ہوم » نیوز » مشرقی ہندوستان

مغربی بنگال میں جلد ہی شہریت ترمیمی قانون لاگو کیا جائے گا : کیلاش وجے ورگیہ

بی جے پی کے مغربی بنگال انچارج کیلاش وجے ورگیہ شمالی 24 پرگنہ ضلع کے ٹھاکرنگر میں نامہ نگاروں سے گفتگو کررہے تھے ، جہاں زیادہ تر متوا کمیونٹی کے لوگ رہتے ہیں ۔ حالانکہ انہوں نے این آر سی کو لے کر کچھ نہیں کہا ۔

  • Share this:
مغربی بنگال میں جلد ہی شہریت ترمیمی قانون لاگو کیا جائے گا : کیلاش وجے ورگیہ
مغربی بنگال میں جلد ہی شہریت ترمیمی قانون لاگو کیا جائے گا : کیلاش وجے ورگیہ

بی جے پی کے قومی جنرل سکریٹری کیلاش وجے ورگیہ نے ہفتہ کو کہا کہ مغربی بنگال میں جلد ہی شہریت ترمیمی قانون ( سی اے اے) لاگو کیا جائے گا ۔ بی جے پی کے مغربی بنگال انچارج کیلاش وجے ورگیہ شمالی 24 پرگنہ ضلع کے ٹھاکرنگر میں نامہ نگاروں سے گفتگو کررہے تھے ، جہاں زیادہ تر متوا کمیونٹی کے لوگ رہتے ہیں ۔ حالانکہ انہوں نے این آر سی کو لے کر کچھ نہیں کہا ۔ انہوں نے کہا کہ مغربی بنگال حکومت اگر سی اے اے کی مخالفت کرتی ہے ، تب بھی ہم اس کو لاگو کریں گے ۔ ریاست اگر اس کی حمایت کرے گی تو اچھا رہے گا ۔


پارٹی کے قومی صدر جے پی نڈا نے حال ہی میں ریاست کا دورہ کیا تھا اور کہا تھا کہ اس قانون کو لاگو کرنے کیلئے ضوابط بنائے جارہے ہیں ۔ این آر سی لاگو کرنے کے بارے میں ایک سوال کے جواب میں کیلاش وجے ورگیہ نے کہا کہ ہم یہاں سی اے اے لاگو کرنے کی بات کررہے ہیں ۔


وہیں بنگاوں سے بی جے پی ممبر پارلیمنٹ شانتنو ٹھاکر نے بعد میں نامہ نگاروں سے کہا کہ ہم مرکزی وزیر داخلہ امت شاہ کے ٹھاکرنگر دورہ کا انتظار کریں گے جب وہ سی اے اے لاگو کرنے کا اعلان کریں گے ۔


ٹھاکر متوا کمیونٹی سے ہیں ۔ ریاست میں اس کمیونٹی کی اچھی خاصی آبادی ہے ۔ یہ ہندو پناہ گزینوں کی نچلی ذات ہے ، جو ملک کی تقسیم کے دوران اور بعد کی دہائیوں میں پڑوسی ملک بنگلہ دیش سے آئے ہیں ۔ متوا کمیونٹی مقامی شہریت کی کافی عرصہ سے مطالبہ کرتی رہی ہے ۔ پارٹی ذرائع نے بتایا کہ کیلاش وجے ورگیہ اور ٹھاکر نے امت شاہ کے ٹھاکر نگر کے مجوزہ دورے کے بارے میں گفتگو کی ہے ۔
Published by: Imtiyaz Saqibe
First published: Dec 13, 2020 08:56 AM IST