ہوم » نیوز » مشرقی ہندوستان

شرمناک: ٹیچر نے کیمرے میں قید کیں طالبہ کی قابل اعتراض تصویریں، پھر ایک سال تک طالبہ کے ساتھ کرتا رہا یہ گھنونا کام

بہار (Bihar) کے سہرسا (Saharsa) میں ایک ٹیچر ۔طلبا کے رشتے کو شرمسار کردینے والا معاملہ سامنے آیا ہے۔ اسکول کے ٹیچر پر دسویں کلاس میں پڑھنے والی طلبا کو بلیک میل (Rape And Blackmail) کرکے ایک سال تک اس کا جنسی استحصال کرنے کا الزام لگا ہے۔ اتنا ہی نہیں ملزم نے متاثرہ کو اپنے گھر میں یرغمال بناکر رکھا اور اس پر شادی کا دباؤ بنایا۔

  • Share this:
شرمناک: ٹیچر نے کیمرے میں قید کیں طالبہ کی قابل اعتراض تصویریں، پھر ایک سال تک طالبہ کے ساتھ کرتا رہا یہ گھنونا کام
اسکول کے ٹیچر نے دسویں کلاس میں پڑھنے والی طلبا کا کیا ریپ

بہار (Bihar) کے سہرسا (Saharsa) میں ایک ٹیچر ۔طلبا کے رشتے کو شرمسار کردینے والا معاملہ سامنے آیا ہے۔ اسکول کے ٹیچر پر دسویں کلاس میں پڑھنے والی طلبا کو بلیک میل (Rape And Blackmail) کرکے ایک سال تک اس کا جنسی استحصال کرنے کا الزام لگا ہے۔ اتنا ہی نہیں ملزم نے متاثرہ کو اپنے گھر میں یرغمال بناکر رکھا اور اس پر شادی کا دباؤ بنایا۔ لڑکی کے گھر والوں کو جب اس بات کا پتہ چلا تو کافی جد و جہد کے بعد وہ اسے ٹیچر کے چنگل سے چھڑا کر گھر لانے میں کامیاب ہوئے۔


معاملہ بنما او پی کے علاقے مبارک پور کا ہے۔ موصولہ اطلاع کے مطابق متاثرہ نابالغ طالبہ اپنی ماں اور دو بہنوں کے ساتھ یہاں رہتی ہے۔ اس کے والد سعودی عرب میں ملازمت کرتے ہیں۔ متاثرہ طالبہ کے مطابق ایک دن ملزم ٹیچر نے اسے کلاس روم میں بلایا جہاں اس کے ساتھ قابل اعتراض رویہ اختیار کیا جب طالبہ نے اس کی مخالفت کی تو ملزم نے ہتھیار سے ڈرا کر طالبہ کی فحش تصاویر کیمرے میں قید کر لیں۔ بعد میں وہ اسے وائرل کرنے کی دھمکی دیتے ہوئے بلیک میل کرتا رہا۔


طالبہ کے مطابق ملزم ٹیچر نے اس سے اپنے گھر سے رقم اور زیورات لانے کی بھی مانگ کی تھی۔ پھر ایک دن اس نے اس سے کسی باغ میں آنے کو کہا ، یہاں وہ چار پانچ لڑکوں کے ساتھ موجود تھا۔ ملزم نے اسے زبردستی موٹر سائیکل پر بٹھایا اور اسے اپنے گھر لے گیا۔ اس نے اسے کمرے میں بند کردیا۔ یہاں ایک سال تک ملزم ٹیچر نے اس کا جنسی استحصال کیا۔


متاثرہ طالبہ کی آپ بیتی سن کر اس کے کنبہ کے ہوش اڑ گئے۔ وہ اپنے ساتھ اسے پولیس کے پاس لیکر پہنچیں اور مقدمہ درج کروایا۔ جب ملزم کو اس بات کا پتہ چلا تو اس نے متاثرہ افراد کے اہل خانہ پر دباؤ ڈالا کہ وہ کیس کو واپس لیں اور دھمکی دی کہ اگر انہوں نے کیس واپس نہیں لیا تو جان سے مارڈالے گا۔ متاثرہ طالبہ کی والدہ کا کہنا ہے کہ ایک ماہ گزر جانے کے پولیس کوئی کارروائی نہیں کر رہی ہے۔ اس وجہ سے متاثرہ کا کنبہ ملزم کی طرف دی جارہی دھمکیوں کے ساتھ دہشت میں جی رہا ہے۔ وہیں جب پولیس سے اس بارے میں بات کی گئی تو پولیس نے کہا کہ معاملے کی جانچ کے بعد جلد گرفتاری کی جائے گی۔
Published by: sana Naeem
First published: Oct 14, 2020 11:17 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading