ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

میرٹھ: بس اسٹیشنوں پر مسافروں کی بھیڑ کے سبب سماجی دوری پر نہیں ہو رہا ہے عمل

جان لیوا خطرے کو سنجیدگی سے نہیں لے رہے ہیں اور تمام ہدایت اور احتیاط کی دھجیاں اُڑائی جارہی ہیں۔ ایسا ہی نظارہ میرٹھ کے بھیسالی بس اڈے پر بھی نظر آیا، جہاں بسوں سے سفر کرنے والے مسافروں نے احتیاطی اقدامات اور سماجی دوری کا کوئی خیال نہیں رکھا وہیں روڈ ویز انتظامیہ کی بھی لاپرواہی اجاگر ہوئی۔

  • Share this:
میرٹھ: بس اسٹیشنوں پر مسافروں کی بھیڑ کے سبب سماجی دوری پر نہیں ہو رہا ہے عمل
میرٹھ: بس اسٹیشنوں پر مسافروں کی بھیڑ کے سبب سماجی دوری پر نہیں ہو رہا ہے عمل

میرٹھ: ایک طرف دہلی اور این سی آر علاقے میں کورونا انفیکشن کا خطرہ بڑھتا جا رہا ہے، لیکن ابھی بھی بہت سے لوگ اس جان لیوا خطرے کو سنجیدگی سے نہیں لے رہے ہیں اور تمام ہدایت اور احتیاط کی دھجیاں اُڑائی جارہی ہیں۔ ایسا ہی نظارہ میرٹھ کے بھیسالی بس اڈے پر بھی نظر آیا جہاں بسوں سے سفر کرنے والے مسافروں نے احتیاطی اقدامات اور سماجی دوری کا کوئی خیال نہیں رکھا وہیں روڈ ویز انتظامیہ کی بھی لاپرواہی اجاگر ہوئی۔

میرٹھ کے بھینسالی بس اڈّے پر مسافروں کی بھیڑ اور اس پر برتی جا رہی لاپرواہی کورونا انفیکشن کے خطرے کو دعوت دیتی نظر آ رہی ہے۔ بسیں پوری طرح بھر کر چلائی جا رہی ہیں، سماجی دوری بنائے رکھنے کی ہدایت دینے والی انتظامیہ کو ان بس اسٹیشنوں پر سماجی دوری کی دھجیاں اُڑتی نظر نہیں آ رہی ہیں۔ اب جبکہ دہلی اور این سی آر علاقے میں کورونا انفیکشن کے پھیلنے کا سب سے زیادہ خطرہ برقرار ہے، ایسے میں ضلع اور پولیس انتظامیہ کے ذریعہ اس طرح کی لاپرواہی برتنے کمیونٹی ٹرانسفر کی بڑے خطرے کا سبب بن سکتی ہے۔


میرٹھ کے بھینسالی بس اڈّے پر مسافروں کی بھیڑ اور اس پر برتی جا رہی لاپرواہی کورونا انفیکشن کے خطرے کو دعوت دیتی نظر آ رہی ہے۔ بسیں پوری طرح بھر کر چلائی جا رہی ہیں، سماجی دوری بنائے رکھنے کی ہدایت دینے والی انتظامیہ کو ان بس اسٹیشنوں پر سماجی دوری کی دھجیاں اُڑتی نظر نہیں آ رہی ہیں۔
میرٹھ کے بھینسالی بس اڈّے پر مسافروں کی بھیڑ اور اس پر برتی جا رہی لاپرواہی کورونا انفیکشن کے خطرے کو دعوت دیتی نظر آ رہی ہے۔ بسیں پوری طرح بھر کر چلائی جا رہی ہیں، سماجی دوری بنائے رکھنے کی ہدایت دینے والی انتظامیہ کو ان بس اسٹیشنوں پر سماجی دوری کی دھجیاں اُڑتی نظر نہیں آ رہی ہیں۔


بس اسٹیشنوں پر زیادہ تر مسافر بغیر ماسک کے اس طرح گھومتے نظر آ رہے ہیں، جیسے کورونا ختم ہوگیا ہو اب کسی طرح کا کوئی خطرہ نہ ہو ، بہت سے افراد تو ماسک کو محض رسم ادائیگی یہ پھر جرمانہ لگائے جانے ڈر سے استعمال کر رہے ہیں۔  روڈ ویز انتظامیہ بھی سینیٹائزیشن اور ماسک کے استعمال کو یقینی بنانے کو لے کر سنجیدہ نظر نہیں آ رہی ہے۔ احتیاطی اقدامات کو سختی سے لاگو کرانے کے بجائے محض خانہ پُری کی جا رہی ہے۔ وہیں ذمہ دار افسران اس لاپرواہی پر کچھ الگ ہی صفائی پیش کرتے نظر آتے ہیں۔ افسران کے مطابق سفر سے پہلے سبھی گاڑیوں کو سینیٹائزکیا جا رہا ہے اور احتیاطی اقدامات کو سختی سے لاگو کیا جا رہا ہے۔
Published by: Nisar Ahmad
First published: Nov 25, 2020 12:00 AM IST