ہوم » نیوز » مشرقی ہندوستان

کیا آگسٹا ویسٹ لینڈ سودا معاملے میں سونیا کا ساتھ دے رہے ہیں نتیش؟ شاہنواز حسین

پٹنہ۔ بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) نے کہا کہ بہار کے وزیر اعلی اور جنتا دل (یو) کے قومی صدر نتیش کمار نے بوفورس گھوٹالے کے معاملے کو زووردار ڈھنگ سے اٹھایا تھا اور اب انہیں اگستا ویسٹ لینڈ ہیلی کاپٹر کے معاملے میں بھی اپنی خاموشی توڑنی چاہئے۔

  • UNI
  • Last Updated: Apr 29, 2016 11:35 AM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
کیا آگسٹا ویسٹ لینڈ سودا معاملے میں سونیا کا ساتھ دے رہے ہیں نتیش؟ شاہنواز حسین
بی جے پی کے قومی ترجمان شاہنواز حسین: فائل فوٹو

پٹنہ۔  بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) نے   کہا کہ بہار کے وزیر اعلی اور جنتا دل (یو) کے قومی صدر نتیش کمار نے بوفورس گھوٹالے کے معاملے کو زووردار ڈھنگ سے اٹھایا تھا اور اب انہیں اگستا ویسٹ لینڈ ہیلی کاپٹر کے معاملے میں بھی اپنی خاموشی توڑنی چاہئے۔ بی جے پی کے قومی ترجمان اور سابق مرکزی وزیر شاہنواز حسین نے یہاں پارٹی کے ریاستی دفتر میں منعقدہ پریس کانفرنس میں کہا کہ بدعنوانی کے خلاف بڑی بڑی تحریکیں چلائی گئیں اور بہار سے ہی تحریکیں تیز ہوئیں۔ بوفورس گھپلہ کے وقت مسٹر کمار نے بھی آواز اٹھائی تھی۔ انہوں نے کہاکہ اگستا معاہدے میں کانگریس کی سربراہ محترمہ سونیا گاندھی کا نام آیا ہے اور اس پر مسٹر کمار خاموش کیوں ہیں؟ بی جے پی کے قومی ترجمان نے کہاکہ اگستا معاہدہ کے معاملے میں ہندستان کی عدالت نے نہیں بلکہ اٹلی کی عدالت نے کانگریس سربراہ کے خلاف انگلی اٹھائی ہے۔ اٹلی میں نہ تو وزیر اعظم نریندر مودی کی حکومت ہے اور نہ ہی بی جے پی کا اثر ہے۔ انہوں نے کہاکہ اٹلی کی عدالت نے شواہد اور ثبوتوں کی بنیاد پر ہی کانگریس سربراہ اور ان کے لیڈروں پر الزام لگایا ہے۔


مسٹر حسین نے کہاکہ کانگریس کی معیاد کارمیں ٹو جی اسپیکٹرم اور کوئلہ سمیت کئی بڑے۔بڑے گھپلے ہوئے۔ بوفورس گھپلہ سے بھی بڑا گھپلہ اگستا معاملہ اس وقت ملک میں موضوع بحث ہے۔ انہوں نے کہاکہ اگستا سودا کے معاملے کی تفتیش چل رہی ہے اور کانگریس بچ نہیں سکتی ہے۔ بی جے پی کے قومی ترجمان نے کہا کہ بدعنوانی کے خلاف خود کو چمپئن سمجھنے والے وزیر اعلی مسٹر کمار اب ایک پارٹی کے قومی صدر بھی ہیں اور اب اس لئے انہیں اس معاملے پر خاموشی توڑنی چاہئے۔


انہوں نے سوالیہ لہجے میں کہاکہ بہار کے عوام جاننا چاہتے ہیں کہ اگستا سودا معاملے کا انکشاف ہونے کے بعد بھی کیا مسٹر کمار کانگریس سے رشتہ رکھیں گے؟ مسٹر حسین نے کہا کہ وزیر اعلی مسٹر کمار جب گاؤں گاؤں کے لوگوں کو شراب پلا رہے تھے تب ان کی پارٹی اس پر پابندی لگانے کا مطالبہ کرتی تھی۔ انہوں نے ریاست میں مکمل شراب بندی کا خیرمقدم کرتے ہوئے کہاکہ بہار شراب سے پاک ہولیکن وہ چاہتے ہیں کہ نشہ سے پاک بہار بنے‘۔ ریاست میں گٹکھا سمیت صحت کیلئے نقصان دہ دیگر تمام چیزوں پر پابندی لگا دی گئی لیکن سختی کے ساتھ اس پر عمل نہیں ہو رہا ہے۔

First published: Apr 29, 2016 11:35 AM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading