ہوم » نیوز » مشرقی ہندوستان

پٹنہ کے اس کالج میں اب بھی نافذ رہے گا ڈریس کوڈ، مخالفت کے بعد نوٹس سے ’برقع‘ لفظ ہٹایا

غور طلب ہے کہ پٹنہ میں ڈریس کوڈ تقریبا ہر کالج میں نافذ ہے، لیکن ممکنہ طور پر پٹنہ شہر کا یہ پہلا کالج تھا جہاں برقع پر پابندی عائد کرنے کا نوٹس جاری کیا گیا تھا۔

  • Share this:
پٹنہ کے اس کالج میں اب بھی نافذ رہے گا ڈریس کوڈ، مخالفت کے بعد نوٹس سے ’برقع‘ لفظ ہٹایا
فائل فوٹو

پٹنہ۔ بہار (Bihar) کے دارالحکومت پٹنہ (Patna) کے جے ڈی ویمنس کالج (JD Wemens College) میں ہفتہ کے دن کو چھوڑ کر باقی ہر دن سبھی طالبات کو متعینہ ڈریس کوڈ (Dress Code) میں ہی کالج آنا ہو گا۔ کالج انتظامیہ نے اپنے پہلے کے نوٹس میں برقع پہننے پر بھی پابندی لگا رکھی تھی، لیکن مخالفت ہونے پر نوٹس سے برقع لفظ ہٹا دیا گیا ہے۔ حالانکہ اب بھی ڈریس کوڈ نافذ رہے گا اور اگر کسی طالبہ کو ضابطوں کی خلاف ورزی کرتے ہوئے پایا گیا تو اسے 250 روپئے جرمانہ دینا ہو گا۔




جے ڈی ویمنس کالج انتظامیہ نے واضح کیا ہے کہ کسی کو دکھ پہنچانا مقصد نہیں تھا، صرف کالج میں ڈسپلن کے لئے ایسا کیا گیا تھا۔ انتظامیہ نے کہا کہ طالبات کی ناراضگی اور آندولن کرنے کی خبر کے بیچ نوٹس سے برقع لفظ ہٹا دیا گیا ہے۔ بتا دیں کہ نیوز 18 سے بات چیت میں مسلم طالبات نے برقع نہیں پہننے دینے کو لے کر جاری کئے گئے نوٹس پر اعتراض جتایا تھا۔




غور طلب ہے کہ پٹنہ میں ڈریس کوڈ تقریبا ہر کالج میں نافذ ہے، لیکن ممکنہ طور پر پٹنہ شہر کا یہ پہلا کالج تھا جہاں برقع پر پابندی عائد کرنے کا نوٹس جاری کیا گیا تھا۔ کالج میں چسپاں کیا گیا یہ نوٹس پچھلے دو دن سے سوشل میڈیا پر کافی وائرل ہو رہا تھا جس کے بعد اس پر کئی اعتراضات کئے گئے تو کالج انتظامیہ نے تنازعہ میں پڑنا مناسب نہیں سمجھا اور برقع لفظ ہٹا دیا۔ حالانکہ اب بھی واضح طور پر یہ لکھا گیا ہے کہ ہفتہ کو چھوڑ کر سبھی دن طالبات کو متعینہ ڈریس کوڈ میں ہی کالج آنا ہے۔
First published: Jan 25, 2020 02:33 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading