ہوم » نیوز » مشرقی ہندوستان

گری راج سنگھ چاہتے ہیں بہار میں بنے لو جہاد کا قانون ، جے ڈی یو نے کیا خارج

بہار کی این ڈی اے حکومت میں بی جے پی کی حیثیت اب بڑے بھائی کی ہے ۔ جےڈی یو کے کم ایم ایل اے ہونے سے حکومت پر اثر بھی بی جے پی کا ہوگا ، اس سے انکار نہیں ہے ، لیکن گری راج سنگھ کی مانگ کو جے ڈی یو نے خارج کر دیا ہے ۔

  • Share this:
گری راج سنگھ چاہتے ہیں بہار میں بنے لو جہاد کا قانون ، جے ڈی یو نے کیا خارج
گری راج سنگھ چاہتے ہیں بہار میں بنے لو جہاد کا قانون ، جے ڈی یو نے کیا خارج

لوجہاد اور آبادی پر قابو پانے کا قانون بنانے کے سلسلے میں گری راج سنگھ ایک زمانے سے جد وجہد کررہے ہیں ۔ گری راج سنگھ بہار میں بی جے پی کے ایسے خاص لیڈر ہیں ، جو ایسے سوالوں کو ہمیشہ سرخیوں میں لانے کی کوشش کرتے رہے ہیں ۔ ساتھ ہی اپنے متنازع بیان کو لے کر بھی وہ کافی مشہور ہیں ۔ جب وہ بہار قانون ساز کونسل کے میمبر تھے ، تب بھی انہوں نے اس طرح کے ایشو کو اچھالا تھا اور جب سے وہ مرکزی وزیر بنے ہیں ، تب سے ان معاملات کو ہر قیمت پر حل کرانے کی بات کرتے ہیں اور اس کے لئے قانون بنانے کا مطالبہ کرتے رہے ہیں ۔


پہلے گری راج سنگھ آبادی پر کنڑول اور بنگلہ دیشی دراندازی کا ایشو اٹھاتے تھے ، اب لو جہاد کا قانون بنانے کی مانگ پر بھی وہ بے حد سنجیدہ ہیں ۔ گری راج سنگھ چاہتے ہیں کہ بہار میں لو جہاد پر حکومت قانون بنائے ۔


واضح رہے کہ بہار کی این ڈی اے حکومت میں بی جے پی کی حیثیت اب بڑے بھائی کی ہے ۔ جےڈی یو کے کم ایم ایل اے ہونے سے حکومت پر اثر بھی بی جے پی کا ہوگا ، اس سے انکار نہیں ہے ، لیکن گری راج سنگھ کی مانگ کو جے ڈی یو نے خارج کر دیا ہے ۔


جے ڈی یو کے ریاستی صدر وششٹھ نارائن سنگھ کے مطابق بہار کے بھائی چارہ کے ماحول میں ایسے ایشوز کی کوئی جگہ نہیں ہے ۔ ادھر آر جے ڈی نے اس معاملہ پر طنز کرتے ہوئے کہا ہے کہ ووٹ کے لئے بی جے پی کچھ بھی کر سکتی ہے ۔
Published by: Imtiyaz Saqibe
First published: Nov 21, 2020 09:57 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading