ہوم » نیوز » مشرقی ہندوستان

بہار اسمبلی الیکشن میں انصاری مہاپنچایت کی این ڈی اے اور عظیم اتحاد سے 5 سیٹوں کی مانگ

مہاپنچایت کے سرپرست خورشید اکبر کا کہنا ہیکہ بغیر انتخاب لڑے انصاری برادری کی حصہ داری کو یقینی بنانا مشکل ہے۔ اس لئے مہاپنچایت پہلے مرحلے میں سیاسی پارٹیوں سے اتحاد کرنا چاہتا ہے۔ اس تعلق سے مہاپنچایت لگاتار سیاسی پارٹیوں سے رابطہ بنا رہا ہے۔ اگر بات نہیں بنتی ہے تو مہاپنچایت اپنے دم پر اسمبلی انتخاب میں حصہ لےگا۔

  • Share this:
بہار اسمبلی الیکشن میں انصاری مہاپنچایت کی این ڈی اے اور عظیم اتحاد سے 5 سیٹوں کی مانگ
بہار اسمبلی الیکشن میں انصاری مہاپنچایت نے این ڈی اے اور عظیم اتحاد سے مانگا 5 سیٹ

پٹنہ۔ بہار میں ذات پات کی سیاست کوئی نئی بات نہیں ہے۔ انتخابات کوئی بھی ہوں، سیاسی گولبندی ذات سے شروع ہوتی ہے اور ذات پر ہی ختم ہو جاتی ہے۔ ذات کو بنیاد بناکر سیاسی پارٹیاں اپنا امیدوار طے کرتی ہیں اور عام طور پر اسمبلی یا پارلیمانی حلقوں میں ذاتوں کے تال میل پر ہی سیاسی پارٹیوں کو ووٹ ملتا ہے۔


مسلمانوں کی انصاری برادری نے الزام لگایا ہیکہ ان کی آبادی گیارہ فیصدی ہے لیکن اسمبلی کے ۲۴۳ اور قانون ساز کونسل کی ۷۵ سیٹوں میں ایک بھی نمائندہ ان کا نہیں ہے۔ انصاری مہاپنچایت نے این ڈی اے اور عظیم اتحاد سے پانچ سیٹ دینے کا مطالبہ کیا ہے۔ دس دنوں کے اندر اس پر فیصلہ کرنے کی اپیل کی ہے۔ انصاری مہا پنچایت کے کنوینر وسیم  نیر انصاری کے مطابق اگر ان کے مطالبات کو این ڈی اے اور عظیم اتحاد نہیں مانتی ہے تو اسمبلی کے انتخاب میں انصاری مہاپنچایت پچیس سیٹوں پر اپنا امیدوار کھڑا کرے گا۔


ادھر مہاپنچایت کے سرپرست خورشید اکبر کا کہنا ہیکہ بغیر انتخاب لڑے انصاری برادری کی حصہ داری کو یقینی بنانا مشکل ہے۔ اس لئے مہاپنچایت پہلے مرحلے میں سیاسی پارٹیوں سے اتحاد کرنا چاہتا ہے۔ اس تعلق سے مہاپنچایت لگاتار سیاسی پارٹیوں سے رابطہ بنا رہا ہے۔ اگر بات نہیں بنتی ہے تو مہاپنچایت اپنے دم پر اسمبلی انتخاب میں حصہ لےگا۔ انصاری مہا پنچایت کے مطابق صوبہ کی تمام سیاسی پارٹیوں نے انصاری برادری کا ووٹ لیا ہے لیکن انصاف دینے کے معاملہ پر ہمیشہ ڈنڈی ماری کی ہے۔ مہاپنچایت کا کہنا ہیکہ آبادی کے لحاظ سے ریاست میں یادو کے بعد انصاری برادری کی تعداد ہے لیکن سیاسی نمائندگی کے سوال پر انصاری برادری کو ہمیشہ ٹھگنے کی کوشش ہوتی رہی ہے۔ آئندہ دس دنوں میں این ڈی اے یا عظیم اتحاد سے ان کا اتحاد نہیں ہوا تو وہ اکیلے ہی انتخابی میدان میں اتریں گے۔


 
Published by: Nadeem Ahmad
First published: Sep 17, 2020 08:43 AM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading