உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    بہار حکومت کی جانب سے شروع کئے گئے صحت سروے کا کریں تعاون: مسلم تنظیموں کی اپیل

    مولانا ابوالکلام ریسرچ فاؤنڈیشن کے چیئرمین و معروف عالم دین مولانا انیس الرحمٰن قاسمی

    مولانا ابوالکلام ریسرچ فاؤنڈیشن کے چیئرمین و معروف عالم دین مولانا انیس الرحمٰن قاسمی

    مولانا ابوالکلام ریسرچ فاؤنڈیشن کے چیئرمین و معروف عالم دین مولانا انیس الرحمٰن قاسمی نے کہا کہ حکومت کی جانب سے کورونا کے خلاف چلائی جارہی اس تحریک کا لوگوں کو حصہ بننا چاہئے نہ کی اس کی مخالفت کرنی چاہئے۔

    • Share this:
    پٹنہ۔ بہار میں کورونا کو لیکر حکومت کی جانب سے صحت سروے کا کام شروع کیا گیا ہے۔ چار ضلعوں سیوان، بیگوسرائے، نوادا اور نالندہ میں سولہ اپریل سے صحت سروے کا کام گھر گھر کیا جارہا ہے۔ پلس پولیو کی طرح محکمہ صحت کے عملہ لوگوں کے گھر گھر جا کر جہاں ان کی جانچ کررہے ہیں وہیں گھرکے تمام لوگوں کی جانکاری بھی لی جارہی ہے۔ کچھ ضلعوں میں صحت سروے میں لگے لوگوں کے خلاف مقامی لوگوں نے ناراضگی ظاہر کی تھی۔ اس بات کو دیکھتے ہوئے اقلیتی تنظیموں نے مسلمانوں سے اپیل کی ہے کہ وہ صحت سے جڑے ملازمین کی مخالفت کرنے کے بجائے انکا خیر مقدم کریں۔

    مولانا ابوالکلام ریسرچ فاؤنڈیشن کے چیئرمین و معروف عالم دین مولانا انیس الرحمٰن قاسمی نے کہا کہ حکومت کی جانب سے کورونا کے خلاف چلائی جارہی اس تحریک کا لوگوں کو حصہ بننا چاہئے نہ کی اس کی مخالفت کرنی چاہئے۔ مولانا انیس الرحمٰن قاسمی نے لوگوں سے اپیل کی ہیکہ صحت سروے میں محکمہ صحت نے کئی طرح کا سوال نامہ بنایا جس میں گھر کے سرپرست کے ساتھ ساتھ گھر کے تمام لوگوں کی جانکاری دینی ہے۔

    ابوالکلام ریسرچ فاؤنڈیشن اور آل انڈیا ملی کونسل نے لوگوں سے کہا ہے کہ وہ صحت سروے کا کام کررہے عملہ کو پوری جانکاری مہیا کریں تاکہ اس وبا سے بچنے کا راستہ ہموار ہو سکے۔ وزیر اعلیٰ نتیش کمار نے اعلان کیا ہیکہ ایسے تمام ضلع جو کورونا سے متاثر ہیں وہاں ایک مہم چلا کر لوگوں کے صحت کی جانکاری لی جائےگی تاکہ آگے کا خاکہ تیار کیا جاسکے اور وقت رہتے حکومت لوگوں کی مدد کرسکے۔ اس کام کو پلس پولیو کے انداز میں کرایا جارہا ہے۔ مختلف ضلعوں میں صحت کے عملہ کام کر رہے ہیں جہاں انہیں لوگوں کے گھروں کی جانکاری لینے میں دقت پیش ہورہی ہے۔ اس کو مدّنظر رکھتے ہوئے مسلم تنظیموں نے اعلان کیا ہے کہ صحت کے عملہ کی مدد کی جائے اور کورونا مہم کا حصہ بنا جائے۔ صحت سروے میں لوگوں کو نقصان پہنچانے کے بجائے ان کا ساتھ دیا جائے تاکہ جلد سے جلد اس وبا پر حکومت کو قابو پانے میں مدد مل سکے۔
    Published by:Nadeem Ahmad
    First published: