ہوم » نیوز » No Category

تیسرے محاذ میں سرپھٹول، اب تک نہیں ہو پائی سیٹوں کی تقسیم، بیان بازیوں کا دور بھی جاری

پٹنہ : بہار میں مهاگٹھ بندھن اور این ڈی اے کے خلاف سیاسی میدان میں اترے تیسرے محاذ میں سر پھٹول کی صورتحال بنی ہوئی ہے۔

  • News18
  • Last Updated: Oct 01, 2015 09:31 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
تیسرے محاذ میں سرپھٹول، اب تک نہیں ہو پائی سیٹوں کی تقسیم، بیان بازیوں کا دور بھی جاری
پٹنہ : بہار میں مهاگٹھ بندھن اور این ڈی اے کے خلاف سیاسی میدان میں اترے تیسرے محاذ میں سر پھٹول کی صورتحال بنی ہوئی ہے۔

پٹنہ : بہار میں مهاگٹھ بندھن اور این ڈی اے کے خلاف سیاسی میدان میں اترے تیسرے محاذ میں سر پھٹول کی صورتحال بنی ہوئی ہے۔ کچھ دنوں پہلے ہی محاذ نے سیٹوں کی تقسیم کا اعلان کر دیا تھا، لیکن اب تک صحیح طریقے سے سیٹوں کی تقسیم نہیں ہوپائی ہے۔ محاذ میں شامل پارٹیاں ایک دوسرے کے خلاف بیان بازی کر رہی ہیں اور امیدوار بھی اتار رہی ہیں۔


تیسرے محاذ نے جو سیٹوں کی تقسیم کا اعلان کیا تھا ، اس کے مطابق ایس پی 85، این سی پی 40، جن ادھكار پارٹی 64، ایس ایس پی 28، ایس جےڈي 23 اور این پی پی3 سیٹوں پر اپنے امیدوار میدان میں اتارنے والی ہیں ، مگر اب تک اس بات کو فیصلہ نہیں ہوسکا ہے کہ کون سی سیٹ پر کس پارٹی کا امیدوار میدان میں ہو گا ، جس کی وجہ سے پارٹی میں سرپھٹول کی صورتحال پیدا ہوہوگئی ہے۔


یہی نہیں تیسرے محاذ میں شامل پارٹیوں کے لیڈروں نے بھی ایک دوسرے پر الزام تراشیاں شروع کردی ہیں۔ جہاں ایک طرف طارق انور کا کہنا ہے کہ تسلط کو لے کر ہی یہ سب ہو رہا ہے وہیں تیسرے محاذ میں شامل سماج وادی پارٹی کے لیڈروں نے پپو یادو کی من مانی پر ناراضگی بھی ظاہر کی ہے۔ خیال رہے کہ پپو یادو نے جے ڈی یو سے باغی ہوئے رام دھني سنگھ کو ٹکٹ دئے جانے پر شدید اعتراض کیا تھا۔


سماجوادی پارٹی نے پپو یادو کے بیان پر سخت رد عمل ظاہر کرتے ہوئے انہیں اپنی پارٹی اور اپنے امیدواروں پر توجہ دینے کا مشورہ دیا ہے ۔ تاہم ایس پی کے لیڈران فی الحال کھل کر کچھ بھی بولنے سے پرہیز کررہے ہیں۔ اس کے علاوہ تیسرے محاذ کی جانب سے مشترکہ طور پر انتخابی منشور جاری کرنے کی بات بھی کہی گئی تھی، لیکن پپو یادو نے پہلے ہی اپنا منشور جاری کر دیا۔


ایسے میں اب تیسرے محاذ کے وجود پر ہی سوال اٹھنے لگا ہے۔ تشہیر کو لے کر بھی تیسرے محاذ میں کوئی تال میل نہیں ہے۔ یوں تو اسٹار پرچارکوں میں ملائم سنگھ، اکھلیش یادو، شرد پوار جیسے ناموں کو گنایا جا رہا ہے، لیکن یہ لیڈران کب میدان میں اتریں گے، یہ کہنا فی الحال مشکل ہے۔

First published: Oct 01, 2015 09:31 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading