ہوم » نیوز » مشرقی ہندوستان

Bihar Election Results: قریبی مقابلے میں 14 سیٹوں پر 500 اور سات سیٹوں پر 1000 سے بھی کم کا فرق

قصبہ اسمبلی حلقہ میں ایل جے پی کے پردیپ کمار داس کانگریس کے محمد آفاق عالم سے محض پانچ ووٹوں سے آگے ہیں۔ علی نگر اسمبلی حلقہ میں وی آئی پی کے مشری لال یادو آرجے ڈی کے وینود مشر سے 32 ووٹ ، الولی میں جے ڈی یو کی سادھنا دیوی، آرجے ڈی کے رام ورچھ سدا سے 62 ووٹ اور اتری میں جے ڈی یو کی منورما دیوی آرجے ڈی کے اجے یادو سے 80 ووٹوں سے آگے ہیں۔

  • UNI
  • Last Updated: Nov 10, 2020 04:11 PM IST
  • Share this:
Bihar Election Results: قریبی مقابلے میں 14 سیٹوں پر 500 اور سات سیٹوں پر 1000 سے بھی کم کا فرق
فائل فوٹو

پٹنہ۔ بہار میں 243 اسمبلی حلقوں کیلئے چل رہی رائے شماری میں کانٹے کی ٹکر ہے جس میں سبقت کا فرق 14 سیٹوں پر 500 اور سات سیٹوں پر 1000 سے کم کا ہے۔ ریاستی الیکشن دفتر سے گنتی کے اب تک مل رہے رجحانات میں 21 سیٹوں پر زبردست مقابلہ ہے ۔ ان میں جنتادل یونائٹیڈ ( جے ڈی یو ) اور بھارتیہ جنتا پارٹی ( بی جے پی ) پانچ ۔ پانچ سیٹ پر اور اس کی حلیف ویکاس شیل انسان پارٹی ( وی آئی پی ) کے امیدوار ایک سیٹ ، وہیں راشٹریہ جنتادل ( آر جے ڈی ) کے چار ، کانگریس کے دو اور سی پی آئی ایم ایل کے ایک امیدوار اور دو سیٹ پر لوک جن شکتی پارٹی ( ایل جے پی ) امیدوار اپنے نزدیکی حریفوں سے 1000 سے بھی کم ووٹوں سے آگے ہیں۔


قصبہ اسمبلی حلقہ میں ایل جے پی کے پردیپ کمار داس کانگریس کے محمد آفاق عالم سے محض پانچ ووٹوں سے آگے ہیں۔ علی نگر اسمبلی حلقہ میں وی آئی پی کے مشری لال یادو آرجے ڈی کے وینود مشر سے 32 ووٹ ، الولی میں جے ڈی یو کی سادھنا دیوی، آرجے ڈی کے رام ورچھ سدا سے 62 ووٹ اور اتری میں جے ڈی یو کی منورما دیوی آرجے ڈی کے اجے یادو سے 80 ووٹوں سے آگے ہیں۔


اسی طرح بہاری گنج میں جے ڈی یو کے نرنجن کمار مہتا کانگریس کی سبھاشنی بندیلا سے 158 ، دینارا میںایل جے پی کے راجندر پرساد سنگھ آرجے ڈی کے وجے کمار منڈل سے 170 ، سیتامڑھی میں بی جے پی کے متھلیش کمار آر جے ڈی کے سنیل کمار سے 181 ، فتوحہ میں آرجے ڈی کے ڈاکٹر رامانند یادو بی جے پی کے ستیندر کمار سنگھ سے 204 ، راجگیر میں کانگریس کے روی جیوتی کمار جے ڈی یو کے کیلاش کشور سے 305 ، میروا میں جے ڈی کے ودیا ساگر سنگھ نشاد آرجے ڈی کے رن وجے ساہو سے 367 ، بہادر پور میں آرجے ڈی کے رمیش چودھری جے ڈی یو کے مدن سنہی سے 376 ، جمال پور میں کانگریس کے اجے کمار سنگھ جے ڈی یو کے سیلیش کمار سے 379 اور باجپٹی میں آرجے ڈی کے مکیش کمار یادو جے ڈی یو کی ڈاکٹر رنجو گیتا سے 380 ووٹوں سے آگے ہیں۔


ریاستی الیکشن دفتر کے مطابق ، سلطان گنج میں جے ڈی یو کے للت نارائن منڈل کانگریس کے للن کمار سے 503 ، تراری میں سی پی آئی ایم ایل کے سداما پرساد آزاد نریندر کمار پانڈے عرف سنیل پانڈے سے 630 ، بیتا میں بی جے پی کی رینو دیوی کانگریس کے مدن موہن تیواری سے 833 ، برولی میں بی جے پی کے رام پرویش رائے آرجے ڈی کے ریاض الحق عرف راجو سے 927 ، رجولی میں بی جے پی کے کنہیا کمار آرجے ڈی کے پرکاش ویر سے 984 ، مڑھورا میں جے ڈی یوکے الطاف عالم آرجے ڈی کے جتندر کمار رائے سے 989 اور مدھوبن میں بی جے پی کے رانا رندھیر آرجے ڈی کے مدن پرساد سے 992 ووٹوں سے آگے ہیں۔

گنتی کے ہر راﺅنڈ میں الٹ پھیر ہورہاہے ۔ قریبی مقابلے کا فرق کم ہونے سے لیڈران کبھی آگے تو کبھی پیچھے ہوجاتے ہیں۔ اس سے لیڈران اور ان کے حامیوں کی دھڑکنیں تیز ہوگئی ہیں۔ صاحب پور کمال اسمبلی حلقہ میں لوک جن شکتی پارٹی کے امیدوار سریندر کمار عرف سریندر ویویک نے بھی سخت ٹکر دی ہے ۔ وہ 22718 ووٹ پاکر تیسرے مقام پر رہے۔ ان کے علاوہ آل انڈیا مجلس اتحاد المسلمین ( اے آئی ایم آئی ایم ) کے امیدوار گورے لال رائے نے بھی 7889ووٹ پائے ہیں۔ غور طلب ہے کہ سال 2015 کے اسمبلی انتخاب میں آرجے ڈی کے شری نارائن یادو نے 45474 ووٹوں کے فرق سے جیت حاصل کی تھی۔
Published by: Nadeem Ahmad
First published: Nov 10, 2020 03:50 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading