உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    ذات پر مبنی مردم شماری پر پی ایم مودی سے مل کر خوش نظر آئے نتیش کمار، تجسوی اور مانجھی نے کہی یہ بڑی بات

    Youtube Video

    Caste Census: اس درمیان آج یعنی پیر کو سی ایم نتیش کمار (CM Nitish Kumar) سمیت 10 پارٹیوں کے 11 رکنی وفد نے وزیر اعظم نریندر مودی سے ملاقات کی ہے۔ بہار کے سی ایم نے کہا کہ وزیر اعظم نے ہماری پوری بات سنی۔ ہر ایک نے ذات پر مبنی مردم شماری کے حق میں ایک ایک بات کہی ہے۔ .

    • Share this:
      پٹنہ۔ گزشتہ کئی دنوں سے بہار میں  ذات پرمبنی مردم شماری (Caste Census)  کرانے کے لیے سیاسی پارہ بڑھ گیا ہے۔ اس درمیان آج یعنی پیر کو  سی ایم نتیش کمار (CM Nitish Kumar) سمیت 10 پارٹیوں کے 11 رکنی وفد نے وزیر اعظم نریندر مودی سے ملاقات کی ہے۔ بہار کے سی ایم نے کہا کہ وزیر اعظم نے ہماری پوری بات سنی۔ ہر ایک نے ذات پر مبنی مردم شماری کے حق میں ایک ایک بات کہی ہے۔ انہوں نے ہماری بات سے انکار نہیں کیا ، ہم نے کہا ہے کہ آپ اس پر غور کرنے کے بعد کوئی فیصلہ کریں۔ ساتھ ہی  آر جے ڈی لیڈر تیجسوی یادو اور بہار کے سابق سی ایم جیتن رام مانجھی بھی پی ایم مودی  (PM Narendra Modi)  کے ذریعے  ذات پر مبنیکی مردم شماری کے معاملے کو سنجیدگی سے سن کر خوش ہوئے۔
      بہرحال پی ایم مودی سے ملاقات کے بعد سی ایم نتیش کمار نے کہا کہ 10 پارٹیوں کے 11 افراد نے پی ایم سے ملاقات کی ہے۔ بہار کی تمام جماعتیں ذات پر مبنی  مردم شماری کے حوالے سے ایک رائے ہیں۔ ہم لوگوں نے ان کے ساتھ ہر قسم کی باتیں کیں۔ انہوں نے ہماری بات سنجیدگی سے سنی ہے۔ تاہم انہوں نے اس حوالے سے کوئی فیصلہ نہیں کیا۔ اس کے ساتھ نتیش کمار نے کہا کہ جیسے ہی اس معاملے پر کوئی بات ہوگی۔ ہر کسی کو اس کے بارے میں معلومات مل جائے گی۔
      تیجسوی یادو نے کہی یہ بات
      ذات پر مبنی مردم شماری کے حوالے سے وزیر اعظم نریندر مودی سے ملنے کے بعد آر جے ڈی لیڈر تیجسوی یادو نے کہا کہ پی ایم نے سنجیدگی سے ہماری بات سنی ہے، اب ہم ان کے فیصلے کا انتظار کر رہے ہیں۔ اس کے ساتھ ، انہوں نے کہا کہ ذات پر مبنی مردم شماری کا کام قومی کے حق میں ہے اور اسی وجہ سے بہار کی 10 جماعتوں نے مل کر پی ایم مودی سے ملاقات کی۔ یہ ایک تاریخی کام ہوگا۔ اس کے ساتھ تیجسوی نے کہا کہ بہار قانون ساز اسمبلی میں ذات پر مبنی مردم شماری کی تجویز دو مرتبہ منظور کی گئی اور آخری ذات پر مبنی مردم شماری 1931 میں

      ہوئی۔ اس سے پہلے 10-10 سالوں میں ذاتپر مبنی مردم شماری ہوتی رہی۔ مردم شماری سے درست اعداد و شمار سامنے آئیں گے تاکہ ہم بجٹ میں لوگوں کے لیے منصوبہ بندی کر سکتے ہیں۔
      اس کے علاوہ تیجسوی یادو نے وزیر اعلیٰ نتیش کمار کا شکریہ ادا کیا اور کہا کہ انہوں نے وزیر اعظم مودی سے وقت مانگا اور اب ہم ان کے فیصلے کا انتظار کریں گے۔ قومی مسئلے پر ہم سب ایک ہیں۔ اس سے پہلے  کورونا کے دور میں بھی ، ہم نے وزیراعلیٰ سے کہا تھا کہ ہم آپ کے ساتھ ہیں۔

      Jitan Ram Manjhi,जीतन राम मांझी, बिहार राजनीति, Bihar Politics
      جیتن رام مانجھی: جلد ہی کوئی فیصلہ کیا جائے گا۔


      بہار کے سابق وزیر اعلیٰ جیتن رام مانجھی نے کہا ، 'ہم نے وزیر اعظم سے کہا ہے کہ کسی بھی صورت میں ذات ہر مبنی مردم شماری کروائیں ، یہ ایک تاریخی فیصلہ ہوگا۔ انہوں نے بہت سنجیدگی سے ہماری بات سنی ہے ، اس لیے ہمیں لگتا ہے کہ جلد ہی کوئی فیصلہ کیا جائے گا۔
      Published by:Sana Naeem
      First published: