உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    بڑھتی ہوئی آبادی کو بہار میں روکیں گے وزیر اعلی نتیش کمار ، بتایا یہ بڑا فارمولہ

    بڑھتی ہوئی آبادی کو بہار میں روکیں گے وزیر اعلی نتیش کمار ، بتایا یہ بڑا فارمولہ

    بڑھتی ہوئی آبادی کو بہار میں روکیں گے وزیر اعلی نتیش کمار ، بتایا یہ بڑا فارمولہ

    بہار کے وزیر اعلی نتیش کمار نے کہا کہ جو ریاست جو کرنا چاہے اپنا کرے ، لیکن میرا بہت صاف نظریہ ہے ۔ آبادی کنٹرول کے لئے صرف قانون بنا کر کوئی تدبیر کریں گے تو ہندوستان جیسے ملک کیلئے یہ ممکن نہیں ہے ۔ چین کی مثال سامنے ہے اور ملک کی بھی کیا حالت ہے ، ہم سب دیکھ لیں ۔

    • UNI
    • Last Updated :
    • Share this:
      پٹنہ : بہار کے وزیراعلیٰ نتیش کمار نے آج کہا کہ قانون سے نہیں بلکہ خواتین کو تعلیم یافتہ بناکر ہی آبادی پر کنٹرول ممکن ہے ۔ وزیر اعلی نے سوموار کو ” جنتاد کے دربار میں وزیراعلیٰ‘ پروگرام کے بعد نامہ نگاروں سے بات چیت میں کہاکہ ” جو ریاست جو کرنا چاہے اپنا کرے ، لیکن میرا بہت صاف نظریہ ہے ۔ آبادی کنٹرول کے لئے صرف قانون بنا کر کوئی تدبیر کریں گے تو ہندوستان جیسے ملک کیلئے یہ ممکن نہیں ہے ۔ چین کی مثال سامنے ہے اور ملک کی بھی کیا حالت ہے ، ہم سب دیکھ لیں ۔ انہوں نے کہا کہ جب خواتین پورے طور پر پڑھی لکھی ہوتی ہیں ، تب ان میں اتنی بیداری آجاتی ہے کہ اس کی وجہ سے اپنے آپ فرٹیلیٹی شرح کم ہوجاتی ہے ۔

      وزیراعلیٰ نے کہا کہ بہار میں شروع سے اس کے لئے کام کیا گیا ہے ۔ اس پر اتنا زیادہ ریسرچ اور سروے کیا گیا ہے جس میں دیکھا گیا ہے کہ جب میاں ۔ بیوی میں شوہر میٹرک پاس ہے تو ملک کی اوسط فرٹیلیٹی شرح دو تھی ، بہار میں بھی دو ہی تھی ۔ لیکن جب بیوی انٹر پاس ہے تب قومی سطح پر اوسط فرٹیلیٹی شرح 1.7 اور بہار میں 1.6 تھی ۔ انہوں نے کہا کہ اسی سے ان کے من میں یوریکا کا احساس ہوا۔ انہیں لگا کہ یہ کتنی بڑی چیز ہے شرح پیدائش کو کم کرنے کیلئے ۔

      وزیر اعلی نتیش کمار نے کہا کہ بہار میں خواتین کی تعلیم پر کام کیا گیا ، تب فرٹیلیٹی شرح جو چار سے بھی اوپر تھی وہ اب کم ہوکر تین کے قریب پہنچ گئی ، لیکن جب یہ کام پورے طور پر ہوگا تب انہیں پورا بھروسہ ہے کہ آبادی کو کنٹرول کیا جاسکے گا ۔ انہوں نے کہا کہ ان کی ذاتی رائے ہے کہ سال 2040 تک آبادی میں اضافہ کی شرح ایسی نہیں رہے گی اور اس کے بعد اس میں کمی آئے گی ۔

      وزیراعلیٰ نے کہا کہ ” بہت لوگوں کو لگتا ہے کہ قانون بنا دیں گے تو اس سے ہی آبادی کنٹرول ہوجائے گی ، یہ ان کی سوچ ہے ، لیکن ہماری حکومت کی سوچ بہت صاف ہے اور ہم اسی پر کام کر رہے ہیں ۔ اس کا اثر سبھی کمیونٹی پر پڑے گا ۔ انہوں نے کہاکہ جب خواتین پڑھی ۔ لکھی ہوں گی تب وہ کسی بھی کمیونٹی سے ہوں فرٹیلیٹی شرح کم ہوگی ہی ۔

      وزیر علی نے کسی کا نام لئے بغیر طنز کرتے ہوئے کہا کہ ویسے اکا ۔ دکا لوگ تو ہوتے ہی ہیں ۔ کبھی ۔ کبھی تو آپ لوگ بھی دیکھتے ہی ہیں کہ پڑھے ۔ لکھے لوگ بھی زیادہ بچہ پیدا کئے ہیں ۔ انہوں نے کہاکہ ہم قانون کے بہت حق میں نہیں ہیں ، لیکن یہ بھی دعویٰ نہیں کر رہے ہیں کہ خواتین کے پڑھ لکھ جانے سے ہر کنبہ میں فرٹیلیٹی شرح کی کمی آہی جائے گی ۔ میرا ماننا ہے کہ ایک ۔ دو کو چھوڑ کر زیادہ کنبوں میں اس کا اثر پڑے گا ۔

      وزیراعلیٰ نے کہا کہ بہار میں فرٹیلیٹی شرح کا تیزی سے کم ہونا کوئی معمولی بات نہیں ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ویسے مختلف ریاستوں کی اپنی اپنی سوچ ہے وہ اپنے اپنے ڈھنگ سے کریں ، لیکن بہار کا یہ تجربہ رہا ہے کہ خواتین کی تعلیم پر زور دے کر ہی آبادی پر کنٹرول کی تدبیر کافی موثر ہوگی ۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: