ہوم » نیوز » مشرقی ہندوستان

بہار کے نئے منظور شدہ مدارس کے اساتذہ کو 15 ماہ سے نہیں ملی تنخواہیں

بہار مدرسہ ایجوکیشن بورڈ کا رویہ آج تک نہیں بدلا ہے۔ مدرسہ بورڈ گزشتہ ایک مہینہ سے نئے منظور شدہ مدارس کے اساتذہ کی تنخواہوں کو دبا کر بیٹھا ہے۔

  • ETV
  • Last Updated: Jun 12, 2017 10:56 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
بہار کے نئے منظور شدہ مدارس کے اساتذہ کو 15 ماہ سے نہیں ملی تنخواہیں
بہار مدرسہ ایجوکیشن بورڈ کا رویہ آج تک نہیں بدلا ہے۔ مدرسہ بورڈ گزشتہ ایک مہینہ سے نئے منظور شدہ مدارس کے اساتذہ کی تنخواہوں کو دبا کر بیٹھا ہے۔

پٹنہ : بہار مدرسہ ایجوکیشن بورڈ کا رویہ آج تک نہیں بدلا ہے۔ مدرسہ بورڈ گزشتہ ایک مہینہ سے نئے منظور شدہ مدارس کے اساتذہ کی تنخواہوں کو دبا کر بیٹھا ہے۔ رمضان کا مہینہ ہونے کے بعد بھی اساتذہ کو 15 ماہ سے تنخواہیں نہیں ملی ہیں ، لیکن بورڈ کو اس کی کوئی پروا نہیں ہے۔ اس سے ناراض مدرسہ طلبہ یونین نے 18 جون سے بورڈ میں تالہ لگانے کا فیصلہ کیا ہے ۔

بہارحکومت کی جانب سے مدرسہ کے اساتذہ کو تنخواہ دینے کے لئے رقم مدرسہ بورڈ کے حوالہ کی جاچکی ہے ، لیکن بورڈ نے اس سلسلہ میں کوئی کاروائی نہیں کی ہے ، جس کی وجہ سے اساتذہ تنگ دستی میں رمضان کا مہینہ گزارنے پر مجبور ہیں۔ حالت یہ ہے کہ اس سلسلہ میں چیئرمین کو بھی کوئی خاص جانکاری نہیں ہے۔

ای ٹی وی نمائندہ کے پوچھنے پر چیئرمین سکریٹری سے سوال کرنے لگے ۔ چیئرمین اور سکریٹری دونوں کے سامنے یہ مسئلہ کتنا بڑا مدعا ہے ، یہ ان کی باتوں سے صاف ظاہر ہو گیا ۔ مدرسہ کے ان ٹیچروں کی مالی مشکلات کا تصور کیا جائےتو خود سوچئے کہ رمضان کا مہینہ کیسے گزار رہے ہون گے ، جب جیب میں پھوٹی کوڑی بھی نہیں ہے۔ جبکہ خود کی تنخواہ وہ بھی ایک دو مہینہ کی نہیں بلکہ 15 مہینہ کی باقی ہے۔

First published: Jun 12, 2017 10:56 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading