உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    لاوڈ اسپیکر تنازع پر CM نتیش کمار کا بڑا بیان، کہا: یہ سب بے کار کی باتیں ہیں، ہم لوگ مذہب میں مداخلت نہیں کرتے

    لاوڈ اسپیکر تنازع پر CM نتیش کمار کا بڑا بیان، کہا: یہ سب بے کار کی باتیں ہیں، ہم لوگ مذہب میں مداخلت نہیں کرتے ۔ تصویر : CMO  بہار ٹویٹر ۔

    لاوڈ اسپیکر تنازع پر CM نتیش کمار کا بڑا بیان، کہا: یہ سب بے کار کی باتیں ہیں، ہم لوگ مذہب میں مداخلت نہیں کرتے ۔ تصویر : CMO بہار ٹویٹر ۔

    CM Nitish On Loudspeaker Controversy: لاؤڈ اسپیکر تنازع پر بہار کے وزیر اعلی نتیش کمار نے بڑا بیان دیا ہے۔ انہوں نے اس سارے تنازع کو بے کار قرار دیتے ہوئے کہا کہ وہ مذہبی معاملات میں مداخلت نہیں کرتے ہیں ۔

    • Share this:
      پورنیہ : لاؤڈ اسپیکر تنازع پر بہار کے وزیر اعلی نتیش کمار نے بڑا بیان دیا ہے۔ انہوں نے اس سارے تنازع کو بے کار قرار دیتے ہوئے کہا کہ وہ مذہبی معاملات میں مداخلت نہیں کرتے ہیں ۔ وزیر اعلی نتیش کمار کا یہ بیان ایسے وقت میں آیا ہے جب بی جے پی مسلسل مساجد سے لاؤڈ اسپیکر ہٹانے کا مطالبہ کر رہی ہے۔ ریاستی بی جے پی کے کئی بڑے لیڈروں نے یوگی ماڈل کو بہار میں لاگو کرنے کی بات بھی کی ہے۔ وہیں جے ڈی یو مسلسل بی جے پی کے مطالبہ سے دوری بنائے ہوئے تھی۔ اب خود وزیر اعلیٰ نتیش کمار نے بھی اس پر ریاستی حکومت کا موقف واضح کردیا ہے۔ بتا دیں کہ بی جے پی مسلسل مساجد سے لاؤڈ اسپیکر ہٹانے کا مطالبہ کر رہی ہے۔ ساتھ ہی حکومت پر اس حوالے سے دباؤ ڈالنے کی بھی کوشش کر رہی ہے۔

       

      یہ بھی پڑھئے : پاکستانی شہریوں کے جرائم سے پریشان ہوا ترکی، اٹھایا یہ بڑا قدم، بند کردی یہ سروس


      وزیر اعلیٰ ہفتہ کو پریرا میں ایتھنول پلانٹ کا افتتاح کرنے پورنیہ پہنچے تھے۔ ان کے ساتھ بہار کے وزیر صنعت شاہنواز حسین بھی تھے۔ اس موقع پر جب وزیر اعلیٰ نتیش کمار سے لاؤڈ اسپیکر تنازع پر سوال پوچھا گیا تو انہوں نے کہا : 'یہ سب فضول باتیں ہیں۔ ایتھنول کے بارے میں بات کریں… اس بات کو چھوڑیں (لاؤڈ اسپیکر کا تنازعہ)۔ بہار میں اس پر ہمارا کیا موقف ہے، یہ سب کو معلوم ہے۔ ہم کسی مذہب کے بیچ میں مداخلت نہیں کرتے۔ یہاں تمام مذاہب کو اپنا کام کرنے کی اجازت ہے۔‘‘ وزیر اعلیٰ نتیش کمار کا یہ بیان ایسے وقت میں آیا ہے جب بہار میں مساجد سے لاؤڈ اسپیکر ہٹانے کا معاملہ زور پکڑ رہا ہے۔

       

      یہ بھی پڑھئے : PM مودی کا مشورہ، مقامی زبان میں ہو عدالتی کارروائی، تب عدالتی نظام سے جڑا ہوا محسوس کریں گے لوگ


      بی جے پی کے لیڈر مساجد سے لاؤڈ سپیکر ہٹانے کے لیے اپنی طرف سے مسلسل دلیلیں دے رہے ہیں۔ بہار کے وزیر جنک رام نے کہا تھا کہ جب ہولی اور دیوالی کے موقع پر ڈی جے اور تیز رفتار گاڑیوں پر پابندی لگائی جا سکتی ہے تو مساجد کے لاؤڈ اسپیکر پر بھی پابندی لگنی چاہئے۔

      جنک رام نے یہاں تک کہا تھا کہ لاؤڈ اسپیکر سے پڑھنے والے بچوں اور دوسرے لوگوں کو دشواری ہوتی ہے۔ بحیثیت وزیر اور عوامی نمائندہ مجھے اس بارے میں شکایات آتی رہتی ہیں ، اس لئے میں اسے سامنے رکھ رہا ہوں۔ جے ڈی یو لیڈر اور بہار کے ایک اور وزیر شراون کمار نے اس سے اختلاف کیا تھا ۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: