ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

کیرالہ اور مہاراشٹر میں کورونا کے حالات اب بھی خراب ، کیا یہ تیسری لہر کی آہٹ ہے؟

Coronavirus Cases in India: دو مہینوں تک ملک بھر میں قہر برپا کرنے والی دوسری لہر کے بعد سرکار نے بھی کووڈ ضوابط پر عمل نہ کرنے کو لے کر وارننگ جاری کی تھی اور سیاحتی مقامات اور دیگر جگہوں پر بڑھ رہی بھیڑ کو حیران کرنے والا بتایا تھا ۔

  • Share this:
کیرالہ اور مہاراشٹر میں کورونا کے حالات اب بھی خراب ، کیا یہ تیسری لہر کی آہٹ ہے؟
کیرالہ اور مہاراشٹر میں کورونا کے حالات اب بھی خراب ، کیا یہ تیسری لہر کی آہٹ ہے؟

نئی دہلی : ہندوستان میں کورونا وائرس کے معاملات میں کمی درج کی جارہی ہے ۔ تقریبا دو مہینے بعد کئی ریاستوں میں حالات بہتر ہورہے ہیں ۔ حالانکہ ابھی بھی کئی ایسے اضلاع ہیں ، جہاں پر امید کے مطابق معاملات کم نہیں ہورہے ہیں ۔ کئی اضلاع میں جہاں پر معاملات زیادہ ہیں وہاں پر اس میں تیسری سے ہونے والا اچھال تشویش کا سبب بنا ہوا ہے ۔ وزیر اعظم نریندر مودی نے جمعرات کو بازاروں اور دیگر مقامات پر بڑھ رہی بھیڑ اور لوگوں کے کووڈ پروٹوکول پر عمل نہ کرنے پر تشویش ظاہر کی تھی ۔


دو مہینوں تک ملک بھر میں قہر برپا کرنے والی دوسری لہر کے بعد سرکار نے بھی کووڈ ضوابط پر عمل نہ کرنے کو لے کر وارننگ جاری کی تھی اور سیاحتی مقامات اور دیگر جگہوں پر بڑھ رہی بھیڑ کو حیران کرنے والا بتایا تھا ۔ وزیر اعظم مودی نے کیرالہ اور مہاراشٹر کے معاملات کو لے کر تشویش ظاہر کی تھی ۔ حالانکہ یہاں روزانہ آنے والے معاملات دوسری لہر کی پیک پر آئے معاملات سے کہیں کم ہیں ، لیکن اس کے باوجود ان ریاستوں میں انفیکشن کے معاملات ابھی بھی زیادہ ہیں ۔ دونوں ہی ریاستوں میں گزشتہ ہفتہ ملک میں آئے کورونا وائرس کے معاملات میں سے 50 فیصدی انہیں دونوں ریاستوں سے آئے تھے ۔


کیرالہ میں ملاپورم ، کوٹیم ، کاسرگوڈ ، کوزی کوڈ اور تھسور میں اعداد و شمار باعث تشویش ہیں ۔ کیرالہ کے 14 اضلاع میں سے تقریبا آدھے اضلاع میں گزشتہ ماہ سے معاملات بڑھ رہے ہیں ۔ ملاپورم ، کوٹیم ، کاسر گوڈ میں کورونا وائرس کے معاملات مستقل طور پر بڑھ رہے ہیں جبکہ کوٹیم اور تھسور میں معاملات نہ بڑھ رہے ہیں اور ہی کم ہورہے ہیں ۔


وہیں مہاراشٹر میں گزشتہ دو ہفتہ میں کورونا گراف نے پٹھار کی شکل لے لی ہے ۔ جہاں روزانہ آنے والے معاملات 8000 سے 10 ہزار کے درمیان بنے ہوئے ہیں ۔ ممبئی ، پونے اور تھانے میں کورونا کی پیک آنے کے بعد معاملات میں گراوٹ دیکھی گئی ۔ حالانکہ یہ اب بھی زیادہ ہے ، جس سے پتہ چلتا ہے کہ ابھی بھی وائرس کئی مقامات پر متحرک ہے ۔ حالانکہ ماہرین اس کی صحیح وجہ نہیں بتا پائے ہیں ۔
Published by: Imtiyaz Saqibe
First published: Jul 10, 2021 12:00 AM IST