مرکز کی جانب سے جموں و کشمیرآرٹیکل 370 ہٹانے کے بعد پاکستان کے وزیراعظم عمران خان نےمسلم دنیا کے 2 اہم سربراہان رجب طیب اردوان اور مہاتیر محمد سے رابطہ کیا اور موجودہ صورت حال سے انہیں آگاہ کیاہے

    • Share this:
      رکز کی جانب سے جموں و کشمیرآرٹیکل 370 ہٹانے کے بعد پاکستان کے وزیراعظم عمران خان نےمسلم دنیا کے 2 اہم سربراہان رجب طیب اردوان اور مہاتیر محمد سے رابطہ کیا اور موجودہ صورت حال سے انہیں آگاہ کیاہے۔پاکستانی میڈیاکے مطابق وزیراعظم عمران خان اور ترک صدر کے درمیان رابطہ، دونوں رہنماؤں کے درمیان  کشمیر کی موجودہ صورتحال پرتبادلہ خیال کیا گیا۔ طیب اردگان ہندوستان کے اقدامات پر شدید تشویش کا اظہار کردیا۔ تفصیلات کے مطابق وزیراعظم عمران خان نے ترک صدر طیب اردگان سے ہنگامی طور پر رابطہ کیا ہے۔ اس دوران وزیراعظم عمران خان نے ترک صدر کو کشمیرمیں پیدا ہونے والی موجودہ صورتحال سے متعلق آگاہ کیا۔

      تفصیلات سے آگاہ ہونے کے بعد ترک صدر طیب اردگان نے ہندوستان کے اقدامات پر شدید تشویش کا اظہار کیاہے۔ ترکی نے  کشمیر کے معاملے پر پاکستان کے موقف کی بھرپور حمایت کرنے کا اعلان کیا ہے۔ جبکہ وزیراعظم نے اس موقع پر واضح کیا کہ ہندوستان نے کشمیریوں کی حیثیت تبدیل کرنے کیلئے غیرقانونی اقدام اٹھایا ہے۔

      ملائیشیا کے وزیراعظم مہاتیرمحمد سے بھی عمران خان کی فون پربات چیت

      پاکستانی میڈیا کی خبروں کے مطابق اس سے پہلے وزیراعظم نے ہندوستان کی جانب سے مقبوضہ کشمیر کی خصوصی حیثیت ختم کرنے پر اپنے ملائیشیا کے ہم منصب مہاتیرمحمد سے ٹیلی فونک رابطہ کیاتھا اور کشمیر کی حالیہ صورت حال سے آگاہ کیاتھا۔ وزیراعظم نے کہا تھا کہ  کشمیر کی حیثیت سے متعلق ہندوستان کا اعلان اقوام متحدہ کی سیکیورٹی کونسل (یو این ایس سی) کی قراردادوں کی واضح خلاف ورزی ہے۔

      عمران خان نے اس بات پر زوردیا تھا کہ ہندوستان کا یہ غیرقانونی اقدام خطے کی امن و استحکام کی صورت حال خراب کرے گا اور اسٹریٹجک صلاحیتوں کے حامل دونوں پڑوسیوں کے درمیان تعلقات کو مزید نقصان پہنچے گا۔ پاکستانی میڈیا نے دعویٰ کیاہے کہ فون پربات چیت کے دوران مہاتیر محمد نے کہا تھا کہ ملائیشیا کشمیر کی صورت حال کو قریب سے دیکھ رہا ہے اور وہ رابطے میں رہے گا۔میڈیا رپورٹ میں بتایاگیاہے کہ مہاتیر محمد نیویارک میں اقوام متحدہ کے جنرل اسمبلی اجلاس کی سائڈ لائن پروزیراعظم عمران خان سے ملاقات کے منتظر بھی ہیں۔

      پاکستان کے وزیراعظم ملائیشیاکے وزیراعظم مہاتیرمحمد کے ساتھ ۔(تصویر:عمران خان ٹویٹر)۔
      پاکستان کے وزیراعظم ملائیشیاکے وزیراعظم مہاتیرمحمد کے ساتھ ۔(تصویر:عمران خان ٹویٹر)۔
      First published: