ہوم » نیوز » مشرقی ہندوستان

اب لالو کے بیٹے کے ساتھ نظر آیا صحافی راجدیو رنجن کے قتل کا ملزم

سیوان کے مافیا ڈان شہاب الدین کی فرار شارپ شوٹر کے ساتھ تصویر پر جم کر ہنگامہ مچا ہوا ہے ۔ محمد کیف عرف بنٹی نام کے اس شارپ شوٹر پر صحافی راجدیو رنجن کے قتل کا الزام ہے ۔

  • IBN7
  • Last Updated: Sep 14, 2016 10:02 AM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
اب لالو کے بیٹے کے ساتھ نظر آیا صحافی راجدیو رنجن کے قتل کا ملزم
سیوان کے مافیا ڈان شہاب الدین کی فرار شارپ شوٹر کے ساتھ تصویر پر جم کر ہنگامہ مچا ہوا ہے ۔ محمد کیف عرف بنٹی نام کے اس شارپ شوٹر پر صحافی راجدیو رنجن کے قتل کا الزام ہے ۔

نئی دہلی : سیوان کے مافیا ڈان شہاب الدین کی فرار شارپ شوٹر کے ساتھ تصویر پر جم کر ہنگامہ مچا ہوا ہے ۔  محمد کیف عرف بنٹی نام کے اس شارپ شوٹر پر صحافی راجدیو رنجن کے قتل کا الزام ہے ۔ بہار پولیس کو اس کی زور شور سے تلاش ہے ، لیکن اب شارپ شوٹر کیف کی ایک اور تصویر سامنے آئی ہے، جس میں وہ بہار کے وزیر صحت تیج پرتاپ یادو کے ساتھ نظر آ رہا ہے ۔ تاہم یہ تصویر کب کی ہے ، اس کی صحیح معلومات آئی بی این 7 کے پاس نہیں ہے ۔


منگل کو مافیا ڈان شہاب الدین اور فرار شارپ شوٹر کی تصاویر پر جم کر ہنگامہ ہوا ۔ ہفتہ کو شہاب الدین بھاگلپور جیل سے رہا ہوئے تھے ۔ اس دوران صحافی راجدیو رنجن کے قتل کا ملزم شارپ شوٹر بھی شہاب الدین کے ساتھ نظر آیا  ۔


وہیں شارپ شوٹر محمد کیف کی ایک اور تصویر سامنے آئی ہے، جس میں وہ آر جے ڈی کے صدر لالو یادو کے بیٹے اور بہار کے وزیر صحت تیج پرتاپ یادو کو پھولوں کا گلدستہ دیتے ہوئے نظر آ رہا ہے ۔ اگرچہ یہ تصویر کب کی ہے ، اس بارے میں صاف طور پر کوئی معلومات نہیں ہے، لیکن ان دو تصاویر سے اتنا تو واضح ہو جاتا ہے کہ مفرور شارپ شوٹر کوئی چھوٹا موٹا مجرم نہیں ہے بلکہ سیاسی گلیاروں میں اس کی پہنچ کافی دور تک ہے ۔


الزام ہے کہ محمد کیف نے ہی سیوان کے صحافی راجدیو رنجن کا قتل کیا تھا ۔ تب الزام لگا تھا کہ راجدیو کا قتل شہاب الدین کے اشارے پر کیا گیا تھا ۔ راجدیو کے قتل کے بعد سے ہی بہار پولیس کیف کو تلاش رہی ہے، لیکن وہ ہفتہ کو کھلے عام شہاب الدین کے ساتھ نظر آیا ۔

شہاب الدین کے ساتھ کیف کی تصویر میڈیا میں آنے کے بعد سیوان کے ایس پی کا کہنا ہے کہ جلد ہی اسے گرفتار کر لیا جائے گا ۔ ادھر صحافی راجدیو رنجن کی بیوہ آشا رنجن کے مطابق ان ملزموں پر پولیس کی نظر کیوں نہیں پڑی؟ میں یہی کہوں گی کی ان کو ریمانڈ پر لے کر ان کے خلاف کارروائی ہونی چاہئے ۔
First published: Sep 14, 2016 10:02 AM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading