ہوم » نیوز » مشرقی ہندوستان

Cyclone Yaas:اڈیشہ اور مغربی بنگال میں طوفان یاس کو لیکرالرٹ،12اضلاع کے لیے وارننگ جاری

ممکنہ طور پر یہ طوفان 26 مئی تک اوڈیشہ و مغربی بنگال کے ساحل سے گزرے گا۔ جینا نے عہدیداروں کے ساتھ تیاری سے متعلق میٹنگ کے بعد صحافیوں کو بتایا کہ ’’ہم خلیج بنگال کے طوفان کا سامنا کرنے کے لئے پوری طرح تیار ہیں‘‘۔

  • Share this:
Cyclone Yaas:اڈیشہ اور مغربی بنگال میں طوفان یاس کو لیکرالرٹ،12اضلاع کے لیے وارننگ جاری
ممکنہ طور پر یہ طوفان 26 مئی تک اوڈیشہ و مغربی بنگال کے ساحل سے گزرے گا۔ جینا نے عہدیداروں کے ساتھ تیاری سے متعلق میٹنگ کے بعد صحافیوں کو بتایا کہ ’’ہم خلیج بنگال کے طوفان کا سامنا کرنے کے لئے پوری طرح تیار ہیں‘‘۔

اوڈیشہ حکومت نے  ریاست کے 12 اضلاع کے حکام کو انتباہ کیا کیونکہ 26 مئی کو ایک طوفانی اس کے ساحل سے ٹکرا سکتا ہے اور کہا ہے کہ وہ اس کا مقابلہ کرنے کے لئے تیار ہے۔خصوصی ریلیف کمشنر پی کے جینا (Special Relief Commissioner P K Jena) نے بتایا کہ اڈیشہ کو ہندوستانی محکمہ موسمیات (India Meteorological Department ) کی جانب سے خلیج بنگال میں ایک کم دباؤ والے علاقے کی تشکیل کی پیش گوئی کی گئی ہے، جو طوفان کی شکل اختیار کرسکتا ہے۔


ممکنہ طور پر یہ طوفان 26 مئی تک اوڈیشہ و مغربی بنگال کے ساحل سے گزرے گا۔ جینا نے عہدیداروں کے ساتھ تیاری سے متعلق میٹنگ کے بعد صحافیوں کو بتایا کہ ’’ہم خلیج بنگال کے طوفان کا سامنا کرنے کے لئے پوری طرح تیار ہیں‘‘۔اگرچہ آئی ایم ڈی کی جانب سے ابھی تک ممکنہ طوفان، اس کی ہوا کی رفتار اور اس کی شدت کے بارے میں بتانا باقی ہے، لیکن ریاستی حکومت پہلے ہی توانائی اور پنچایتی راج ، شہری ترقی اور گھر سمیت تمام محکموں سے کہا ہے کہ وہ اس طوفان کا سامنا کرنے کے لئے تیار رہیں۔


انہوں نے بتایا ہے کہ اگر یہ ایک طوفان کے طور پر سامنے آتا ہے تو ایک معیاری طریقہ کار کے مطابق عمان کے ذریعہ دیا ہوا نام ’’ یاس (Yaas)‘‘ رکھا جائے گا۔جینا نے ضلعی مجسٹریٹ کے ساتھ کام جمع کرنے والوں، پولیس سپرنٹنڈنٹ، آفات سے نمٹنے والی فورسز، فائر بریگیڈ، ٹیلی مواصلات فراہم کرنے والے اور دیگر عہدے داروں سے بات چیت کی۔


جینا نے بتایا بالاسور ، بھدرک ، کیندرپارہ ، جگت سنگھ پور ، پوری ، گنجام ، مایوربنج ، جاج پور ، نیاگڑھ ، کھورڈا ، کٹک اور گاجاپتی اضلاع کے حکام کو ممکنہ طوفان کے بارے میں الرٹ کردیا گیا ہے۔انہیں بتایا گیا کہ وہ طوفان اور سیلاب زدہ پناہ گاہوں کو پینے کے پانی ، بجلی ، صفائی ستھرائی کی سہولیات کے ساتھ تیار رکھیں۔ انہوں نے بتایا کہ ضلعی عہدیداروں نے پہلے ہی طوفان کے پناہ گاہوں کی مرمت شروع کردی ہے۔ محکمہ توانائی سے کہا گیا ہے کہ وہ یہ یقینی بنائے کہ اسپتالوں اور صحت کے اداروں میں طوفان آنے پر متبادل بجلی کی فراہمی مل سکے۔
Published by: Mohammad Rahman Pasha
First published: May 21, 2021 01:08 PM IST