ہوم » نیوز » مشرقی ہندوستان

بہار میں سیلاب بنا حکومت کے لئے درد سر، انتخابی سال میں لوگوں کو مطمئن کرنا بڑا چیلنج

قدرتی آفات کے اس قہر سے حکومت لوگوں کو بچا پانے میں ناکام رہتی ہے تو آئندہ اسمبلی انتخاب میں برسر اقتدار پارٹی کو اس کا خمیازہ اٹھانا پڑ سکتا ہے۔

  • Share this:
بہار میں سیلاب بنا حکومت کے لئے درد سر، انتخابی سال میں لوگوں کو مطمئن کرنا بڑا چیلنج
بہار میں سیلاب بنا حکومت کے لئے درد سر، انتخابی سال میں لوگوں کو مطمئن کرنا بڑا چیلنج

پٹنہ۔ بہار کے وزیر اعلیٰ نتیش کمار کے سامنے کورونا اور سیلاب ایک مصیبت بن کر سامنے آیا ہے۔ ایک طرف اسمبلی کا الیکشن ہے اور دوسری طرف قدرتی آفات سے لوگوں کو نجات دلانے کا مسئلہ کھڑا ہو گیا ہے۔ قدرتی آفات کے اس قہر سے حکومت لوگوں کو بچا پانے میں ناکام رہتی ہے تو آئندہ اسمبلی انتخاب میں برسر اقتدار پارٹی کو اس کا خمیازہ اٹھانا پڑ سکتا ہے۔ نتیجہ کے طور پر کورونا کو لیکر جہاں حکومت نے محکمہ صحت کے پرنسپل سکریٹری کو ہٹا کر ان کی جگہ پرتیہ امرت کو پرنسپل سکریٹری بنایا ہے وہیں کئی افسروں کو کورونا کو ہرانے کی ذمہ داری سونپی ہے۔ وہیں سیلاب کے مسئلہ کو حل کرنے کے لئے محکمہ آبی و سائل کو الرٹ کیا ہے۔


ادھر ہر سال آنے والے سیلاب سے ہند۔ نیپال سرحد سے لگے اضلاع کے لوگ حکومت سے سخت ناراض ہیں۔ سیلاب کا قہر نہ صرف لوگوں کے گھروں کو ویران کر جاتا ہے بلکہ علاقے کے بنیادی مسئلہ کو  بھی مزید گہرا بنا دیتا ہے جس میں خاص طور سے سڑک کا ٹوٹنا شامل ہے۔ سیلاب کے قہر سے لوگ اپنے آپ کو بچانے میں مصروف ہیں لیکن سیلاب کے بعد ان علاقوں میں آنے جانے کا مسئلہ اس قدر سنگین ہو جاتا ہے کہ معاشی خستہ حالی کے شکار لوگ نئے سرے سے اپنے روزگار کو کھڑا کر پانے میں ناکام رہ جاتے ہیں۔


مغربی اور مشرقی چمپارن کے سینکڑوں گاوؤں پانی میں ڈوبے ہوئے ہیں۔ راستے بند ہو گئے ہیں اور سڑکیں ٹوٹ گئی ہیں۔ چمپارن سے نیپال کا سرحد محض تیس کیلومیٹر دور ہے اور نیپال کی بارش کا سب سے زیادہ اثر انہیں ضلعوں میں ہوتا ہے۔ سڑکوں کی خستہ حالی اور گاؤں کی تباہی کے مدنظر علاقہ کے سیاسی لیڈر نتیش کمار کو کٹگھرے میں کھڑا کر رہے ہیں۔ ان کے مطابق حکومت سیلاب کے مسئلہ کو مستقل طور سے حل کر پانے میں ناکام ہے۔ نتیجہ کے طور پر ہر سال ہزاروں لوگ بھکمری کے شکار ہوتے ہیں۔ سینکڑوں لوگوں کا گھر ہمیشہ کے لئے تباہ ہو جاتا ہے اور ہزاروں افراد بے روزگاری کے دلدل میں پھنس کر اپنی زندگی سے تنگ آجاتے ہیں۔ مقامی سیاسی لیڈروں نے برسر اقتدار حکومت کو اس معاملے میں سنجیدہ پہل کرنے کی اپیل کی ہے۔ ساتھ ہی سیلاب زدہ علاقوں کے لئے اسپیشل مراعات جاری کرنے کا حکومت سے مطالبہ کیا ہے۔

Published by: Nadeem Ahmad
First published: Jul 28, 2020 11:11 AM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading