உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    سیٹوں کی تقسیم پرچراغ پاسوان نے بی جے پی کو آنکھ دکھاتے ہوئے کہا "اتحاد کو ہوسکتا ہے نقصان"۔

    چراغ پاسوان (بائیں) درمیان میں بی جے پی کے قومی صدر امت شاہ اوردائیں رام ولاس پاسوان

    چراغ پاسوان (بائیں) درمیان میں بی جے پی کے قومی صدر امت شاہ اوردائیں رام ولاس پاسوان

    اوپیندرکشواہا کے این ڈی اے چھوڑنے اوربی جے پی کی تین ریاستوں میں شکست کے بعد این ڈی اے میں ناراضگی ابھرنے کا واضح اشارہ مل گیا ہے اورلوک جن شکتی پارٹی کی ناراضگی بی جے پی کو بھاری پڑسکتی ہے۔

    • Share this:
      اوپیندرکشواہا کے این ڈی اے چھوڑنے اوربی جے پی کی تین ریاستوں میں شکست کے بعد قومی جمہوری اتحاد (این ڈی اے) میں ناراضگی ابھرنے کے اشارے مل رہے ہیں۔ منگل کی دیرشام 8:02 اور 8:14 بجے ایل جے پی ممبرپارلیمنٹ چراغ پاسوان کے کئے گئے دو ٹوئٹ نے اسے مزید پختہ کردیا ہے۔

      پہلے ٹوئٹ میں انہوں نے لکھا "ٹی ڈی پی اورآرایل ایس پی کے این ڈی اے سے جانے کے بعد این ڈی اے اتحاد نازک موڑسے گزررہا ہے۔ ایسے وقت میں بھارتیہ جنتا پارٹی اتحاد میں فی الحال بچے ہوئے ساتھیوں کی فکرکووقت رہتے باعزت طریقے سے دورکرے"۔

      وہیں چراغ پاسوان نے دوسرا ٹوئٹ کچھ دھمکی آمیز انداز میں کیا اورلکھا "اتحاد کی سیٹوں کو لے کرکئی باربی جے پی کے لیڈروں سے ملاقات ہوئی، لیکن ابھی تک کچھ ٹھوس بات آگے نہیں بڑھ پائی۔ اس موضوع پروقت رہتے بات نہیں بنی تواس سے نقصان ہوسکتا ہے"۔




      ظاہرہے کہ چراغ پاسوان کا یہ بیان سیٹ شیئرنگ میں زیادہ شراکت کو لے کرکیا گیا ہے۔ کشواہا کا این ڈی اے سے جانا اورتینوں ریاستوں میں ملی شکست کے بعد این ڈی اے کے اندریہ رسہ کشی آگے کیا گل کھلاتا ہے، یہ دیکھنا دلچسپ ہوگا۔  واضح رہے کہ لوک سبھا الیکشن سے قبل لوک جن شکتی پارٹی سیٹوں پرموقف واضح کرلینا چاہتی ہے، لیکن بی جے پی ابھی تک اس معاملے پرخاموشی اختیارکئے ہوئے ہے۔

      بی جے پی صدرامت شاہ پہلے ہی واضح طورپرکہہ چکے ہیں کہ بہارمیں بی جے پی اورنتیش کمارکی پارٹی جنتا دل (یونائیٹیڈ) برابرسیٹوں پرالیکشن لڑیں گی۔ ایسے میں لوک جن شکتی پارٹی کے لئے سیٹیں کم ہونا طے ہے۔
      First published: