ہوم » نیوز » مشرقی ہندوستان

کورونا بحران میں طلبہ سب سے زیادہ متاثر ، مالی تنگی کے باعث والدین کیلئے بچوں کا تعلیمی سلسلہ بحال رکھنا مشکل

لاک ڈان میں کام بند ہوجانے کی وجہ سے لوگ کسمپرسی کی زندگی گزار رہے ہیں ۔ طلبہ کے لئے تعلیمی سلسلہ جاری رکھنا مشکل ہورہا ہے ۔

  • Share this:
کورونا بحران میں طلبہ سب سے زیادہ متاثر ، مالی تنگی کے باعث والدین کیلئے بچوں کا تعلیمی سلسلہ بحال رکھنا مشکل
کورونا بحران میں طلبہ سب سے زیادہ متاثر ، مالی تنگی کے باعث والدین کیلئے بچوں کا تعلیمی سلسلہ بحال رکھنا مشکل

ملک میں جاری کورونا بحران کے دوران لاک ڈاون سے لوگ معاشی طور پر بے حال ہوگئے ہیں اور ضروریات زندگی کے خرچ کو پورا کرنا لوگوں کے لئے مشکل ہورہا ہے ۔ اس سب کا سب سے زیادہ اثر طلبہ پر پڑا ہے ۔ والدین جہاں بچوں کے اسکول کی فیس کی ادایٸگی سے قاصر ہیں ۔ وہیں بچوں کے لئے کتابوں کی خریداری بھی ایک بڑا مسئلہ ہے ۔ ماہرین کی مطابق لاک ڈاون کے بعد بیشتر بچوں کے لٸے تعلیمی سلسلہ جاری رکھنا مشکل ہوسکتا ہے ۔ ایسے میں ایک بار پھر اقلیتی طبقہ کو بڑھتے تعلیمی پسماندگی کے حالات کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے ۔


پروفیسر انیتا باسو کے مطابق بیشتر والدین اپنے بچوں کی تعلیم ختم کرنے پر مجبور ہیں ۔ انہوں نے اقلیتی طبقہ کی تعلیمی صورتحال کے حل کیلئے حکومت و سماجی تنظیموں کو آگے آنے کی ضرورت پر زور دیا ہے ۔ وہیں کئی طلبہ گروپس بھی اس صورتحال کے حل کیلئے سامنے آئے ہیں ۔ کولکاتہ میں طلبہ کے ایک گروپ نے نواب واجد علی شاہ کی نگری کے نام سے مشہور شہر کے مٹیابرج میں جہاں اقلیتوں کی بڑی آبادی ہے ، یہاں بیشتر لوگ درزی ،پتنگ بنانے اور ملوں میں مزدوری کا کام کرتے ہیں ۔




لاک ڈان میں کام بند ہوجانے کی وجہ سے یہاں لوگ کسمپرسی کی زندگی گزار رہے ہیں ۔ طلبہ کے لئے تعلیمی سلسلہ جاری رکھنا مشکل ہورہا ہے ۔ مٹیابرج یوتھ کے بینر تلے طلبہ تنظیم نے بچوں کی کونسلنگ کے ساتھ کتابیں فراہم کرنے کا سلسلہ شروع کیا ہے ۔ مٹیابرج یوتھ کی جانب سے لوگوں سے پرانی کتابیں بھی جمع کی جارہی ہیں ۔ تاکہ زیادہ سے زیادہ بچوں میں کتابیں تقسیم کی جاسکے ۔
Published by: Imtiyaz Saqibe
First published: Jul 20, 2020 10:20 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading