ہوم » نیوز » مشرقی ہندوستان

دوسری ریاستوں سے بنگال آئے مزدوروں میں”ہائیڈروکسی کلوروکین“ کی گولیاں تقسیم کئے جانے پر ڈاکٹرس ایسوسی ایشن شدید برہم 

کورونا وائرس کے علاج میں ہائیڈرو کسی کلوروکین مفید ہونے کی خبر کے بعد مارچ میں ہی آئی سی ایم آر نے ہائیڈرو کسی کلوروکین کے اندھادھند استعمال پر متنبہ کیا تھا ۔

  • Share this:
دوسری ریاستوں سے بنگال آئے مزدوروں میں”ہائیڈروکسی کلوروکین“ کی گولیاں تقسیم کئے جانے پر ڈاکٹرس ایسوسی ایشن شدید برہم 
دوسری ریاستوں سے بنگال آئے مزدوروں میں”ہائیڈروکسی کلوروکین“ کی گولیاں تقسیم کئے جانے پر ڈاکٹرس ایسوسی ایشن شدید برہم 

مغربی بنگال میں ڈاکٹروں کی ایسوسی ایشن نے دوسری ریاستوں سے ٹرین کے ذریعہ لائے گئے مزدوروں کے درمیان اینٹی ملیریا دوا ”ہائیڈروکسی کلوروکین“ تقسیم کئے جانے پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے حکومت بنگال کو خط لکھ کر اس معاملہ میں وضاحت طلب کی ہے ۔ منگل کے دن اجمیر سے 12سو مزدور ٹرین کے ذریعہ لائے گئے تھے اور بدھ کو کیرالہ سے 1200 مزدور مرشدآباد پہنچے ۔ ان سب کے درمیان بنگال پہنچنے کے بعد ”ہائیڈروکسی کلوروکین“ دواتقسیم کی گئی ہے ۔


مرشدآباد ڈسٹرکٹ کے چیف میڈیکل افسر ہیلتھ ڈاکٹر پرسنتا بسواس نے بتایا کہ تمام مزدوروں کی جانچ کے بعد دوائیاں دی گئی ہیں ۔ ڈاکٹروں کی ایسوسی ایشن نے محکمہ صحت کے سکریٹری کے نام خط لکھ کر کہا ہے کہ مغربی بنگال محکمہ صحت نے 22 مارچ کو جاری ایڈوائزری میں کہا تھا کہ ”ہائیڈروکسی کلوروکین“ کی گولیاں ڈاکٹروں کے مشورے اور بیماری کی تشخیص کے بعد ہی دی جائے گی اور کورونا وائرس کے مریضوں کو یہ گولیاں دینے سے قبل مکمل طور پر اطمینان کرلینا چاہئے ۔ ڈاکٹروں کی ایسوسی ایشن نے کہا کہ جب ہم نے ٹیلی ویژن پر یہ خبر دیکھی ، تو ہم الجھن میں پڑ گئے کہ یہ گولیاں دوسری ریاستوں سے واپس آنے والے مہاجر مزدوروں کو دی جارہی ہیں ۔


فورم کے سکریٹری ڈاکٹر کوشک چاکی نے بتایا کہ ہم نے محکمہ صحت کے سکریٹری سے پوچھا ہے کہ کیا حکومت نے اپنے پہلے کے فیصلہ میں تبدیلی کی ہے ۔ اگر کی ہے تو پھر محکمہ صحت کی ویب سائٹ پر اس کی اطلاع کیوں نہیں دی گئی ہے ۔ ڈاکٹروں کی ایسوسی ایشن نے کہا کہ رجسٹرڈ میڈیکل پریکٹیشنرز کے ذریعہ ہی ہائیڈرو کسی کلوروکین کی تشخیص کی جاسکتی ہے ۔ کیوں کہ دوا کے منفی اثرات کا ڈر ہے ۔


کورونا وائرس کے علاج میں ہائیڈرو کسی کلوروکین مفید ہونے کی خبر کے بعد مارچ میں ہی آئی سی ایم آر نے ہائیڈرو کسی کلوروکین کے اندھادھند استعمال پر متنبہ کیا تھا ۔ کیوں کہ بڑی تعداد میں لو گ یہ دوائی خرید کر اسٹاک کررہے تھے ۔ 23 اپریل کو آئی سی ایم آر کے ایک عہدیدار نے کہا تھا کہ ہائیڈرو کسی کلوروکین کورونا کے ہرمریض کو نہیں دی جاسکتی ہے ، بلکہ کورونا کے شدید بیماروں کی دی جارہی ہے ۔ امریکی صدر ڈونالڈ ٹرمپ نے کہا تھا کہ کورونا کے مریضوں کیلئے  ہائیڈرو کسی کلوروکین کی دوائیاں کارآمد ہوسکتی ہیں اور انہوں نے ہندوستان کو دواسپلائی کرنے کیلئے کہا تھا اور دوا نہیں ملنے پر انہوں نے ہندوستان کو دھمکی بھی دی تھی ۔
First published: May 09, 2020 01:07 AM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading