ہوم » نیوز » مشرقی ہندوستان

اربوں روپے کے سرجن گھوٹالہ کے بعد اب بہار میں کروڑوں روپے کے ٹوائلٹ گھوٹالہ کا انکشاف ، کیس درج

بہار میں اربوں روپے کے سرجن گھوٹالہ کی جاری تحقیقات کے درمیان ضلع پٹنہ میں 15 کروڑ روپے کا ٹوائلٹ گھوٹالہ سامنے آنے کے بعد ریاست کی شبیہ ایک بار پھر خراب ہوئی ہے۔

  • UNI
  • Last Updated: Nov 04, 2017 10:21 AM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
اربوں روپے کے سرجن گھوٹالہ کے بعد اب بہار میں کروڑوں روپے کے ٹوائلٹ گھوٹالہ کا انکشاف ، کیس درج
بہار میں اربوں روپے کے سرجن گھوٹالہ کی جاری تحقیقات کے درمیان ضلع پٹنہ میں 15 کروڑ روپے کا ٹوائلٹ گھوٹالہ سامنے آنے کے بعد ریاست کی شبیہ ایک بار پھر خراب ہوئی ہے۔

پٹنہ : بہار میں اربوں روپے کے سرجن گھوٹالہ کی جاری تحقیقات کے درمیان ضلع پٹنہ میں 15 کروڑ روپے کا ٹوائلٹ گھوٹالہ سامنے آنے کے بعد ریاست کی شبیہ ایک بار پھر خراب ہوئی ہے۔ آج یہاں سرکاری ذرائع نے بتایا کہ ضلع پٹنہ میں ٹوائلٹ کی تعمیر میں گھوٹالے کی خبر آنے کے بعد ضلع مجسٹریٹ سنجے ا گروال کی ہدایت پر پٹنہ کے گاندھی میدان تھانہ میں ایف آئی آر درج کی گئی ہے۔ ۔ یہ ایف آئی بہار اسٹیٹ واٹر بورڈ کے سپرنٹنڈنٹ انجینئر ونےکمار سنہا اور اکاؤنٹنٹ بتیشور پرساد کے علاوہ چار غیر سرکاری تنظیموں (این جی او) کے اہلکاروں کے خلاف درج کی گئی ہے۔

ایف آر کے مطابق ٹوائلٹ کی تعمیر کے نام پر ان غیر سرکاری تنظیموں کو 13.5 کروڑ روپے کی ادائیگی کی گئی اور ٹوائلٹ اسکیم کی تشہیر کے لئے 1.5 کروڑ روپے کی ادائیگی کی گئی تھی۔ جب یہ گھوٹالہ ہوا تو مسٹر سنہا پبلک ہیلتھ اور انجینئرنگ ڈیپارٹمنٹ کے ایگزیکٹو آفیسر تھے۔

First published: Nov 04, 2017 10:20 AM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading