உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Assembly Election Results 2021 :پانچ ریاستوں میں شروع ہوئی ووٹوں کی گنتی، مغربی بنگال پرسب کی نظرمرکوز

    ممتا بنرجی بنگال کے قلعے کو بچانے میں کامیاب ہوئیں یا بی جے پی نے وہاں 'کمل' کھلایا ہے۔

    ممتا بنرجی بنگال کے قلعے کو بچانے میں کامیاب ہوئیں یا بی جے پی نے وہاں 'کمل' کھلایا ہے۔

    مغربی بنگال ، تمل ناڈو ، آسام ، کیرالہ اور پوڈوچیری سمیت پانچ ریاستوں اور مرکزی علاقوں کی 822 اسمبلی نشستوں پر ووٹوں کی گنتی اتوار کی صبح 8 بجے شروع ہوگئی۔ اس دوران کوویڈ ۔19 قوانین کی سختی سے عمل کیا جائے گا

    • Share this:
      Assembly Election Results 2021 :ملک کی 5 ریاستوں (مغربی بنگال ، تمل ناڈو ،کیرالا ، آسام اور پڈوچیری) کے اسمبلی انتخابات کے نتائج کا اعلان ہوگا۔ پانچوں ریاستوں میں ووٹوں کی گنتی اب سے کچھ ہی دیر میں یعنی 8 بجے شروع ہوگئی ۔ممتا بنرجی بنگال کے قلعے کو بچانے میں کامیاب ہوئیں یا بی جے پی نے وہاں 'کمل' کھلایا ہے۔ اس کے ساتھ ، نگاہ آسام پر بھی ہے ، جہاں بی جے پی اقتدار بچانے کی کوشش کر رہی ہے۔جبکہ کیرالا ، پڈوچیری اور تمل ناڈو کے نتائج بھی اہم مانے جارہے ہیں۔

      کیرالا کے بارے میں بات کریں تو ، پنارائی وجین کی پارٹی ایل ڈی ایف دوبارہ حکومت تشکیل دے سکتی ہے ، تمام ایگزٹ پول اس کا دعویٰ کر رہے ہیں۔ تمل ناڈو میں ڈی ایم کے کو اقتدار ملنے کا امکان ہے۔ کانگریس اور بی جے پی میں سے پڈوچیری کی اقتدار کی کنجی کس کو ملے گی ؟ یہ آج آنے انتخابات نتائج کے ساتھ ہی صاف ہوگا ۔


      مغربی بنگال ، تمل ناڈو ، آسام ، کیرالہ اور پوڈوچیری سمیت پانچ ریاستوں اور مرکزی علاقوں کی 822 اسمبلی نشستوں پر ووٹوں کی گنتی اتوار کی صبح 8 بجے شروع ہوگی۔ اس دوران کوویڈ ۔19 قوانین کی سختی سے عمل کیا جائے گا۔ ہفتہ کو الیکشن کمیشن نے یہ جانکاری فراہم کی تھی ۔


      کمیشن نے کہا کہ پانچ ریاستوں میں کل 2،364 مراکز میں ووٹوں کی گنتی کی جائے گی۔ سال 2016 میں گنتی کے مراکز کی کل تعداد 1،002 تھی۔ اس بار کورونا وائرس کے پھیلاؤ کو روکنے کے لئے جسمانی فاصلاتی اصول پر عمل کرنے کے لئے انتخابات کی وجہ سے گنتی مراکز کی تعداد میں 200 فیصد اضافہ کیا گیا ہے۔ مغربی بنگال میں سب سے زیادہ تعداد 1111 ، کیرالا میں 633 ، آسام میں 331 ، تمل ناڈو میں 256 اور پڈوچیری میں 31 مراکز ہیں۔
      Published by:Mirzaghani Baig
      First published: