ہوم » نیوز » مشرقی ہندوستان

LJP Split: صدر عہدہ پر چراغ پاسوان کا دعوی ، چچا پشوپتی سمیت پانچ ممبران پارلیمنٹ کو پارٹی سے کیا باہر

Bihar Politics: چراغ پاسوان نے اپنے چچا پشوپتی پارس سمیت سبھی پانچ ممبران پارلیمنٹ کو پارٹی سے باہر کردیا ہے ۔

  • Share this:
LJP Split: صدر عہدہ پر چراغ پاسوان کا دعوی ، چچا پشوپتی سمیت پانچ ممبران پارلیمنٹ کو پارٹی سے کیا باہر
LJP Split: صدر عہدہ پر چراغ پاسوان کا دعوی ، چچا پشوپتی سمیت پانچ ممبران پارلیمنٹ کو پارٹی سے کیا باہر ۔

پٹنہ : لوک جن شکتی پارٹی میں پاور اور عہدہ کیلئے جاری رسہ کشی مزید تیز ہوگئی ہے ۔ منگل کو چراغ پاسوان نے ایل جے پی ایگزیکٹیو کمیٹی کی ورچوئل میٹنگ کی ۔ اس دوران بڑا فیصلہ لیتے ہوئے چراغ پاسوان نے بغاوت کرنے والے اپنے چچا پشوپتی پارس سمیت سبھی پانچ اراکین پارلیمنٹ کو پارٹی سے باہر کا راستہ دکھا دیا ۔ اس کے بعد ہی چراغ نے پارٹی کے صدر کے عہدہ پر بھی اپنا دعوی پیش کیا ہے ۔ ادھر ایل جے پی کی قومی ایگزیکٹیو کمیٹی کی میٹنگ میں سورج بھان سنگھ کو کارگزار صدر منتخب کیا گیا ہے ۔ مانا جارہا ہے کہ پانچ دنوں کے اندر قومی صدر کے عہدہ کا الیکشن ہوگا ۔ فی الحال سورج بھان سنگھ کی صدرت میں میٹنگ ہوگی ۔ ایک دو دن میں قومی ایگزیکٹیو کمیٹی کی میٹنگ ہوسکتی ہے ۔ پارلیمانی پارٹی کے لیڈر کے بعد اب چراغ پاسوان کو ایل جے پی کے قومی صدر کے عہدہ سے بھی ہٹادیا گیا ہے ۔


سورج بھان کو کارگزار صدر بنایا گیا ہے ۔ اگلے دو تین دنوں میں پٹنہ میں میٹنگ کرکے پشوپتی پارس کو ایل جے پی کا نیا صدر بنایا جاسکتا ہے ۔ ادھر ایل جے پی کے اندر جاری گھمسان کے درمیان چراغ خیمہ پارٹی اور پاور کو بچانے کی کوشش میں مصروف ہوگیا ہے ۔ چراغ پاسوان کی دہلی میں واقع رہائش گاہ پر پیر کی دیر رات تک میٹنگوں کا سلسلہ جاری رہا جو منگل کو بھی جاری ہے ۔


ادھر پارٹی میں جاری کھینچ تان کے درمیان اب پہلی مرتبہ چراغ پاسوان نے اپنی خاموشی توڑی ہے ۔ انہوں نے ایک ٹویٹ کرکے پشوپتی پارس کو لکھے کچھ پرانے خطوط شیئر کئے ۔ اس کے ساتھ ہی انہوں نے لکھا کہ پاپا کی بنائی اس پارٹی اور اپنے کبنہ کو ساتھ رکھنے کی میں نے کوشش کی ، لیکن ناکام رہا ۔ پارٹی ماں کے برابر ہے اور ماں کے ساتھ دھوکہ نہیں کرنا چاہئے ۔ جمہوریت میں عوام سب سے اوپر ہیں ۔ انہوں نے مزید لکھا کہ پارٹی میں یقین رکھنے والے لوگوں کا میں شکریہ ادا کرتا ہوں ۔


اپنے ٹویٹ کے ساتھ ہی شیئر کئے گئے خطوط وہ ہیں جو چراغ نے پشوپتی پارس کو 29 مارچ کو لکھے تھے ۔ ان خطوط میں چراغ نے پارس کو لکھا کہ رام چندر پاسوان کی موت کے بعد سے ہی آپ میں تبدیلی دیکھنے کو ملی ۔ پاپا کی تیرہویں میں بھی 25 لاکھ روپے ماں کو دینے پڑے ، اس سے میں دکھی تھا ۔ چراغ نے ایک خط میں لکھا ہے کہ میں نے ہمیشہ بھائیوں کو ساتھ لے کر چلنے کی کوشش کی ۔ پاپا کے جانے کے بعد آپ نے بات کرنی بند کردی ۔

وہیں چراغ نے ایک خط میں الزام لگایا ہے کہ پاپا کے رہتے ہوئے بھی آپ نے پارٹی توڑنے کی کوشش کی ۔ پرنس راج پر آبروریزی کے معاملہ پر ذکر کرتے ہوئے چراغ نے کہا کہ پرنس پر الزامات کے دوران بھی میں کنبہ کے ساتھ کھڑا رہا ۔
Published by: Imtiyaz Saqibe
First published: Jun 15, 2021 06:29 PM IST