உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    نیتی آیوگ کی پالیسی پر بہار کے وزیر اعلی نتیش کمار نے اٹھایا سوال ، کہی یہ بڑی بات ، جانئے کیا ہے معاملہ

    نیتی آیوگ کی پالیسی پر بہار کے وزیر اعلی نتیش کمار نے اٹھایا سوال ، کہی یہ بڑی بات

    نیتی آیوگ کی پالیسی پر بہار کے وزیر اعلی نتیش کمار نے اٹھایا سوال ، کہی یہ بڑی بات

    Nitish Kumar Raises Questions on NITI Aayog Report: انہوں نے مزید کہا کہ نیتی آیوگ پورے ملک کے بارے میں ایک ہی طرح کی باتیں کہہ دیتا ہے ۔ نیتی آیوگ اگر پورے ملک کو ایک ہی طرح کا مان کر چل رہا ہے تو یہ حیرت کی بات ہے ۔

    • UNI
    • Last Updated :
    • Share this:
      پٹنہ : ’جنتا کے دربار میں وزیر اعلیٰ‘پروگرام کے بعد وزیر اعلیٰ نتیش کمار نے میڈیا اہلکاروں سے بات کی ۔ نیتی آیوگ کی رپورٹ کے سلسلہ میں میڈیا کے سوال پر وزیر اعلیٰ نے کہا کہ صحت کے شعبہ میں بہار میں جو بھی کام ہو رہا ہے اس کی رپورٹ نیتی آیوگ کو ہمیشہ بھیجی جاتی رہی ہے ۔ بہار آبادی کے زاویہ نگاہ سے ملک میں یوپی اور مہا راشٹر کے بعد تیسرے نمبر پر ہے ، جبکہ رقبہ کے حساب سے بہار 12ویں نمبر پر ہے بہار میں فی مربع کیلو میٹر آبادی ملک میں سب سے زیادہ ہے ۔ بہار کی ان صورتحال کو ذہن میں رکھنا ہو گا ۔ انہوں نے کہا کہ جب سے بہار کے لوگوں نے ہم لوگوں کو کام کر نے کا موقع دیا اس وقت سے تمام شعبوں میں کام کیا گیا ہے ۔

      انہوں نے کہا کہ صحت کے شعبہ میں پہلے بہار کی کیا صورت حال تھی ،یہ تمام لوگوں کو پتہ ہے ۔ بہار کے تعلق سے ایک رپورٹ بھی پہلے ہم نے پڑھی تھی ۔ بہار کے غریب کنبوں کو کھانے سے زیادہ علاج پر خرچ کر نا پڑتا ہے ۔ پہلے بہار میں صحت کے شعبہ میں بنیادی سہولتوں کا فقدان تھا ۔ پہلے بہار کے سرکار ی اسپتالوں میں بہت کم لوگ علاج کرانے جاتے تھے ۔پہلے بہار کے اسپتالوں میں بیڈ پر مریض کی جگہ کتے بیٹھے رہتے تھے ۔ پہلے پی ایچ سی میں ایک ماہ میں اوسطا 39 لوگوں کا علاج ہو تا تھا ۔ جب ہم لوگوں کو کام کر نے کا موقع ملا تو صحت کے شعبہ میں تیزی سے کام شروع کیا گیا ۔

      وزیر اعلی کا کہنا تھا کہ ہم نے پی ایچ سی اور اسپتالوں میں ڈاکٹروں کے ساتھ ساتھ دوا بھی مفت فراہم کرائی ۔ اب پی ایچ سی میں ایک ماہ میں اوسطا 10ہزار مریضوں کا علاج ہو تا ہے ۔ نئی ٹکنالوجی کا استعمال کر کے لوگ اب گھر بیٹھے اپنا علاج کراسکتے ہیں ۔ صحت کے شعبہ میں بہارآج کہاں سے کہاں پہنچ گیا ہے ۔ ہم نیتی آیوگ کی میٹنگ میں بہت ساری باتوں کوپہلے ہی کہہ چکے ہیں ۔

      انہوں نے مزید کہا کہ نیتی آیوگ پورے ملک کے بارے میں ایک ہی طرح کی باتیں کہہ دیتا ہے ۔ نیتی آیوگ اگر پورے ملک کو ایک ہی طرح کا مان کر چل رہا ہے تو یہ حیرت کی بات ہے ۔ آج کے دن مہاراشٹر سے بہار کا مقابلہ نہیں کیا جاسکتا ہے ۔ سب سے مالدار ریاست کا مقابلہ سب سے غریب ریاست سے نہیں ہوسکتا ہے ۔ نیتی آیوگ کی رپورٹ کو لے کر بہار حکومت اپنا جواب بھیج دے گی کہ یہ مناسب نہیں ہے ۔

      انہوں نے کہا کہ بہار میں ہوئے کام پر غور کیے بغیر رپورٹ جاری کر دینا اچھا نہیں ہے ۔ ہمیں پتہ نہیں کہ نیتی آیوگ کس طرح اور کس کے توسط سے اپنا کام کر تا ہے ۔ نیتی آیوگ کی اگلی میٹنگ میں اگر ہمیں جانے کا موقع ملا تو ایک ایک بات ہم پھر سے ان کے سامنے رکھیں گے ۔ ایسسمنٹ کر نے سے پہلے بنیادی چیزوں کی جانکاری ہو نی چاہئے ۔ تما م ریاستوں کو مساوی بنا دینا مناسب نہیں ہے ۔

      وزیر اعلیٰ نے کہا کہ بہا ر میں کئی میڈیکل کالج اور اسپتالوں کا قیام کیا گیا ہے ۔ کئی یونیورسٹی بھی قائم کی گئی ہے ۔ آئی جی آئی ایم ایس پہلے بہتر طریقہ سے کام نہیں کر رہا تھا ، اب آئی جی آئی ایم ایس کتنا بہتر سے چل رہا ہے ۔ پٹنہ میں مرکزی حکومت کا ایمس بنا اور ایمس کے لیے ہم لوگوں نے زمین کا انتظام کیا ۔ تاکہ جتنا جلدی یہ کام مکمل ہو جائے اور وہاں کام شروع ہو گیا ۔ پٹنہ میں ایمس بھی بہتر طریقہ سے چل رہا ہے ۔ اسپتالوں میں بیڈ کی تعداد بھی بڑھائی گئی ہے ۔

      انہوں نے کہا کہ نیتی آیوگ کو یہ پتہ نہیں ہے کہ ہم لوگ پی ایم سی ایچ کو 5400بیڈ کا اسپتال بنا رہے ہیں اور کام شروع کر دیا ہے ۔ یہ ملک کا سب سے بڑا اسپتال بنے گا ۔ ہم لوگوں نے کام شروع کر دیا ہے اور طے کر دیا کہ 4 سال کے اندر یہ کام مکمل ہو جائے گا ۔ ہماری خواہش ہے کہ اور کم وقت میں یہ پورا ہو اور اس کے لیے ہم لو گ لگے ہوئے ہیں ۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: