ہوم » نیوز » مشرقی ہندوستان

مشہوراداکارہ کا بی جے پی سےاستعفیٰ، کہا- ایسی پارٹی میں نہیں رہ سکتی جس میں انوراگ اورکپل مشرا جیسےلیڈرہوں

اداکارہ نےکہا کہ دیکھئے دہلی میں کیا ہورہا ہے۔ کئی لوگ مار دیئے گئے اورکئی گھروں میں آگ لگا دی گئی۔ فساد نے لوگوں کو تقسیم کردیا۔ پارٹی کےلیڈرانوراگ ٹھاکر اورکپل مشرا کی سخت اور اشتعال انگیز تقریر کے خلاف کوئی بھی کارروائی نہیں کر رہا ہے۔

  • Share this:
مشہوراداکارہ کا بی جے پی سےاستعفیٰ، کہا- ایسی پارٹی میں نہیں رہ سکتی جس میں انوراگ اورکپل مشرا جیسےلیڈرہوں
اداکارہ نےکہا کہ وہ ایسی پارٹی سے دوری بنانا پسند کریں گی، جس میں انوراگ ٹھاکر اور کپل مشرا جیسے لوگ ہوں۔ تصویر: پی ٹی آئی

کولکاتا: دارالحکومت دہلی کے شمال مشرقی ضلع میں ہوئے فسادات میں 40 لوگوں کی موت ہوگئی۔ اس درمیان 2013 میں بی جے پی میں شامل ہوئی ایک مشہوراداکارہ نے پارٹی چھوڑ دی ہے۔ سبھدرا مکھرجی نام کی مشہور بنگالی اداکارہ نےکئی فلموں اور ٹی وی سیریل میں کام کیا ہے۔ انہوں نے اپنےاس فیصلےکے بارے میں کہا کہ یہ کافی انتظارکرنےکے بعد اٹھایا گیا قدم ہے۔ سبھدرا مکھرجی نےکہا کہ میں نے2013 میں بی جے پی جوائن کی تھی اور مجھے پارٹی کےکام نے متاثرکیا تھا، لیکن گزشتہ کچھ سالوں میں، میں نے غورکیا کہ کچھ چیزیں ٹھیک نہیں ہورہی ہیں۔ میں نے محسوس کیا کہ لوگوں سے مذہب کی بنیاد پر نفرت کرنا اور ان کےلئے رائےقائم کرنا بی جے پی کے نظریے پرحاوی ہوگیا ہے۔ اس پرکئی بارغورکرنےکے بعد، میں نے پارٹی چھوڑنےکا فیصلہ کیا ہے۔ اداکارہ نےکہا کہ انہوں نے بنگال بی جے پی کے صدر دلیپ گھوش کو اپنا استعفیٰ بھیج دیا ہے۔

 انوراگ ٹھاکر، کپل مشرا کی تقریر پر اٹھائے سوال

اداکارہ نےکہا کہ دیکھئے دہلی میں کیا ہورہا ہے۔ کئی لوگ ماردیئےگئے اورکئی گھروں میں آگ لگا دی گئی۔ فساد نے لوگوں کو تقسیم کردیا۔ پارٹی کے لیڈر انوراگ ٹھاکر اورکپل مشرا کی سخت اور اشتعال انگیز تقریرکے خلاف کوئی بھی کارروائی نہیں کر رہا ہے،کیا ہورہا ہے۔ فسادات کے منظر نے مجھے پوری طرح سے ہلادیا۔ مجھےلگا کہ مجھےایسی پارٹی میں نہیں ہونا چاہئے، جو اپنی ہی پارٹی کےلیڈروں کےخلاف کارروائی کرنے میں پس وپیش میں ہو۔ انہوں نےکہا کہ وہ ایسی پارٹی سے دوری بنانا پسندکریں گی، جس میں انوراگ ٹھاکر اورکپل مشرا جیسےلوگ ہوں۔



سبھدرا مکھرجی نےکہا کہ میں نے2013 میں بی جے پی جوائن کی تھی اور مجھے پارٹی کےکام نےمتاثر کیا تھا۔ فائل فوٹو
سبھدرا مکھرجی نےکہا کہ میں نے2013 میں بی جے پی جوائن کی تھی اور مجھے پارٹی کےکام نےمتاثر کیا تھا۔ فائل فوٹو



سی اے اے پر اداکارہ نے کہی یہ بات

متنازعہ شہریت ترمیمی قانون کو لےکر انہوں نےکہا کہ پڑوسی ممالک میں جو لوگ متاثر ہیں، انہیں شہریت دینےکا فیصلہ کافی اچھا ہے، لیکن انہیں شہریت دینےکے نام پر آپ ہر ایک ہندوستانی کی جان سے کیوں کھیل رہے ہو۔ کیوں اچانک ہمیں اپنی شہریت ثابت کرنےکی ضرورت ہے۔ میں اس قدم کی مذمت کرتی ہوں۔ مجھے لگتا ہےکہ یہ انسانیت کا قتل کرکے اسروں کو جنم دے رہے ہیں۔ اس قدم سے لوگوں کے دل میں عدم تحفظ کا جذبہ پیدا ہوگا۔ اس سے نہ صرف دہلی میں بلکہ پورے ملک میں بدامنی پھیلےگی۔
First published: Feb 29, 2020 06:27 PM IST