ہوم » نیوز » مشرقی ہندوستان

آل انڈیا یونائٹیڈ مسلم مورچہ دلت مسلمانوں کو جےڈی یو سے جوڑنے کی کررہا ہے کوشش

مورچہ کے مطابق مسلمانوں کے دلت طبقہ نے جےڈی یو کی حمایت کی ہے۔ آل انڈیا یونائٹیڈ مسلم مورچہ این ڈی اے اتحاد میں شامل پارٹیوں میں صرف جےڈی یو کی حمایت کررہا ہے۔

  • Share this:
آل انڈیا یونائٹیڈ مسلم مورچہ دلت مسلمانوں کو جےڈی یو سے جوڑنے کی کررہا ہے کوشش
آل انڈیا یونائٹیڈ مسلم مورچہ دلت مسلمانوں کو جےڈی یو سے جوڑنے کی کررہا ہے کوشش

بہار اسمبلی انتخابات میں آل انڈیا یونائٹیڈ مسلم مورچہ نے جےڈی یو کی حمایت میں ووٹ مانگا تھا۔ دلت۔ مسلم مورچہ کی اپیل پر مسلمانوں کے پچھڑے، دلت اور پسماندہ طبقہ نے جےڈی یو کے امیدواروں کو ووٹ دیا۔ حالانکہ جےڈی یو نے مسلم ووٹوں کا جائزہ لیتے ہوئے یہ کہا تھا کہ مسلمانوں کا ووٹ جےڈی یو کو نہیں ملا ہے۔ آل انڈیا یونائٹیڈ مسلم مورچہ نے پٹنہ میں ایک پریس کانفرنس کا انعقاد کر اس بات کو غلط بتایا ہے۔


مورچہ کے مطابق مسلمانوں کے دلت طبقہ نے جےڈی یو کی حمایت کی ہے۔ آل انڈیا یونائٹیڈ مسلم مورچہ این ڈی اے اتحاد میں شامل پارٹیوں میں صرف جےڈی یو کی حمایت کررہا ہے۔ صوبہ کے دلتوں کو جےڈی یو سے جوڑنے کی مہم میں مصروف مورچہ نے نتیش کمار سے اپیل کی ہیکہ وہ زمینی سطح پر کام کرنے والے لیڈروں پر بھروسہ کریں۔ مورچہ کے مطابق جےڈی یو میں موجود مسلم لیڈر پارٹی کو انتخابات میں کسی طرح کی کوئی مدد پہنچانے سے قاصر رہے۔ یہاں تک کہ ایک بھی مسلم امیدوار کو جتا پانے میں جےڈی یو کے موجودہ مسلم لیڈر ناکام ثابت ہو چکےہیں۔ ایسے میں نتیش کمار کو زمینی لیڈروں پر بھروسہ کرنا چاہئے۔


آل انڈیا یونائٹیڈ مسلم مورچہ کے قومی نائب صدر کمال اشرف نے کہا کہ دلت طبقہ کی آواز نتیش کمار نے ہمیشہ اٹھائی ہے اب دلت مسلمانوں کا فرض ہیکہ وہ نتیش کمار کی پوری طرح سے حمایت کریں۔ مورچہ کا کہنا ہیکہ سی اے اے کا مدعا بی جے پی کے لئے ایک مسالہ ہے۔ وہ اس کو سامنے رکھ کر ووٹوں کا پولرائزیشن کرنے کی کوشش کرتی آئی ہے۔


آل انڈیا یونائٹیڈ مسلم مورچہ نتیش کمار کو صوبہ میں مضبوط بنانے کی کوشش میں جٹا ہے۔ مورچہ نے ذات کی بنیاد پر مردم شماری کرانے کی بھی اپیل کی ہے۔ مورچہ کا کہنا ہیکہ انگریزوں کی حکومت میں پہلی بار 1931 میں مردم شماری ذات کی بنیاد پر کرائی گئی تھی۔ اس کے بعد 1941 میں مردم شماری ہوئی ہی نہیں اور 1948 میں ذات کے کالم کو ہٹا دیا گیا۔ مورچہ کا کہنا ہیکہ ذات پر مردم شماری کرائے جانے سے دلت، پچھڑے اور کمزور طبقات کو فائدہ ہوگا۔
Published by: Nadeem Ahmad
First published: Dec 14, 2020 07:05 PM IST